بھٹکل میں پانی کی شدید قلت؛ ندی، نالے، کنویں پانی سے خالی؛ میونسپالٹی کی طرف سے بھی پانی سپلائی متاثر؛ پانی کے غیر ضروری استعمال کو روکنے کی ہدایت

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 7th May 2019, 6:01 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل 7/مئی (ایس او نیوز) بھٹکل میں شدید گرمی کے بعد اب پانی کا مسئلہ سنگین رُخ اختیار کرگیا ہے۔ اوپری علاقوں کے لوگ گذشتہ ایک مہینہ سے پانی کی قلت کو لے کر پریشان تھے، جن مکانوں میں میونسپالٹی یا پنچایت کی طرف سے پانی سپلائی نہیں ہورہا ہے، وہاں   ٹینکوں کے ذریعے پانی سپلائی کیا جارہا ہے،  مگر اب  نشیبی علاقوں میں رہنے والے  اکثر  مکینوں کے لئے بھی  پانی کا سنگین مسئلہ کھڑا ہوگیا ہے، ایک طرف کنویں سوکھ  گئے ہیں، ندیاں، جھیل اور جھرنوں میں پانی نہیں ہے تو وہیں کڑوین کٹہ ڈیم سوکھ جانے کے نتیجے میں میونسپالٹی اور جالی پٹن پنچایت کی طرف سے بھی پانی پر کٹوتی کئے جانے کا اعلان کیا گیا ہے۔

بھٹکل میونسپل چیف آفسر دیوراج نے  بتایا کہ کڈوین کٹہ ڈیم  تقریبا   سوکھ جانے کے نتیجے میں  میونسپالٹی کی جانب سے گھر گھر سپلائی کئے جانے والے پانی میں کٹوتی کی گئی ہے جس کے ساتھ ہی اب روزانہ پانی سپلائی نہیں کیا جارہا ہے   بلکہ ایک دن ناغہ کرکے دوسرے  دن پانی سپلائی  کرنے پر مجبور ہیں ۔

میونسپالٹی ذرائع سے ملی اطلاع کے مطابق کڈوین کٹہ ڈیم میں پانی کی شدید قلت  کو دیکھتے ہوئے  سمجھا جارہا ہے کہ اگلے دس دنوں تک ہی ڈیم کا پانی استعمال کیا جاسکے گا  اُس کے بعد میونسپالٹی اور پنچایت  کی جانب سے  پانی سپلائی مکمل بند کرنا پڑے گا۔ایسے میں  حکام نے عوام الناس سے درخواست کی ہے کہ پانی کو سوچ سمجھ کر استعمال کریں، گاڑیوں کو دھونے اور درختوں میں ڈالنے کے لئے پانی کا استعمال بندکریں۔  جہاں ضرورت ہو، وہیں پانی استعمال کریں اور کوشش کریں کہ پانی ضائع نہ ہونے پائے۔

خیال رہے کہ بھٹکل میں اکثر مکانوں میں کنویں پائے جاتے ہیں  اور کنووں کا پانی ہی پینے کے لئے استعمال ہوتا ہے،اس کے ساتھ ہی اکثر مکانوں میں میونسپالٹی کے پانی کا کنکشن بھی ہے اور یہ پانی دیگر ضروریات کے لئے استعمال کیا جاتا ہے، مگر اس بار کافی عرصہ کے بعد پہلی مرتبہ  نشیبی علاقوں میں بھی اکثر مکانوں کے   کنویں سوکھ گئے ہیں جس کے نتیجے میں بھٹکل کے رہائشی زیادہ تر  میونسپالٹی اور پنچایت کے ذریعے سپلائی کئے جانے والے پانی  پر ہی   منحصر ہیں، مگر اب میونسپالٹی اور پنچایت سے پانی کا سلسلہ بند ہوجانے کے نتیجے میں آئندہ دنوں میں عوام کو سخت دشواری پیش آسکتی ہے۔

یاد رہے کہ بھٹکل اور اطراف میں عام طور پر ماہ جون میں بارش شروع ہوتی ہے، البتہ اس بار شدت کی گرمی کو دیکھتے ہوئے وقت سے پہلے مانسون شروع ہونے کے آثار نظر آرہے ہیں،    ایسے میں پانی کی قلت کا مسئلہ بارش شروع ہونے کے ساتھ ہی حل ہونا ممکن  ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

انجمن ِ اسلام اور اترکنڑامسلم تنظیموں کی جانب سے ہبلی میں حج بھون تعمیرکا مطالبہ : میمورنڈم

ریاست کرناٹکا کے 9اضلاع پر مشتمل شمالی کرناٹکا کے لئے ہبلی میں حج بھون تعمیر کا مطالبہ لےکر دھارواڑ ضلع انجمن ِ اسلام کے ممبران سمیت دیگر مسلم تنظیموں کے عہدیداران نے اترکنڑا ضلع انتظامیہ کی جانب سے اترکنڑا ضلع اپر ڈپٹی کمشنر ناگراج سنگریر کو میمورنڈم سونپا۔

اُترکنڑا میں صبح سے زبردست بارش؛ سداپور میں چلتی بائک پر درخت گرنے سے فوریسٹ آفسر ہلاک؛ انکولہ میں ریلوے پٹری پر چٹان کھسکنے سے کچھ گھنٹوں کے لئے سروس متاثر

اُترکنڑا میں ضلعی انتظامیہ کی جانب سے ریڈ الرٹ جاری کرنے کے بعد آج منگل کو صبح چھ بجے سے صبح آٹھ بجے تک زبردست بارش ہوئی جس کے نتیجے میں بعض علاقوں سے نقصانات کی بھی خبریں آرہی ہیں۔  بارش  کے تیز تیور دیکھتے ہی   ڈپٹی کمشنر نے  صبح اسکول کھلنے سے قبل ہی تمام اسکولوں اور ...

منگلورو۔بنگلوروٹریک پرچٹان توڑنے کا کام مسلسل جاری۔ دن کے وقت چلنے والی ریل گاڑیاں 24جولائی تک کے لئے منسوخ

انی بندا کے قریب سبرامنیا سکلیشپور ریلوے ٹریک پر ایک بڑی چٹان لڑھکنے کا خطرہ پیدا ہوگیا تھا۔ اس حادثے کو روکنے کے لئے پہاڑی تودے کو دھماکے سے توڑنے کاکام پچھلے دو تین دن سے جاری ہے جس کے لئے ہیٹاچی مشین کے کامپریسر اور بارود کا استعمال کیا جارہا ہے۔ لیکن تیز برسات کی وجہ سے دن ...

منگلورومیں بارش کا قہر۔ چٹانیں کھسکنے، درخت اور بجلی کے کھمبے اکھڑنے سے مکانات اور موٹر گاڑیوں کو پہنچا نقصان۔ ضلع انتظامیہ نے جاری کیا ریڈ الرٹ

پچھلے چار پانچ دنوں سے ضلع شمالی کینرا میں جاری تیز بارش کی وجہ سے بھاری نقصانات کی خبریں مل رہی ہیں۔ چونکہ محکمہ موسمیات نے 27جولائی تک تیز بارش کا سلسلہ جاری رہنے کی پیشین گوئی کی ہے اس لئے ضلع انتظامیہ نے ریڈالرٹ جاری کیا ہے۔

ساحلی کرناٹکا میں موسلادھار بارش کا سلسلہ جاری؛ اُترکنڑا میں ریڈ الرٹ؛ ساگرروڈ پر غیر قانونی باکڑوں کو نہ ہٹانے کے پیچھے کیا راز ؟ مینگلور اور اُڈپی میں منگل کو اسکولوں اور کالجوں میں چھٹی

ساحلی کرناٹکا بشمول اُتر کنڑا، اُڈپی اور دکشن کنڑا میں  اتوار سے  جاری زوردار بارش کا سلسلہ آج پیر کو بھی جاری رہا جس سے  کئی علاقوں میں راستے تالاب میں تبدیل ہوگئے،  اس درمیان  محکمہ موسمیات کی جانب سے  بتایا گیا ہے کہ  کل اتوار کو بھٹکل میں جو زبردست بارش ہوئی، اُس کی ...