سمندری طوفان 'سیلی' امریکی ساحل سے ٹکرا گیا، شدید بارشوں کی پیشن گوئی

Source: S.O. News Service | By INS India | Published on 17th September 2020, 8:26 PM | عالمی خبریں |

واشنگٹن، 17/ ستمبر (آئی این ایس انڈیا) سمندری طوفان 'سیلی' بدھ کی صبح امریکی ریاست الاباما کے ساحلی قصبوں سے ٹکرا گیا۔ اپنے ساتھ تند و تیز ہوائیں اور شدید بارشیں لانے والے طوفان کے متعلق موسمیات کے ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ وہ خلیجی ساحل کے کئی علاقوں میں بڑے پیمانے پر تباہی اور سیلاب لا سکتا ہے۔

سیلی میں ہواؤں کی رفتار 165 کلومیٹر فی گھنٹہ ہے اور طوفانوں کی درجہ بندی میں اس وقت وہ دوسری کیٹیگری پر ہے۔ ماہرین سمندری طوفانوں کو اس کی شدت کے لحاظ سے پانچ درجوں میں تقسیم کرتے ہیں۔

نیشنل ہری کین سینٹر نے مسی سپی اور الاباما کے سرحدی علاقوں اور شمالی فلوریڈا کے رہائشیوں کو خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ طوفان کا رخ شمال مشرق کی جانب ہے اور وہ بڑے پیمانے پر تباہی لا سکتا ہے۔

ماہرین نے پیش گوئی کی ہے کہ ان علاقوں میں بدھ کے روز 20 سے 30 سینٹی میٹر تک بارش ہو سکتی ہے، جب کہ بعض علاقوں میں یہ طوفان 88 سینٹی میٹر تک مینہ برسا سکتا ہے، جس سے علاقے میں تباہ کن سیلاب آ سکتے ہیں۔

موسمیات کے محکمے کے ایک اعلان میں کہا گیا ہے کہ ریاست ورجینیا کے شمالی حصے اور نارتھ اور ساؤتھ کیرولائنا کے کئی حصوں میں بھی شدید بارشیں ہو سکتی ہیں۔

ماہرین نے انتباہ کیا ہے کہ ہری کین سیلی کے باعث فلوریڈا، جنوبی الاباما اور جنوب مغربی جارجیا کے کئی علاقوں میں دن بھر بگولے چل سکتے ہیں۔

صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے پیر کے روز لوزیانا، مسی سپی اور الاباما کے علاقوں میں ایمرجنسی کا اعلان کیا تھا۔ انہوں نے اپنی ایک ٹوئٹ میں وہاں کے رہائشیوں سے کہا ہے کہ وہ اس سلسلے میں مقامی اور ریاستی عہدے داروں کے اعلانات پر دھیان دیں۔

ایک نظر اس پر بھی

توہین رسالت معاملہ میں عرب دنیا متحد؛ مصنوعات بائیکاٹ مہم سے گھٹنے ٹیکنے پر مجبور ہوا فرانس 

آزادی اظہار کے نام پر گستاخانہ کارٹون بنانے پر مصر رہنے والا فرانس پہلی بار عرب دنیا کی جانب سے چلائی گئی ’’فرانس کے مصنوعات کی بائیکاٹ مہم‘‘ کے سامنے گھٹنا ٹیک کر گڑ گڑاتے ہوئے نظر آرہا ہے۔