کورونا: موت کا کنواں بنتا جا رہا ہے امریکہ، 24 گھنٹے میں 2000 اموات

Source: S.O. News Service | Published on 8th April 2020, 3:11 PM | عالمی خبریں |

واشنگٹن،8؍اپریل (ایس او نیوزایجنسی) ہندوستان سمیت پوری دنیا میں کورونا وائرس کا قہر جاری ہے۔ چین اور اٹلی کے بعد امریکہ میں سب سے زیادہ اس مہلک بیماری کا قہر دیکھا جا رہا ہے۔ موجودہ وقت کی بات کریں تو امریکہ کی حالت انتہائی بدتر ہے اور یہ ملک موت کا کنواں بنتا ہوا نظر آ رہا ہے۔ امریکہ میں روزانہ سینکڑوں لوگ اس بیماری سے ہلاک ہو رہے ہیں۔ امریکہ میں کورونا وائرس کے تازہ اعداد و شمار خوفزدہ کرنے والے ہیں۔ گزشتہ 24 گھنٹے کے اندر ہی امریکہ میں ریکارڈ 2000 لوگوں کی موت ہو گئی ہے۔

امریکہ میں اب تک کورونا وائرس کی وجہ سے ہلاکتوں کی تعداد تقریباً 13 ہزار پہنچ گئی ہے۔ یہاں پر کورونا کے معاملے لگاتار بڑھ رہے ہیں۔ امریکہ میں کورونا وائرس کے مریض کسی بھی ملک سے زیادہ ہیں۔ اب تک امریکہ میں 4 لاکھ سے زیادہ لوگ اس وائرس کے انفیکشن میں مبتلا ہو چکے ہیں، جب کہ دوسرے نمبر پر اسپین ہے جہاں تقریباً 1 لاکھ 42 ہزار کورونا انفیکشن کے مریض ہیں۔ تیسرے اور چوتھے مقام پر اٹلی اور فرانس ہے جہاں متاثرین کی تعداد بالترتیب 1 لاکھ 35 ہزار اور 1 لاکھ 10 ہزار ہے۔ پانچویں نمبر پر 1 لاکھ 7 ہزار متاثرین والا ملک جرمنی ہے اور چین کا نمبر اس کے بعد یعنی چھٹے مقام پر ہے جہاں کورونا انفیکشن کے مریضوں کی تعداد تقریباً 82 ہزار ہے۔

بہر حال، کورونا کی وجہ سے ہوئی اموات پر امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے اپنا رد عمل پیش کرتے ہوئے کہا کہ "موت کی نئی تعداد امکان سے کم ہے۔ ہم بنیادی طور پر اپنی سوچ کے مقابلے میں بہت کم اموات دیکھ رہے ہیں۔" انھوں نے مزید کہا کہ "مجھے لگتا ہے کہ ہم صحیح سمت میں بڑھ رہے ہیں، لیکن اس کے بارے میں بات کرنا ابھی جلد بازی ہوگی۔"

ایک نظر اس پر بھی

افغانستان میں طالبان کے حملہ میں 14 افغان فوجی ہلاک،متعدد زخمی

مشرقی افغانستان میں طالبان کے حملے میں 14 افغان فوجی ہلاک ہو گئے جبکہ افغان حکام کا کہنا ہے کہ وہ اب بھی سیز فائر کے سلسلے میں طالبان سے بات چیت کر رہے ہیں۔ طالبان نے پکتیا صوبے میں کیے گئے اس حملے کی ذمے داری قبول کر لی ہے اور اسے ایک دفاعی حملہ قرار دیا ہے البتہ انہوں نے اس کی ...

ہند۔چین ثالثی کیلئے ٹرمپ کی حیرت انگیز پیشکش

امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے ہندوستان اور چین کے مابین جاری سرحدی تنازعہ میں ثالثی کی پیش کش کرتے ہوئے گذشتہ سال پاکستان کے ساتھ تنازعہ کی یاد تازہ کردی- انہوں نے اس وقت بھی یہی پیش کش کی تھی اور کہا تھا کہ اگر ہندوستان اور پاکستان چاہیں تو وہ مسئلہ کشمیر پر ثالثی کر سکتے ہیں -