بھٹکل:کے ڈی پی سہ ماہی میٹنگ میں رکن اسمبلی کا مخالفین کو منہ توڑ جواب :افسران کی معرفت سرکاری امداد کا پیش کیا حساب کتاب

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 13th March 2018, 8:43 PM | ساحلی خبریں |

 بھٹکل 13/ مارچ (ایس اؤنیوز)تعلقہ پنچایت ہال میں منعقدہ   آخری سہ ماہی کے ڈ ی پی میٹنگ میں رکن اسمبلی منکال وئیدیا نے بھٹکل ودھان سبھا حلقہ کو ملنے والی سرکاری امداد کے حساب کتاب کی تفصیلات سرکاری افسران کے ذریعے فراہم کرتے ہوئے مخالفین کو منہ توڑ جواب دینےکی کوشش کی ہے۔  سرکاری افسران کی طرف سے پیش کی گئی معلومات کےمطابق بھٹکل حلقہ میں 2000کروڑروپئے کی سرکاری امداد ترقیا تی  کاموں پر خرچ کئے گئے ہیں۔

میٹنگ شروع ہوتے ہی بھٹکل حلقہ میں اپنے توسط سے فراہم کی گئی سرکاری امداد کامعاملہ خود رکن اسمبلی منکال وئیدیا  نے اٹھایا اور بتایا کہ میرے بیانر اور کٹ آؤٹ کو پھاڑ ڈالا گیا ، اب بے بنیاد بیانات کے ذریعے سرکاری امداد پر سوالات اٹھائے  جارہے ہیں، میٹنگ میں سرکاری افسران نے وزیرا علیٰ کی طرف سے بھٹکل حلقہ کو دی گئی امداد کی تفصیلات   پیش کی۔

منکال وئیدیا نے کہا کہ رہائشی مکانات  اور الیکٹری سٹی  کو شامل کیا جائے تو سرکاری امداد کی شرح 2000کروڑ روپئے تک پہنچتی ہے، اس کے باوجود  کچھ لوگ صرف 70کروڑ روپیو ں کے کام ہونے کی بات کہہ رہے ہیں، منکال نے سوال کیا کہ آخر میں  ان کے متعلق اب کیا کہوں ؟   منکال وئیدیا کے مطابق  یومیہ 20گھنٹے عوام کے لئے مزدوری کی ہے، فنڈ لانے کے لئے  کافی تگ ودو کی ہے، الیکشن کا معاملہ بازو میں رکھ دیں، کم سے کم اتنا تو سمجھ لیں کہ عوام کے لئے کام کیاگیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ  مفاد پرستی کی بنیاد پربدنام کئے جانے سے میں بیزارہواہوں،  مگر مجھے یقین ہے کہ بھٹکل کے عوام اس طرح کے بے بنیاد بیانات اورباتوں پر توجہ نہیں دیں گے اور عوام کو بے وقوف بنانا آسان نہیں  ہے۔

میٹنگ میں رکن اسمبلی نے نمّا گرا ما نمّا رستے (ہماری دیہات ،ہماری سڑک)،پی ڈبلیو ڈی سمیت اہم محکمہ جات کے افسران کی طرف سے سرکاری سطح پر ملنے والی امداد کی تفصیلات  میٹنگ میں پیش کی اور کہاکہ کوئی بھی فرد آرٹی آئی  کے تحت حساب کتاب چاہتاہےتو حاصل کرسکتا ہے۔

منکال وئیدیا نے کہا کہ یہاں کروڑ روپیوں کے کاموں کا حساب مانگنے والے امداد کے متعلق جھوٹی بیان بازی کرکے عوام کو دھوکہ دینے کی کوشش کررہے ہیں، رکن اسمبلی نے دعویٰ کیا کہ سرکاری امداد بھٹکل کے بالکل آخری فرد تک پہنچائی گئی ہے ، اس موقع پر انہوں نے واضح کیا کہ جو کچھ امداد دی گئی ہے وہ رکن اسمبلی یا وزیر اعلیٰ کا پیسہ نہیں ہے بلکہ عوام کے ٹیکس کا پیسہ ہے ۔

انہوں نے کہا کہ بھٹکل تعلقہ کو مکمل طورپر جھونپڑیوں سے نجات دی جائے گی۔ رکن اسمبلی نےکہاکہ میری میعاد میں کسی بھی اسکیم ،منصوبے کے بغیر وزیرا علیٰ کے تعاون سے تعلقہ کے 7500گھروں کو بجلی کنکشن دلایا گیا ہے۔ بھٹکل وددھان سبھاحلقہ میں 50فی صد برج کی تعمیر ہوئی ہے، سڑکوں کی ترقی پر خاص توجہ دی گئی ہے، 1471عوام کو مفت میں گیس کنکشن دیا گیا ہے ، 458عوام کو سولار اور 293لوگوں کو سولار ہٹر فراہم کیاگیا ہے ۔ گذشتہ 7دہوں میں گنگا کلیان منصوبے کے تحت بھٹکل میں استفادہ کرنے والے مستفیدین کی تعداد 25سے زائد نہیں ، مگر میرے 5سال کی مدت میں 200سے زائد مستفیدین نے استفادہ کیا ہے۔ اس مرتبہ خستہ اور گندگی( سلم )کو دور کرنےکے لئے مختص کی گئی رقم میں سے 25لاکھ روپئے بھٹکل کو ملے ہیں، کئی کام جاری ہیں، ہائی ٹیک بس اسٹانڈ کی تعمیر جاری ہے، کچھ دنوں تک کام کو خستہ کہہ کر گھومنے والے اب امداد ہی نہیں ملنے کی بات کہہ  رہے ہی۔ انہوں نے اپنے مخالفین کو کرارہ جواب دیتے ہوئے کہا کہ  ابھی میری حالت اتنی نہیں بگڑی ہے کہ خستہ کام کے ذریعے اپنا پیٹ بھروں اور نہ ہی   مجھے اس  کی ضرورت ہے۔ 

ڈائس پر ضلع پنچایت صدر جئے شری موگیر، تعلقہ پنچایت صدر ایشور نائک، نائب صدر رادھا اشوک وئیدیا، تحصیلدار وی این باڈکر موجود تھے۔ تعلقہ پنچایت افسر سی ٹی نائک نے استقبال کیا تو مینجر سدھیر گاؤنکر نے نظامت کی۔

ایک نظر اس پر بھی

ہوناور:پریش میستاکی پراسرار موت کے معاملے میں نیا خلاصہ۔ واردات سے پہلے بند کردیا گیا تھا سی سی کیمرہ !

ہوناور میں فرقہ وارانہ کشیدگی کے دوران پریش میستانامی نوجوان کی پراسرار موت کو سنگھ پریوار کی طرف سے فرقہ وارانہ قتل قرار دیا جارہا تھا۔لیکن سی بی آئی کی تحقیقات دوران اس معاملے نے اب ایک نیا رخ لے لیا ہے۔

بھٹکل میں تنظیم میڈیا ورکشاپ کا شاندار اختتامی اجلاس۔ میڈیا کی معتبر شخصیات اور علماء کا خطاب۔ ورکشاپ کے شرکاء کو انعامات اور اسناد کی تقسیم

صحافت کے پیشے میں دلچسپی رکھنے والوں کے لئے مجلس اصلاح وتنظیم کی میڈیا واچ کمیٹی کی نگرانی میں منعقد ہونے والے ہونے پانچ روزہ ورکشاپ کے اختتام پر ایک شاندار اختتامی اجلاس بندر روڈ سیکنڈ کراس پر واقع المدینہ ہال میں منعقد ہوا۔

بھٹکل میں گھر کی چھت سے گرنے والا بچہ علاج کارگر نہ ہونے سے ہلاک۔ڈاکٹر پر غفلت برتنے کا الزام۔ ڈاکٹر نے طلب کی معذرت

بھٹکل سرکاری اسپتال میں بدھ کو  عوام نے بچے کی ایک نعش لے کر ایک ڈاکٹر کا گھیراو کیا اور اُس پر غفلت  برتنے کا الزام عائد کرتے ہوئے  اُسے  آڑے ہاتھوں لیا۔ عوام کا الزام تھا کہ ڈاکٹر کی لاپرواہی سے اس بچے کی جان گئی ہے۔