عراق میں قائم ہونے والی نئی حکومت میں شامل نہیں ہوں گے: مقتدیٰ الصدر

Source: S.O. News Service | By INS India | Published on 2nd December 2019, 10:46 PM | عالمی خبریں |

 بغداد، یکم دسمبر(آئی این ایس انڈیا) عراق کے سرکردہ شیعہ رہ نما اور الصدری تحریک کے سربراہ مقتدیٰ الصدر نے ہفتے کے روز اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ ان کی جماعت عراق میں نئی حکومت کا حصہ نہیں بنے گی۔خیال رہے کہ الصدری تحریک نے سنہ 2018کو پارلیمانی انتخابات میں 54 نشستوں پرکامیابی حاصل کی تھی۔ مقتدیٰ الصدر کی طرف نئی حکومت میں عدم شمولیت سے متعلق یہ بیان ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب ملک گیر احتجاج کے بعد وزیراعظم عادل عبدالمہدی نیعہدے سے استعفیٰ دے دیا ہے۔انسانی حقوق کی تنظیموں کے مطابق حالیہ ایام ہفتوں کے دوران عراق میں پرتشدد احتجاجی مظاہروں کے دوران سکیورٹی فورسز کے ساتھ تصادم میں کم سے کم 400 افراد ہلاک اور ہزاروں زخمی ہوچکے ہیں۔ہفتے کے روز عبد المہدی نے کابینہ کے اجلاس سے خطاب میں اپنا استعفیٰ پارلیمنٹ میں پیش کرنے کا اعلان کیا تھا۔ گذشتہ روز کے اجلاس میں کابینہ نے عادل عبدالمہدی کے استعفے کی منظوری دے دی ہے۔اجلاس سے خطاب میں سبکدوش ہونے والے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ اگر میرے استعفے سے ملک میں جاری بحران ختم ہوتا ہے تو اس میں استعفیٰ پیش کرنے میں ایک لمحے کی بھی تاخیر نہیں کروں گا۔ انہوں نے کہا کہ اب جب کہ وہ استعفے کا اعلان کرچکے ہیں سڑکوں پر احتجاج کرنے والوں کو بھی لوٹ جانا چاہیے۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ ان کے استعفے اور نئی حکومت کے قیام سے ملک میں جاری اتفراتفری ختم ہوجائے گی۔عراقی حکومت کے ترجمان علی الحدیثی نے بتایا کہ حکومت پارلیمنٹ سے استعفیٰ قبول کرنے تک اپنا کام جاری رکھے گی۔ استعفے کی منظوری کے بعد نگراں حکومت کے طور پر کام کرے گی تا آنکہ نئی حکومت قائم ہوجائے۔

ایک نظر اس پر بھی

جرمنی: سی ایس یو کی طرف سے پہلا مسلمان میئر اُمیدوار

اسلام اور جرمنی کی سیاسی جماعت کرسچن سوشل یونین کے مابین تعلقات کو ایک حساس اور مشکل موضوع تصور کیا جاتا ہے۔ لیکن اب اسی جماعت نے میئر کی سیٹ کے لیے ایک 37 سالہ مسلمان امیدوار اوزان ایبش کا انتخاب کیا ہے۔ اس مسلمان امیدوار کا انتخاب میونخ کے شمال میں واقع قصبے 'نوئے فارن‘ کی سی ...

کولمبیا میں حکومت مخالف مظاہروں میں جھڑپیں 

کولمبیا کے دارالحکومت بوگوٹا کی شاہراہوں پر حکومت مخالف مظاہروں میں پولیس اور مظاہرین کے درمیان جھڑپوں میں کم از کم چار افراد زخمی ہوگئے، جن میں سے تین پولیس اہلکار تھے۔ منگل کے روز بوگوٹا سٹی ہال میں 20 مظاہروں کی اطلاع دی گئی، جن میں سے بیشتر کو پر امن بتایا گیا۔

انڈونیشیا میں پل گرنے سے9 افراد دریا میں ڈوب کرہلاک؛ 17 کو بچالیا گیا

انڈونیشی جزیرے سماٹرا میں پیدل چلنے والے افراد کے لیے بنائے گئے پل کے گرنے سے نو افراد دریا میں ڈوب گئے ہیں۔ کسی حد تک کمزور پل دریا میں آنے والے زوردار سیلابی ریلے کو برداشت نہ کر سکا۔ اس سیلاب کی وجہ اتوار انیس جنوری کو ہونے والی زور دار بارش تھی۔

آسٹریلیا میں شدید ژالہ باری اور طوفان باد و باراں 

مختلف آسٹریلوی علاقوں کو آج زوردار طوفانِ باد و باراں کے ساتھ ساتھ شدید ژالہ باری کا سامنا رہا۔ انتہائی تیز ہوا، شدید بارش اور ژالہ باری نے لوگوں کو مالی نقصان پہنچایا ہے۔ کم از کم دو افراد ژالے لگنے سے زخمی ہوئے ہیں اور انہیں ہسپتال پہنچا دیا گیا ہے۔