کیرالہ، کرناٹک اور مہاراشٹر میں بارش اور سیلاب کاقہر، اب تک 93 ہلاک، ریسکیو آپریشن جاری

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th August 2019, 12:21 AM | ریاستی خبریں | ملکی خبریں |

وایناڈ / بنگلور / کولہاپور، 10 اگست(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) کیرالہ، کرناٹک اور مہاراشٹر میں بارش اور سیلاب کا قہر جاری ہے۔گزشتہ 72 گھنٹوں میں تینوں ریاستوں میں 93 جانیں جا چکی ہیں۔سیلاب اور بارش سے کیرل میں اس مانسون کے دوران 42 لوگوں کی موت ہو چکی ہے۔کیرالہ کے وایناڈ اور ملی پورم میں لینڈسلائڈنگ کی وجہ سے 40 افراد اب بھی پھنسے ہوئے ہیں جس سے موت کے اعداد و شمار اور بڑھنے کا خدشہ ہے، یہاں خراب موسم کی وجہ سے ریسکیو آپریشن میں رکاوٹ پیدا ہو رہا ہے۔ریسکیو آپریشن میں فوج اور این ڈی آر ایف کی مدد لی جا رہی ہے۔تمل ناڈو میں بھی بارش کی وجہ سے 5 کی موت ہو چکی ہے۔ہندوستانی فوج، بحریہ اور ایئر فورس کے جوان امدادی کام میں مصروف ہیں۔سیلاب سے متاثرہ چار ریاستوں کے 16 اضلاع میں 123 ریسکیو ٹیمیں پھنسے ہوئے لوگوں کی مدد پہنچا رہی ہیں۔کیرل میں اس مانسونی بارش کی خطرناک شکل گزشتہ سال والی اگست سانحہ کی دردناک یادیں تازہ کر رہی ہے۔جمعہ کو کیرل میں 27 جبکہ 7 افراد ہلاک ہفتہ کو ہو گئے۔یہاں گزشتہ 72 گھنٹے میں مجموعی طور پر 42 افراد کی جان چلی گئی۔یہاں وایناڈ اور ملپپرم میں بڑے لینڈسلائڈنگ کی وجہ سے اب 40 افراد پھنسے ہوئے ہیں جس سے موت کے اعداد و شمار بڑھنے کا خدشہ ہے۔ریسکیو ٹیمیں یہاں پہنچ چکی ہیں لیکن خراب موسم کی وجہ ریسکیو آپریشن میں خلل پیدا ہو رہا ہے۔کرناٹک کے بگلکوٹ، رایچور، بے لگام اور کلبرگی اضلاع میں 33 ریلیف ٹیمیں اور اجنیرو میں 31 ٹاسک فورس سیلاب سے متاثرہ لوگوں کو راحت پہنچانے کے کام میں مصروف ہیں۔وہیں کیرل میں 24 ریلیف ٹیموں کے ساتھ 8 انجینئر ٹاسک فورس کو الیپی، ایرناکلم، پتھانمتھٹا، ادکی، ملپپرم، وایناڈ اور کوجھکوڈ میں راحت اور بچاؤ کے کام میں لگایا گیا ہے۔ریسکیو ٹیموں نے وایناڈ سے 8 لاشیں برآمد کئے ہیں جبکہ ملپپرم کے پہاڑی علاقوں میں آئے لینڈسلائڈنگ کی وجہ سے 10 لوگوں کی موت ہو گئی اور 30 لاپتہ ہیں۔وزیر اعلی پنرای وجین نے بتایا کہ اب بھی لینڈسلائڈنگ میں بہت سے لوگ لاپتہ ہیں، لہذا صحیح اعداد و شمار بعد میں ہی پتہ چلے گا۔کیرل میں اب بھی 20 سے 40 سینٹی میٹر کی رفتار سے بارش ہو رہی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

ریاستی حکومت نے آئی ایم اے فراڈ کیس کی جانچ سی بی آئی کے حوالے کیا

ریاست کی سابقہ کانگریس جے ڈی ایس حکومت کے دور میں کی گئی مبینہ ٹیلی فون ٹیپنگ کی سی بی آئی جانچ کے ا حکامات صادر کرنے کے دودن بعد ہی آج ریاستی حکومت نے کروڑوں روپیوں کے آئی ایم اے فراڈ کیس کی جانچ سی بی آئی کے سپرد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

کیا شمالی کینرا سے شیورام ہیبار کے لئے وزارت کا قلمدان محفوظ رکھا گیا ہے؟

کرناٹکاکے وزیراعلیٰ  ایڈی یورپا نے دو دن پہلے اپنی کابینہ کی جو تشکیل کی ہے اس میں ریاست کے 13اضلاع کو اہمیت دیتے ہوئے وہاں کے نمائندوں کو وزارتی قلمدان سے نوازا گیا ہے۔اور بقیہ 17اضلاع کو ابھی کابینہ میں نمائندگی نہیں دی گئی ہے۔

بنگلورو: نشے میں دھت شخص نے فٹ پاتھ پر 7 لوگوں کو کچل دیا

شراب کے نشے میں دھت ایک شخص نے بہت تیز رفتار کار فٹ پاتھ پر چڑھا دی اور فٹ پاتھ پر چل رہے 7 افراد اس کار کی زد میں آ گئے۔ زخمیوں کو فوراً اسپتال پہنچایا گیا اور خبر لکھے جانے تک ان لوگوں کی حلات نازک بنی ہوئی ہے۔ یہ واقعہ بینگلورو کے ایچ ایس آر لے آؤٹ علاقے کا ہے۔

ریزرویشن سے متعلق آر ایس ایس اور بی جے پی کے ارادے ٹھیک نہیں: تیجسوی یادو

  بہار اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر تیجسوی پرساد یادو نے ریزرویشن کے معاملے پر راشٹریہ سوئم سیوک سنگھ ( آر ایس ایس ) کے چیف موہن بھاگوت کے حالیہ بیان پر پلٹ وار کرتے ہوئے کہا کہ ریزرویشن کو لے کر آر ایس ایس اور بھارتیہ جنتا پارٹی ( بی جے پی ) کے ارادے ٹھیک نہیں ہیں۔