بھٹکل ۔ ہوناور بس سرویس سیاسی مفادات کی بھینٹ؟:طلبا کی تعلیم متاثرہونے پر بھی تنظیموں کی خاموشی

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 12th September 2018, 7:29 PM | ساحلی خبریں |

ہوناور:12/ستمبر(ایس اؤ نیوز) عوامی نمائندے کے طورپر جو لوگ منتخب ہوتے ہیں ان کاکام عوامی خدمت ہونی چاہئے، ان کی طرف سے جاری ہونے والے منصوبے عوامی ہونی چاہئے۔ لیکن  اپنی سیاسی مفادات کے لئے عوامی مقاصد میں تبدیلی کی جاتی ہے تو اس کے نتائج کس درجہ متاثرہوتے ہیں،اس کے لئے  بھٹکل سے ہوناور کے درمیان چلنے والی سرکاری بسوں کا مسئلہ واضح ثبوت ہے۔

بھٹکل ۔ ہوناور۔ گیرسوپا کے لئے روزانہ ہزاروں مسافر مختلف سواریوں کے ذریعے سفر کرتے رہتے ہیں۔ ان کی تکالیف کو دیکھتے ہوئے سابق ایم ایل اے منکال وئیدیا اس وقت کی کانگریس حکومت کی جانب سے کئی ساری نئی بسوں کی منظور ی لے کر مناسب انتظامات کئے تھے۔ خاص کر بسوں کی یہ سہولت دیہی علاقوں سے شہر کو جانے والے طلبا کے لئے کافی راحت کا باعث تھی۔ مگر اچانک چند بسوں کو روک دیا گیا ہے اور کچھ بسوں کے اوقات میں تبدیلی کئے جانے سے اس راہ پر چلنے والے مسافر کافی پریشان نظر آرہے ہیں۔

بھٹکل سے ہوناور چلنے والی سٹی بسیں  اورگیرسوپا جانےو الی بسیں کی کل تعداد 12تھی ، اب اچانک ان کی تعداد میں کمی اوراوقات میں تبدیلی کی گئی ہے۔ صبح میں کم اور شام میں زیادہ بسیں چلتی تھیں۔ حالیہ تبدیلیوں کودیکھیں تو محسوس ہوتاہے کہ پرائیویٹ  سواریوں کو فائدہ پہنچانے کے مقصد سے کی گئی تبدیلی سے مسافر اور طلبا کو دقتوں کا سامنا ہے۔ چونکہ طلبا کو وقت پر اسکول اور کالج پہنچنا ہوتاہے جس کے لئے وہ مجبوراً پرائیویٹ سواریوں پر منحصر ہوگئے ہیں۔

بسوں کی تبدیلی پر عوام سوال کررہے ہیں کہ بہتر آمدنی کا ذریعہ رہیں بسوں کے نظام میں کیوں تبدیلی کی گئی ؟ اور کچھ بسوں کو کمٹہ ڈپو منتقل کرنے کی ایسی کیا ضرورت تھی؟الزام لگایا جارہاہے کہ موجودہ عوامی نمائندوں کی پرائیویٹ والوں سے دوستی کا نتیجہ عوام کو بھگتنا پڑ رہاہے۔ عوامی سطح پر  انتخابات سے پہلے اپنے کی حمایت کرنے پر چند  سرکاری بسوں کی نقل وحمل روک کر اور اوقات میں تبدیلی کرتے ہوئے آپ کو سہولت دینے کا وعدہ کیا گیا تھا۔ کئے گئے وعدے کے مطابق پرائیویٹ والوں کو سہولت پہنچا نے کا الزام لگایاجارہاہے۔

ضلع میں کئی طلبا تنظیمیں ہیں، ملک کے کسی بھی مقام پر طلبا کو مسائل درپیش ہونے پر احتجاج کرنےو الی طلبا تنظیمیں ، ضلع کے طلبا کو  مسئلہ پیش آنے  کے باوجود جان کر بھی انجانی خاموشی پر بھی انگلیاں اٹھ رہی ہیں۔ کلی طورپر کہا جاسکتاہے کہ عوامی نمائندوں کے سیاسی مفادات  بھٹکل ۔ ہوناور کے مسافروں کے لئے پریشانی کا باعث بن رہی ہیں۔

اس سلسلے میں بھٹکل بس ڈپو مینجر کا کہنا ہے کہ سٹی بسوں کو روکا نہیں گیا ہے بلکہ ا ن کے اوقات میں تبدیلی کی گئی ہے۔ اعلیٰ افسران کے کہنے پر 6بسیں کمٹہ بس ڈپو کو منتقل کئے گئےہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

ساحلی علاقے میں ریت کا مسئلہ 15اکتوبر تک حل کیا جائے گا؛ وزیر اعلیٰ کمارا سوامی کا تیقن

وزیراعلیٰ کمارا سوامی نے ساحلی علاقے اڈپی اور منگلورو ضلع کے اراکین اسمبلی کے ساتھ ودھان سودا میں منعقدہ میٹنگ کے دوران تیقن دیا ہے کہ ریت نکالنے اور اس کی فراہمی کے متعلق مسائل کو 15اکتوبر حل کیا جائے گا۔

ریت کی سپلائی کا مستقل حل ڈھونڈ نکالنے بھٹکل رکن اسمبلی کی وزیراعلیٰ سے ملاقات؛ تعمیراتی کام ٹھپ پڑنے سے مزدوربھی پریشان

منگل کی شام بنگلورو کے ودھان سبھا ہال میں وزیرا علیٰ کمار سوامی کی صدارت میں منعقدہ میٹنگ میں بھٹکل کے رکن اسمبلی سنیل نائک نے اترکنڑا، اُڈپی اور دکشن کنڑا اضلاع میں ریت سپلائی شروع نہیں  کئے جانے سے پیش آنے والے مسائل کا تذکرہ کرتے ہوئے خوشگوار طورپر حل کرنے  کے لئے ریاستی ...

ہیلمٹ اور کاغذات نہ ہونے پربھٹکل پولس نے وصولا ایک ماہ میں 85 ہزار روپیہ جرمانہ؛ بائک اور کار کے بعد اب آئی آٹو کی شامت

شہر میں نئے آنے والے پولس سب انسپکٹر " کے کوسومادھر" جگہ جگہ گاڑیوں کی چیکنگ کرنے  میں لگے ہوئے ہیں اور ہیلمیٹ نہ پہننے ، گاڑی کے ضروری دستاویزات نہ ہونے، بغیر لائسنس گاڑی چلانے وغیرہ پر جرمانہ عائد کررہے ہیں۔  اب تک موٹر بائک اور کار وغیرہ کو روک کر چیکنگ کی جارہی تھی، مگر آج ...