ٹی ڈی پی رہنما کے آندھرا پردیش۔تلنگانہ واقع رہائش گاہ اور دفاتر پر چھاپہ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th October 2018, 11:50 PM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

امراوتی،12؍ اکتوبر (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)محکمہ انکم ٹیکس نے جمعہ کو تیلگو دیشم پارٹی (ٹی ڈی پی) کے راجیہ سبھا رکن سی ایم رمیش کے آندھرا پردیش اور تلنگانہ واقع احاطے کی تلاشی لی۔ممبر پارلیمنٹ نے ان چھاپوں کو’سیاسی بدلے‘کی کارروائی قرار دیا۔ذرائع نے بتایا کہ رمیش کے کڈپا ضلع واقع آبائی گاؤں یراگنتلا میں ان کی رہائش گاہ پر چھاپہ ماری جمعہ کی صبح شروع ہوئی۔اسی وقت محکمہ انکم ٹیکس کے 10 ملازمین کی ٹیم نے حیدرآباد میں جوبلی ہلز واقع ان کی رہائش گاہ اور ان کی کمپنی کے دفتر پر بھی چھاپہ مارا۔محکمہ انکم ٹیکس کے ذرائع نے بتایاکہ رمیش کے آندھرا پردیش میں کڈپا ضلع واقع رہائش گاہوں کی تلاشی چل رہی ہے۔محکمہ انکم ٹیکس کے افسران حیدرآباد میں بھی ان کی رہائش گاہ اور دفتر کے ریکارڈ کی جانچ پڑتال کر رہے ہیں۔چھاپہ ماری کی تنقید کرتے ہوئے ٹی ڈی پی نے کہا کہ یہ پوری طورپر سیاسی بدلا ہے۔کیونکہ رمیش پارلیمنٹ میں مسلسل ریاست کے مفادات کے لئے آواز اٹھا رہے تھے۔اطلاعات و ٹیکنالوجی کے وزیر این لوکیش نے ٹویٹ کر کے الزام لگایاکہ یہ آندھرا کے لوگوں پر حملہ ہے۔مودی حکومت اس طرح کا رویہ اپنا رہی ہے کیونکہ ہم آندھرا پردیش سے کئے گئے تمام وعدوں کو پورا کرنے کی کوشش کر رہے تھے۔انہوں نے الزام لگایا کہ اس چھاپے ماری کا مقصد صنعت کاروں کو ڈرا کر ریاست میں سرمایہ کاری کو روکنا ہے۔نئی دہلی میں موجود رمیش کا کہنا ہے کہ ان کے احاطے پر ہو رہی انکم ٹیکس کی چھاپہ ماری کے پیچھے اپوزیشن پارٹی وائی ایس آر کانگریس کا ہاتھ ہے۔انہوں نے کہاکہ وزیر اعظم نے خود پارلیمنٹ کے اندر ہمیں نتائج کی دھمکی دی تھی کیونکہ ہم لوگ ریاست کے حقوق کے لئے لڑ رہے تھے۔انکم ٹیکس کاچھاپہ اس انتباہ کا نتیجہ ہے۔پارلیمنٹ کی پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے رکن رمیش نے یہ بھی کہا کہ انہوں نے گزشتہ چار سال میں 200 کروڑ روپے کی آمدنی دکھائی ہے اور ٹیکس بھرا ہوا ہے۔انہوں نے کہا کہ ایسے حملوں سے نہیں ڈریں گے۔

ایک نظر اس پر بھی

مودی ،خواتین کے حامی یا اکبرکے طرفدار؟ جنسی استحصال کے الزام کے خلاف مقدمہ درج کرانے پر کانگریس نے وزیراعظم کو گھیرا

کانگریس نے وزیر مملکت برائے امور خارجہ ایم جے اکبر پر لگنے والے جنسی استحصال کے الزامات کو انتہائی سنگین قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ ملک کی خواتین کے احترام کا معاملہ ہے اور وزیر اعظم نریندر مودی کو اس پر خاموشی توڑکر اپنا رخ واضح کرناچاہیے۔

دہلی این سی آر میں فضائی آلودگی سے نمٹنے کے لئے ہنگامی منصوبہ لاگو

دہلی این سی آر میں فضائی آلودگی سے نمٹنے کے لئے ایک ہنگامی منصوبہ پیر کو لاگو کیا گیا ہے جس میں مشینوں سے سڑکوں کی صفائی اور اس علاقے کے بھیڑ بھاڑ والے علاقوں میں گاڑیوں کے ہموار ٹریفک کے لئے ٹریفک پولیس کی تعیناتی جیسے اقدامات شامل ہوں گے۔

ریاستی وزارت سے مہیش کا استعفیٰ منظور

پانچ ریاستوں کے اسمبلی انتخابات میں کانگریس اور بی ایس پی کے درمیان مفاہمت کی کوشش ناکام ہوجانے کے نتیجے میں ریاستی کابینہ سے استعفیٰ دینے والے بی ایس پی کے وزیر این مہیش کو استعفیٰ واپس لینے کے لئے منانے میں جے ڈی ایس قیادت کی کوشش ناکام ہوجانے کے بعد آج وزیراعلیٰ نے مہیش کا ...

ای اسٹامپ پیپر اب آن لائن دستیاب ہوگا

کسی طرح کے دستاویزات تیار کرنے کے لئے درکار ای اسٹامپ کاغذ کی دستیابی اب تک ایک بہت بڑا مسئلہ ہوا کرتی تھی، 100 روپے کے اسٹامپ پیپر کے لئے بھی بھاری رقم ادا کرکے اسے حاصل کرنا پڑتا تھا،

ساحلی علاقے میں موسلادھار بارش۔ آسمانی بجلیوں سے نقصانات

ساحلی علاقے میں اور خاص کر جنوبی کینرا ضلع میں اتوار کی شام سے رات دیر گئے تک زبردست بارش ہوئی ہے۔ بادلوں کی گھن گرج کے ساتھ بجلیوں کے کڑکنے کا سلسلہ بھی جاری رہا اور بعض مقامات پر بجلی گرنے سے گھروں کونقصان پہنچنے کی اطلاعات بھی ملی ہیں۔

بھٹکل میں زائد منافع کالالچ دے کر 100کروڑ سے زائد رقم کی دھوکہ دہی کا الزام : کمپنی مالکان کے گھروں کا گھیراؤ اور احتجاج

شہر کے آزاد نگر میں واقع فلالیس نامی کمپنی کے مالکان  پر سو کروڑ سے زائد رقم لے کر فرار ہونے کا الزام عائد کرتے ہوئے  سینکڑوں لوگوں نے آج اُن  کے مکانوں  کا گھیراو کیا اور اپنی رقم واپس دینے کا مطالبہ کرتے ہوئے احتجاج کیا۔  احتجاجیوں کا کہنا تھا کہ   فلالیس نامی جعلی کمپنی ...