کرناٹک: بی جے پی کی  حکومت سازی، خرید فروخت کی جیت: سدارمیا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 27th July 2019, 11:39 PM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بنگلورو،27جولائی (ایس او نیوز/ آئی این ایس انڈیا) سینئر کانگریسی لیڈر سدا رمیا نے کہا کہ کرناٹک میں بی جے پی کی حکومت آئینی یا اخلاقی طور پر قائم نہیں کی گئی ہے اور اس پورے معاملے کو خرید و فروخت کی جیت بتایا۔ کانگریس پارٹی اراکین کے لیڈر سدا رمیا نے بی جے پی پر حکومت بنانے کے لئے گورنر کے عہدے کے غلط استعمال کا الزام لگایا۔ انہوں نے کہا کہ:’یدی یورپا کی اکثریت نہ ہونے کے باوجود گورنر کے عہدے کا غلط استعمال کر کے حلف لینا اپنے آپ میں آئین کی خلاف ورزی ہے۔موجودہ حالات کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ تین ممبران اسمبلی کے نااہل ٹھہرائے جانے کے بعد اسمبلی میں کل 221 رکن رہ گئے ہیں اور اس میں نصف کے اعداد و شمار 111 ہیں۔ اگرچہ بی جے پی کے پاس صرف 105 رکن اسمبلی ہیں۔سدا رمیا نے کہا کہ بی جے پی کو 111 ممبران اسمبلی کی فہرست سونپنی ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ ممبئی میں رہ رہے باغی ممبران اسمبلی کے نام نہیں دیئے جا سکتے کیونکہ وہ کانگریس اور جے ڈی ایس سے ہیں۔سدا رمیا نے پوچھا کہ:’یہ (بی جے پی کی) آئینی یا اخلاقی طور پر قائم حکومت نہیں ہے، وہ (بی جے پی) تب اکثریت کس طرح ثابت کریں گے۔انہوں نے کہا کہ اگر کانگریس اور جے ڈ ی  ایس ممبران اسمبلی کو یرغمال نہیں بنایا جاتا تو ایچ ڈی کمارسوامی کی قیادت والی مخلوط حکومت نہیں گرتی۔کانگریسی لیڈر نے کہا کہ:’انہوں نے (بی جے پی نے) ہمارے ممبران اسمبلی کو لالچ دے کر غیر قانونی طور پر یرغمال بنایا اور اب وہ (بی جے پی) کہہ رہے ہیں کہ یہ لوگوں کی جیت ہے، نہیں، یہ لوگوں کی جیت نہیں ہے،بلکہ یہ خرید و فروخت کی جیت ہے‘۔

ایک نظر اس پر بھی

بنگلورو کی خواتین اب بھی ”گلابی سارتھی“ سے واقف نہیں ہیں

بنگلورو میٹرو پالیٹن ٹرانسپورٹ کارپوریشن (بی ایم ٹی سی) نے اسی سال جون کے مہینہ میں خواتین کے تحفظ کے پیش نظر اور ان پر کی جانے والے کسی طرح کے ظلم یا ہراسانی سے متعلق شکایت درج کرانے اور فوری اس کے ازالہ کے لئے 25 خصوصی سواریاں جاری کی تھی جنہیں ”گلابی سارتھی“ کا نام دیا گیا،

بی ایم ٹی سی کے رعایتی بس پاس کے اجراء کی کارروائی اب بھی جاری مگر کارپوریشن نے اب تک 38,000 درخواستیں مسترد کی ہے

بنگلور میٹرو پالیٹن ٹرانسپورٹ کارپوریشن (بی ایم ٹی سی) نے طلباء کی طرف سے رعایتی بس پاس حاصل کرنے کے لئے داخل کردہ کل 38,224 درخواستوں کو اب تک رد کر دیا ہے اور اس کے لئے یہ وجہ بیان کی گئی ہے کہ ان کے تعلیمی اداروں کی طرف سے ان طلباء کی تفصیلات مناسب انداز میں فراہم نہیں کی گئی ہیں۔

بھٹکل کُندا جزیرہ کے قریب بوٹ ڈوب گئی؛ پانچ ماہی گیروں کو بچالیا گیا

بحرعرب کے کُندا جزیرہ کے قریب ایک ماہی گیری بوٹ ڈوب جانے سے لاکھوں مالیت کا نقصان ہوا ہے، البتہ بوٹ پر سوار پانچوں ماہی گیروں کو ایک دوسری بوٹ کی مدد سے بچالیا گیا ہے۔ واردات اتوار کی شام کو پیش آئی ہے۔

بھٹکل مسلم جماعت بحرین کا سالانہ جلسہ اور عام انتخابات؛ بیلٹ پیپر کے ذریعے 12 اراکین منتخب؛ پیر کو ہوگا عہدیداران کا انتخاب

بھٹکل مسلم جماعت کا سالانہ جلسہ اور عام انتخابات مورخہ 10 ستمبر کوبحرین کے فارم ہاوس میں منعقد ہوا جس میں 12 اراکین انتظامیہ کا انتخاب عمل میں آیا۔  انتخابات کے لئے جناب محمد شکیل مصباح صاحب کو الیکشن کمشنر کی ذمہ داری سونپی گئی تھی جنہوں نے نہایت ہی حسن خوبی کے ساتھ اپنے فرائض ...

بھٹکل میں ٹریفک جرمانہ سے بچاؤ کے لئے واٹس ایپ گروپ کا استعمال:نوجوان لڑکوں کی نئی نئی سوچ

ئے ٹرافک اصول اور عائد کئے جانےو الے جرمانےسے  اگر کوئی زیادہ پریشان یا سرخراب کیا ہےتو وہ تعلقہ کے نوجوان لڑکے ہیں ،جب اپنے روزانہ اخراجات کے لئے ہی اُن کے پاس  پیسے نہیں رہتے ہیں، جیب خالی خالی رہتی ہے ایسے میں ہزاروں روپئے کا جرمانہ عائد کیا جائے گا تو  بائک سوارمشکل میں ...