ضلع شمالی کینرا میں برسات اور سیلاب سے بگڑتی صورتحال۔ دیہات ہوگئے جزیروں میں تبدیل

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th August 2019, 5:05 PM | ساحلی خبریں |

کاروار 10/اگست (ایس او نیوز) ایسا لگتا ہے کہ ضلع شمالی کینرا میں ہر گزرتے ہوئے دن کے ساتھ برسات اور سیلاب کی صورت حال بگڑتی جارہی ہے، کیونکہ موسلادھار بارش تھمنے کا نام نہیں لے رہی ہے۔

شمالی کینرا کی کالی ندی اور گنگاولی ندی کے کناروں پر بسنے والوں کے علاوہ کاروار، انکولہ اور یلاپور کے تعلقہ جات میں برسات کی وجہ سے کافی تباہی مچی ہے۔جمعہ کے دن گنگاولی ندی پر بنا ہوا جھولتا پُل (ہینگنگ برج) سیلاب میں بہہ گیا۔بیڈتی ندی میں طغیانی کی وجہ سے سرسی اور یلاپور کے درمیان رابطے والا راستہ بالکل منقطع ہوگیا ہے۔انکولہ تعلقہ کے کئی دیہات سیلاب کی وجہ سے جزیروں میں بدل گئے ہیں۔متاثرین کو ریلیف پہنچانے کے لئے نیوی کا ایک ہیلی کاپٹر ضروری امدادی سامان کے ساتھ کاروار بحری اڈے سے روانہ کیا گیا تھا، مگر موسم انتہائی بدتر ہونے کی وجہ سے ہیلی کاپٹر کو واپس لوٹ آنا پڑا۔انکولہ پولیس اور مقامی ماہی گیر پانی سے گھرے لوگوں کو امداد پہنچانے کی بھرپور کوشش کررہے ہیں، مگرتمام متاثرتک امداد پہنچانا ابھی ممکن نہیں ہوا ہے۔

محکمہ موسمیات کی طرف سے ریڈ الرٹ جاری کیے جانے کے بعد ضلع شمالی کینرا کے تعلیمی اداروں کو سنیچر کے دن بھی تعطیل کا اعلان کیا گیا ہے۔ جبکہ اتوار کی ہفتہ واری چھٹی کے علاوہ پیر کے دن بقر عید کی چھٹی بھی رہے گی۔

گھاٹ کے علاقے میں زبردست بارش کو دیکھتے ہوئے ضلع انتظامیہ نے احتیاطی طور پرمنگلورو سے نیشنل ڈیساسٹر ریسپونس فورس کی ایک ٹیم کو کاروار کے لئے طلب کیا ہے۔ایک اندازے کے مطابق پچھلے ایک ہفتے سے ہورہی لگاتار اور بھاری برسات کی وجہ سے اب تک ضلع شمالی کینرا کے 106دیہات بہت بری طرح متاثر ہوئے ہیں۔11200سے زائد افراد 93راحت کیمپوں میں منتقل کیے گئے ہیں اور وہاں ان کے لئے کھانے پینے اور رہائش کاانتظام سرکاری طور پر بھی کیا گیا ہے اور بعض مقامات پر سماجی فلاحی ادارے بھی اپنا تعاون دے رہے ہیں۔ضلع ڈپٹی کمشنر ڈاکٹر ہریش کمار نے بتایا ہے کہ این ڈی آر ایف ٹیم کو طلب کرلیا گیا ہے۔ سیلاب کی صورتحال ابھی قابو میں ہے، اس لئے عوام کو بہت زیادہ خوف زدہ ہونے کی ضرورت نہیں ہے۔ ضلع انتظامیہ نے ان حالات سے نمٹنے کے لئے تمام انتظامات کرلیے ہیں۔ڈی سی مزید بتایا کہ فی الحال ضلع کے اندر 26پُل پانی میں ڈوب گئے ہیں اور بشمول نیشنل ہائی وے 66بہت ساری اہم سڑکیں زیر آب ہوگئی ہیں۔ضلع کے 12تعلقہ جات میں 1,763گھروں کو بارش اور سیلاب کی وجہ سے نقصان پہنچاہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں ایک کار سے ایک گولڈ بسکٹ سمیت دو سونے کی سلاخیں برآمد کرتے ہوئے دو لوگوں کو پولس نے کیا گرفتار

بھٹکل میں بدھ کی دیر رات کو بھٹکل ٹاون پولس نے ایک کار پر سے تین گولڈ بسکٹ برآمدکرتے ہوئے  کار پر سوار دو لوگوں کو گرفتار کرلیا ہے، بعد میں آج جمعرات صبح مزید دو لوگوں کو  تحویل میں لئے جانے کی اطلاع موصول ہوئی ہے۔

ساحلی کرناٹکا میں موسلادھار بارش؛ انکولہ ۔یلاپور ہائی وے پانی میں ڈوب گیا؛ چلتی کار پرردرخت گرنے سے کاروار کا ایک شخص ہلاک؛ ہوناور کے ولکی میں پانی کمپاونڈوں میں گھس گیا

ساحلی کرناٹکا میں گذشتہ تین چار دنوں سے زوردار بارش کا سلسلہ جاری ہے جس کے نتیجے میں مختلف علاقوں سے نقصانات کی خبریں آرہی ہیں۔  یلاپور سے ملی اطلاع کے مطابق زبردست بارش کے نتیجے میں انکولہ۔یلاپور ہائی وے  پانی میں ڈوب  گیا ہے۔ یہ سڑک بند ہوجانے سے   انکولہ۔ ہبلی نیشنل ہائی ...

بھٹکل: مرڈیشور میں علاج نہ ملنے سے مریض کی موت۔ ڈاکٹر کے خلاف کارروائی کے لئے اے سی کو دیا گیا میمورنڈم

دل کا دورہ پڑنے پر مریض کو کورونا وباء کے شک میں مرڈئشور سرکاری اسپتال میں علاج کی سہولت فراہم نہ کرنے سے موت واقع ہونے کا الزام لگاتے ہوئے مریض کے گھروالوں کے علاوہ مقامی افراد نے بھٹکل اسسٹنٹ کمشنر کو میمورنڈم دیا جس میں سرکار ی ڈاکٹر کے خلاف قانونی کارروائی کا مطالبہ کیاگیا ...

کاروار؛ شمالی کینرا میں چار طلبہ نے پاس کیا سول سروس امتحان؛ ضلع میں پہلی مرتبہ 2لڑکیوں کو بھی ملی کامیابی

یونین پبلک سروس کمیشن(یو پی ایس سی) کے تحت منعقد کیے جانے والے امتحان میں امسال شمالی کینرا سے کُل 4طلبہ نے کامیابی حاصل کی ہے۔ جس میں شمالی کینرا کی تاریخ میں پہلی مرتبہ 2لڑکیاں بھی شامل ہیں۔

بھٹکل میں طوفانی ہواوں کے ساتھ زوردار بارش؛ کئی درخت اُکھڑ گئے، الیکٹرک ٹرانسفارمر سمیت کئی کھمبوں کو نقصان؛ بجلی کی انکھ مچولیاں

بھٹکل میں آج منگل صبح سے طوفانی ہواوں کے ساتھ زور دار بارش کے نتیجے میں کئی علاقوں میں درختوں کے اُکھڑنے کے ساتھ ساتھ بجلی کے کھمبوں کے گرنے اور کئی مقامات پر الیکٹرک ٹرانسفارمر کو نقصان پہنچنے کی اطلاعات موصول ہوئیں جس کی وجہ سے پورا دن  بجلی کی انکھ مچولیاں جاری رہیں۔