کوٹلہ مبارک پورکے یتیم خانے کا مسئلہ؛اقلیتی کمیشن نے کی، ملزمین کو سزا دلانے کے لئے پولس تھانوں میں شکایت درج کرانے کی درخواست؛ خاموش رہیں گے تو اُن کے حوصلے بڑھیں گے

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 9th February 2018, 1:46 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

نئی دہلی 8/فروری (ایس او نیوز/پریس ریلیز) کچھ عرصہ قبل اخبارات میں یہ خبر شائع ہوئی تھی کہ دہلی کے کوٹلہ مبارکپور علاقے میں واقع ایک یتیم خانہ نے ایک اعلی تعلیم یافتہ مسلم لڑکی کو صرف اس لئے کام دینے سے منع کردیا تھاکہ باحجاب ہونے کی وجہ سے وہ "دور سے مسلم نظر آتی ہے"۔ دہلی اقلیتی کمیشن کے صدر ڈاکٹرظفرالاسلام خان نے مذکورہ مسلم لڑکی کا فون نمبر حاصل کرکے اس سے تفصیلات معلوم کیں اور اسے باقاعدہ شکایت درج کرنے کو کہا لیکن وہ لڑکی شکایت درج کرنے پر راضی نہیں ہوئی۔اس وجہ سے کمیشن نے اس مسئلے پر از خود  (سوو موٹو) نوٹس لیتے ہوئے کوٹلہ مبارکپور پولیس اسٹیشن کو رپورٹ فائل کرنے کو کہا۔
 
مذکورہ پولیس اسٹیشن نے کمیشن کو اطلاع دی ہے کہ علاقے میں تحقیقات کرنے پر ایسا کوئی یتیم خانہ نہیں پایا گیا اور نہ ہی کسی نے اس بات کی پولیس میں کوئی شکایت درج کی ہے، اس لئے پولیس نے درخواست کی کہ یا تو مذکورہ یتیم خانے کا پتہ دیا جائے یا کیس کو خارج کردیا جائے۔ چونکہ کمیشن کے پاس پتہ نہیں تھا، اس لئے کیس بند کردیا گیا۔
 
ڈاکٹر ظفرالاسلام نے افسوس ظاہر کرتے ہوئے بتایا کہ یہ ہماری اخلاقی کمزوری ہے کہ ہم صحیح طریقے سے کیسوں کی پیروی نہیں کرتے ہیں اور وقت نہ ہونے یا زحمت کا بہانہ کرتے ہیں، یا کسی مصلحت کی وجہ سے خاموش رہ جاتے ہیں جس کی وجہ سے ملزمین کو نہ صرف سزا نہیں ملتی ہے بلکہ ان کو مزید شہ ملتی ہے کہ مستقبل میں بھی اسی طرح کی غیر قانونی سرگرمی جاری رکھیں۔ لوگوں کو سامنے آنا چاہئے اور اپنا وقت خرچ کرکے نہ صرف ایک خاص واقعے کے بارے میں انصاف حاصل کرنا چاہئے بلکہ ایسا کرکے آگے کا سد باب بھی کرنا چاہئے کیونکہ جب مجرمین کو لگے گا وہ بھی مصیبت میں پڑ سکتے ہیں تو وہ اپنی حرکتوں سے باز آجائیں گے اور دوسرے لوگوں کو اس سے نصیحت ملے گی۔ یاد رہے کہ اقلیتی کمیشن یا پریس کاونسل میں کیس درج کرانے کی کوئی فیس نہیں ہے لیکن وقت ضرور دینا پڑتا ہے۔
 
ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ بریلی کی ستائش
 پچھلے دنوں اُترپردیش کے  کاس گنج فساد کے سلسلے میں بریلی کے انصاف پسند ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ رگھویندر وکرم سنگھ کی فرقہ پرستوں نے اس وقت بہت بے عزتی کی جب انہوں نے فساد پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ’ ’ایک عجیب طریقہ آج کل شروع ہوگیا ہے۔ مسلمانوں کے محلوں میں مظاہرے لے کر جاؤ اور پاکستان کے خلاف نعرے لگاؤ۔ کیوں؟ کیا یہ لوگ پاکستانی ہیں؟ یہی بات بریلی کے کھیلام گاؤں میں ہوئی تھی، پھر پتھرپھینکے گئے تھے اور ایف آئی آر درج کی گئی تھی‘‘۔

رگھویندر سنگھ کے موقف کی ستائش کرتے ہوئے صدر دہلی اقلیتی کمیشن ڈاکٹر ظفرالاسلام خان نے ان کو خط لکھ کر مبارکباد دی ہے ۔ڈاکٹر ظفرالاسلام نے اپنے خط میں لکھا ہے: ’’آپ صحیح معنی میں ہمارے ملک اور ہماری سوسائٹی کے سیکولر اور انسان دوست اقدار کی نمائندگی کرتے ہیں۔ جو لوگ آپ کے خلاف بول رہے ہیں وہ ہماری مین سٹریم اور قومی روح کی نمائندگی نہیں کرتے ہیں۔ میں آپ کو بتانا چاہتا ہوں کہ اس ملک میں ایسے بہت سے لوگ ہیں جنہوں نے آپ کے موقف اور درست اصول کی ستائش کی ہے۔ اگر آپ جیسے لوگ ذمہ دار عہدوں پر ہوں گے تو ہمیں وہ امن وسلامتی میسر ہوگی جس کے بغیر ہمارا ملک ترقی نہیں کرسکتا ہے۔ براہ کرم ہماری ستائش کو قبول کریں اور یہ نہ سمجھیں کہ انصاف اور حق کی جدوجہد میں آپ اکیلے کھڑے ہیں۔ اس ملک میں ایسے بہت سے لوگ ہیں جو آپ کی تائید کرتے ہیں اور جب بھی مشکل حالات اور چیلنج ان کے سامنے آتے ہیں تو ان کا رویہ بھی آپ ہی جیسا ہوتا ہے‘‘۔
(ختم)

ایک نظر اس پر بھی

وزیر اعظم کی کسان بہبود ریلی کا ہفتہ کو انعقاد 

وزیر اعظم نریندر مودی کل شاہ جہاں پور میں کسان بہبود ریلی سے خطاب کریں گے۔ اس دوران وہ کسانوں کے لیے کئی اعلانات کر سکتے ہیں۔ وزیر اعظم کے سرکاری پروگرام کے مطابق مودی کل دہلی سے بریلی واقع اتر ترشول ہوائی اڈے پر اتریں گے اور وہاں سے ہیلی کاپٹر سے دوپہر 12 بج کر 20 منٹ پر روضہ واقع ...

وزیر اعظم مودی آئندہ ہفتہ جنوبی افریقہ سمیت کئی ممالک کے دورے پر

وزیر اعظم نریندر مودی اگلے ہفتے 23 سے 27 جولائی تک روانڈا، یوگنڈا اور جنوبی افریقہ کے دورے پر جائیں گے۔ جنوبی افریقہ کے دورے کے دوران وہ برکس کانفرنس میں بھی حصہ لیں گے جس میں بین الاقوامی امن اور سلامتی سمیت کئی عالمی مسائل پر بات چیت متوقع ہے۔وزارت خارجہ کے سکریٹری نے صحافیوں ...

عدم اعتماد تحریک میں مودی حکومت کو ملی بڑی کامیابی، اپوزیشن کواُٹھانی پڑی سخت حزیمت

اپوزیشن کانگریس کو آج جمعہ کو اُس وقت سخت حزیمت کا سامنا کرنا پڑا، جب لوک سبھا میں ​عدم اعتماد کی تحریک پر 12 گھنٹے کی بحث کے بعد مودی حکومت نے اعتماد کا ووٹ حاصل کرلیا۔ عدم اعتماد کی تحریک کی مخالفت میں اور مودی حکومت کی حمایت میں 325 ووٹ پڑے جبکہ عدم اعتماد کی تحریک کی ...

نئی دہلی میں چھ ستمبر کو ہو گی پہلی امریکہ ۔بھارت مذاکرات: امریکی وزارت خارجہ

طویل انتظار اور بار بار تاریخ مقرر کرنے کے بعد بالآخر امریکہ اور بھارت کے درمیان پہلی مذاکرات چھ ستمبر کو نئی دہلی میں ہونی طے ہوئی ہے۔امریکہ نے ناگزیر وجوہات کا حوالہ دیتے ہوئے گزشتہ ماہ مذاکرات ملتوی کر دی تھی۔ مذاکرات بھارت اور امریکہ کے وزیر اور وزرائے دفاع کے درمیان ہونے ...

ہیلی کاپٹر اسکینڈل میں ای ڈی کے چارج شیٹ پر عدالت 23 جولائی کو کرے گی غور

دہلی کی ایک عدالت نے وی وی آئی پی ہیلی کاپٹر رشوت معاملے میں ای ڈی کی طرف سے دائر چارج شیٹ پر 23 جولائی کو نوٹس لے گی ۔ خصوصی جج اروند کمار نے تفتیشی افسر کے موجود نہ ہونے کا نوٹس لیتے ہوئے معاملے کو پیر کے لئے درج کر دیا ہے۔ ای ڈی نے کہا کہ اس نے تمام ملزمان کے خلاف الزامات کی حمایت ...

شرورمٹھ کے سوامی کی موت کثرت شراب نوشی اور ناجائز تعلقات کا نتیجہ ؟معاملہ کی تحقیقات اور جانچ کیلئے 7ٹیمیں تشکیل 

اڈپی شرورمٹھ کے سوامی لکشمی ورتیرتھ سوامی جی کی مشتبہ حالات میں ہوئی موت پر انہیں قتل کیے جانے کاشبہ ظاہر کیاگیاتھا جس کے نتیجہ میں اڈپی ضلع ایس پی نے اس معاملہ کی ہر زاویہ سے جانچ کے لیے پولیس کی 7ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں ۔ شرور علاقہ میں یہ افواہیں بھی اڑائی جارہی ہیں کہ سوامی ...

مینگلور: میڈیکل کالج میں سنی مسلم طلبا کو سیٹ محفوظ کرنے کامطالبہ،ریاستی ہائی کورٹ نے عرضی پر فیصلہ محفوظ کرلیا

منگلورو کی کنچور انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنس میں سنی مسلم طالبات کے لئے سیٹوں کے ریزرویشن کے بارے میں ریاستی ہائی کورٹ میں دائر ایک عرضی پر ہائی کورٹ نے اپنا فیصلہ محفوظ کرلیا ہے۔

کورگ میں ویڈیو بناکر مرکز توجہ بننے والے،عبدالفتح سے کمار سوامی کی ملاقات

کورگ میں موسلادھار بارش اور سیلاب کی صورتحال کے دوران وزیراعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی کو متوجہ کرانے کے لئے سوشیل میڈیا پر آنے والے ویڈیو میں جو بچہ وزیراعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی کو صورتحال پر متوجہ کروارہاتھا، آج کورگ میں وزیراعلیٰ کمار سوامی نے اس بچے عبدالفتح سے ملاقات کی۔

مودی اب چوکیدار نہیں شراکت دار بن گئے:راہل گاندھی

کانگریس صدر راہل گاندھی نے وزیر اعظم نریندر مودی پر ملک کے عوام کے ساتھ وعدہ خلافی کرنے، ہزاروں کروڑ روپے کا قرض معاف کرکے اور پٹرولیم کی قیمتوں میں مسلسل اضافہ کرکے اپنے دوست صنعت کاروں کو فائدہ پہنچانے کا الزام لگاتے ہوئے آج کہا کہ وزیر اعظم اب چوکیدار نہیں شراکت دار بن گئے ...