بریکنگ نیوز

چین میں سخت کووڈ پابندیوں کے خلاف زبردست احتجاج، صدر شی جنپنگ کے استعفے کا مطالبہ

Source: S.O. News Service | Published on 28th November 2022, 12:42 PM | عالمی خبریں |

شنگھائی، 28؍نومبر (ایس او نیوز؍ایجنسی ) چین  کے شنگھائی میں ایک اپارٹمنٹ بلاک میں آگ لگنے کے بعد چین میں کووِڈ پابندیوں کے خلاف مظاہروں میں شدت آتی دکھائی دے رہی ہے۔ مقامی میڈیا کے مطابق، ہزاروں افراد متاثرین کو یاد کرنے اور پابندیوں کے خلاف مظاہرہ کرنے کے لیے شنگھائی کی سڑکوں پر نکل آئے۔ بی بی سی کی رپورٹ کے مطابق اس دوران کئی لوگوں کو صدر شی جنپنگ کے استعفے کا مطالبہ کرتے سنا گیا۔ آگ لگنے سے ہونے والی ہلاکتوں کی وجہ فلیٹوں کے بلاکس میں نافذ لاک ڈاؤن ہے۔

چین کے سب سے بڑے شہر اور عالمی مالیاتی مرکز شنگھائی میں ہونے والے مظاہروں میں کچھ لوگوں کو موم بتیاں روشن کرتے اور متاثرین کے لیے پھول چڑھاتے ہوئے بھی دیکھا گیا۔ دیگر لوگوں کو شی جنپنگ، اسٹیپ ڈاون اور کمیونسٹ پارٹی، اسٹیپ ڈاون جیسے نعرے لگاتے سنا گیا۔ کچھ کے ہاتھوں میں خالی سفید بینر بھی تھے۔

بی بی سی نے اپنی رپورٹ میں بتایا کہ اس طرح کے مطالبات چین کے اندر ایک غیر معمولی منظر کی عکاسی کرتے ہیں، جہاں حکومت اور صدر پر براہ راست تنقید سخت سزاؤں کا باعث بن سکتی ہے۔ مظاہرے میں شامل ایک شخص کا کہنا تھا کہ وہ سڑکوں پر لوگوں کو دیکھ کر حیران ہے، لیکن خود کو تھوڑا پرجوش محسوس کر رہا ہے، اس نے مزید کہا کہ یہ پہلی بار ہے کہ اس نے چین میں اتنے بڑے پیمانے پر احتجاج دیکھا ہے۔

انہوں نے کہا کہ لاک ڈاؤن نے انہیں اداس، غصے اور مایوسی کا احساس دلایا ہے۔ لاک ڈاؤن کی وجہ سے وہ اپنی بیمار ماں کو نہیں دیکھ سکے، جو کینسر میں مبتلا تھی۔ ایک خاتون مظاہرین نے بی بی سی کو بتایا کہ جب پولیس افسران سے پوچھا گیا کہ وہ احتجاج کے بارے میں کیا سوچتے ہیں، تو انہوں نے کہا کہ آپ کی طرح ہم بھی سوچ رہے ہیں، لیکن وردی میں ہونے کی وجہ سے اسے اپنا کام کرنا پڑتا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

دنیا بھر میں بڑھتی مسلم دشمنی نسل پرستی،عدم برداشت دیکھ رہے ہیں: اقوام متحدہ

کوپن ہیگن کی ایک مسجد کے قریب اسلام مخالف شخص کی جانب سے ڈنمارک میں ترک سفارت خانے کے سامنے مسلمانوں کی مقدس کتاب جلانے کے چند گھنٹے بعد اقوام متحدہ نے خبردار کیا کہ انٹرنیٹ نے نفرت انگیز تقریر کو بھڑکایا جس سے مجرموں کو اپنا جھوٹ، سازشیں اور دھمکیاں پھیلانے میں مدد ملی۔

قرآن کو جلانے کے خلاف مظاہروں میں شدت

سویڈن اور ہالینڈ میں انتہائی دائیں بازو کے کارکنوں کی طرف سے حالیہ دنوں میں اسلام کی مقدس کتاب کو نذر آتش کرنے کی مذمت کیلئے جمعہ کو کئی مسلم اکثریتی ممالک میں احتجاجی مظاہرے کیے گئے-

دنیا بھر میں ہورہی ہے چھٹنی،سروے سے کھلا راز، ہر 4 میں سے 1 ہندوستانی کو ملازمت سے برطرفی کا خدشہ

دنیا بھر کی بڑی ٹیک کمپنیوں میں  ملازمین کو نوکریوں سے برطرف کیا جارہا ہے۔ اور ذرائع کی مانیں تو  ہر 4 میں سے 1 ہندوستانی ملازمت کے خاتمے  کو لے کر پریشان ہے۔ دوسری طرف 4 میں سے 3 ہندوستانی بڑھتی ہوئی مہنگائی سے پریشان ہیں۔

افغانستان میں ریکارڈ سردی ، اب تک 157 افراد ہلاک

افغانستان میں اس وقت شدید سردی پڑ رہی ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق سردی نے گزشتہ 15 سال کا ریکارڈ توڑ دیا ہے اور درجہ حرارت گر کر مائنس 34 ڈگری سلسیس تک پہنچ گیا ہے۔ سردی کی اس شدت نے گزشتہ ایک ہفتہ میں لوگوں کو بری طرح حراساں کیا ہے اور سردی کی وجہ سے اموات کی تعداد میں بھی زبردست ...

قرآن کی بے حرمتی کیخلاف عالمِ اسلام میں شدید احتجاج، ترکی ، عراق ، ایران ، لیبیا ، سعودی عرب، یو اے ای اور دیگر اسلامی ممالک میں عوام سڑکوں پر نکل آئے

اسلام کی  مخالفت میں  زہر اگلنے والے  ڈینش سیاست داں راسموس پالودان کے ذریعہ اسٹاک ہوم میں ترک سفارت خانے کے سامنے  قرآن مقدس کا نسخہ نذر آتش کرنے کے خلاف پاکستان، ایران اور ترکی سمیت کئی اسلامی ملکوں میں احتجاجی مظاہرے ہورہے ہیں۔