کرناٹک میں سیلاب سے پانچ ماہ میں 71 لوگوں کی موت، 3531 گھر تباہ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 9th August 2019, 10:15 PM | ریاستی خبریں | ملکی خبریں |

نئی دہلی، 9 اگست(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) کرناٹک میں سیلاب سے اب تک 71 لوگوں کی موت ہو چکی ہے۔وزارت داخلہ کی رپورٹ کے مطابق، یکم اپریل 2019 سے اب تک سیلاب کی وجہ سے 71 لوگ اپنی جان گنوا چکے ہیں۔اس کے ساتھ ہی سیلاب کی زد میں آنے سے 3531 لوگوں کے گھر کو نقصان پہنچا ہے اور 3148 جانوروں کی موت ہو چکی ہے۔کرناٹک میں جن 71 لوگوں کی موت ہوئی ہے، اس میں بجلی گرنے سے 35 لوگ، گھر اور درخت گرنے سے 25 افراد اور سیلاب میں بہہ جانے کی وجہ سے 12 لوگوں کی موت ہو چکی ہے۔اس کے علاوہ ایک شخص کی موت لینڈسلائڈنگ کی وجہ سے ہوئی ہے۔کرناٹک میں سیلاب سے متاثر 32748 لوگوں کو محفوظ مقامات پر پہنچایا گیا ہے،ملک کے زیادہ تر حصوں میں سیلاب اور بارش کی تباہی جاری ہے۔اس سلسلے میں وزارت داخلہ کئی اہم میٹنگ کر چکی ہے۔مہاراشٹر اور کیرل میں سیلاب کا کہرام جاری ہے۔سیلاب کی وجہ سے اب تک مہاراشٹر میں 29 اور کیرالہ میں 22 لوگوں کی موت ہو چکی ہیں۔مہاراشٹر کے سانگلی میں 11، کولہاپور میں 4، پونے میں 6، ستارا میں 7 اور شعلہ پور میں ایک کی موت ہوئی ہے۔وہیں، کیرل میں 22 لوگوں کی موت ہو چکی ہے، جبکہ 22 ہزار لوگ ریلیف کیمپ میں پناہ لئے ہوئے ہیں۔کرناٹک میں بھی سیلاب نے تباہی مچائی ہے،یہاں پر اب تک 10 لوگوں کی موت ہو چکی ہے۔کیرالہ میں این ڈی آر ایف امدادی کاموں میں لگی ہے۔سیلاب کی وجہ سے کوچی ہوائی اڈے اتوار تک بند کر دیا گیا ہے۔مہاراشٹر، مدھیہ پردیش اور اڑیسہ کا بڑا حصہ سیلاب کے سبب پانی پانی ہو گیا ہے۔کرناٹک کے بیلگام میں تین ہیلی کاپٹر ریسکیو مشن میں مصروف ہیں۔اس کے علاوہ مہاراشٹر میں بحریہ تو کیرل-کرناٹک میں فوج اور فضائیہ کو ریسکیو کاموں میں لگایا گیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

  مسلم متحدہ محاذ، جماعت اسلامی ہند اور کئی تنظیموں کے ایک نمائندہ وفدکا سابق وزیر اعظم ایچ ڈی دیوے گوڈا سے ملاقات اور شہریت ترمیمی بل   کی مخالفت اور دستور کے تحفظ میں تعاون کرنے کی اپیل

مسلم متحدہ محاذ، جما عت اسلامی ہند، سدبھاؤ نا منچ بورڈ آف اسلامک ایجوکیشن کرناٹک، ایف ڈی سی اے، ایس آئی او، اے پی سی آر  اور مومنٹ فار جسٹس جیسے ہم خیال تنظیموں کی قیادت میں مسلم نمائندوں کا ایک وفد 7 / دسمبر 2019  ء  بروز سنیچر، سابق وزیر اعظم شری ایچ ڈی دیوے گوڈا سے ملاقات کرتے ...

ہوناورمیں پریش میستا کی مشتبہ موت کوگزرگئے2سال۔ سی بی آئی کی تحقیقات کے باوجود نہیں کھل رہا ہے راز۔ اشتعال انگیزی کرنے والے ہیگڈے اور کرندلاجے کے منھ پر کیوں پڑا ہے تالا؟

اب سے دو سال قبل 6دسمبر کو ہوناور میں دو فریقوں کے درمیان معمولی بات پر شرو ع ہونے والا جھگڑا باقاعدہ فرقہ وارانہ فساد کا روپ اختیار کرگیا تھا جس کے بعد پریش میستا نامی ایک نوجوان کی لاش شنی مندر کے قریب واقع تالاب سے برآمد ہوئی تھی۔     اس مشکوک موت کو فرقہ وارانہ رنگ دے کر پورے ...

کاروار:ہائی وے توسیع کے لئے سرکاری زمین تحویل میں لینے پرمعاوضہ کی ادا ئیگی۔ ملک میں قانون وضع کرنے کے لئے ضلع شمالی کینرا بنا ماڈل

نیشنل ہائی وے66 توسیعی منصوبے کے لئے سرکاری زمینات کو تحویل میں لینے کے بعد خیر سگالی کے طورمعاوضہ ادا کرنے کی پہل ضلع شمالی کینرا میں ہوئی جس کی بنیاد پر نیشنل ہائی وے ایکٹ 1956میں ترمیم کرتے ہوئے ملک بھر میں تحویل اراضی پرمعاوضہ ادائیگی کا نیا قانون2017میں وضع کیا گیا ہے۔

عصمت دری کی راجدھانی بن گیا ہندوستان پھر بھی خاموش ہیں پی ایم مودی: راہل

 کانگریس کے سنیئر لیڈر راہل گاندھی نے اتر پردیش میں ایک لڑکی کے ساتھ ہوئی عصمت دری معاملے پر وزیراعظم نریندر مودی پر خاموشی اختیار کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے آج کہاکہ ہندوستان دنیا کی عصمت دری کی راجدھانی میں تبدیل ہو رہا ہے ،