میڈیا کی پیش کردہ تصویر سے کوسوں دورہے میرا شہر بھٹکل :  سرکاری اسپتال کی میڈیکل آفیسر ڈاکٹر سویتا کا تجربہ

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 12th December 2019, 9:02 PM | ساحلی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بھٹکل:12؍دسمبر(ایس اؤ نیوز)برائیوں میں ڈوبی دنیا میں آج بھی  انسانیت ہے،ایسی ہی ایک زندہ مثال میرےاپنے امن وامان کے لئے مشہور  شہر بھٹکل میں خود میرے ساتھ پیش آئی ہے ،جب کہ میرے اس شہر کے متعلق میڈیا ہزار باتیں لکھتا ہےاور جو دکھاتا ہے وہ اس سے کوسو ں دور ہے۔ بھٹکل سرکاری اسپتال کی میڈیکل آفیسر ڈاکٹر سویتا کامت نے ان خیالات کا اظہار کیا ہے۔

دراصل ڈاکٹر سویتا کامت اپنے کھوئے ہوئے ڈبیٹ کارڈ اور اے ٹی ایم کارڈ کی گمشدگی کو لے کر کافی پریشان تھیں ، جب وہ کہیں سفر پر جارہیں تھیں تو انہیں اپنے ڈبیٹ کارڈ کی ضرورت ہوئی، عین وقت ڈبیٹ کارڈ نہیں  ملے تو انہیں سارا گھر ڈھونڈلیاکہیں نہ پایا۔ خیالات میں ڈوبی سوچ رہی تھی  کہ آخری بار کب استعمال کیا تھا ،کہاں رکھا ہوگا؟ اسی تذبذب میں میں نے لاچار ہوکر بینک کو فون کرکے  میرے ڈبیٹ کارڈ کو بند کرنے کی اطلاع دینے  ہی والی تھی ، اتنے میں میرا موبائیل رنگ ہونےلگااورمجھے ایک اجنبی آواز پوچھنے لگی کہ کیا میں ڈاکٹر سویتا سے بات کررہاہوں ،کیا آپ کی کوئی قیمتی چیز گم ہوگئی ہے،میں جواب  میں کچھ کہہ پاتی ، اس سے پہلے ہی وہ  غیر مانوس آواز میرے  چیمبر کے سامنے تھی ،اور ان کا نام عبدالجبار تھا جو پیشہ سے ایک لیبر ہیں اور ان کے ہاتھوں میں  میری پرس تھی۔انہوں نے بس اتنا کہاکہ مجھے یہ پرس آج صبح  کار پارکنگ پر ملی، میں نے پرس میں آپ کا فوٹو دیکھا،اور یہ نمبر تھا اور اس میں یہ سب کارڈس تھے۔ وہ مجھ سے بس اتنا جان لینا چاہتے تھے کہ میری پرس میں سب کچھ ٹھیک ٹھاک ہے یا نہیں  ۔ جب انہیں یقین ہوگیا کہ پرس بالکل محفوظ ہے توچلے گئے۔ میں بھی جلدی میں تھی۔ دراصل گزشتہ شب ایک حادثے کو لےکر علاج کے لئے  رات ایک بجے  اسپتال پہنچی تھی  تو ہوسکتاہے جلد بازی میں وہ  وہاں گری ہوگی۔  اور ایک انجان شخص مجھے میری چیز امانت داری کے ساتھ لوٹا دی۔ ہاں ، میری بے وقوفی کو معاف کیجئے کہ میرے ڈبیٹ کارڈ س کے پیچھے اس کا پاس ورڈ نمبر بھی تھا،اس کے باوجود میری ہر چیز محفوظ تھی ، اسی لئے میں کہتی ہوں میڈیا کچھ  بھی کہے میرا شہر بھٹکل آج بھی بھائی چارگی  اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی کے لئے ماناجاتاہے۔

ایک نظر اس پر بھی

اننت کمار ہیگڈے نے لگایابی ایس این ایل میں دیش دروہی افسران موجود ہونے کا الزام

اپنے متنازعہ بیانات کے لئے پہچانے جانے والے رکن پارلیمان اننت کمار ہیگڈے نے الزام لگایا کہ بھارت سنچار نگم لمیٹڈ کے اندر دیش دروہی افسران بیٹھے ہوئے جس کی وجہ سے اس کے کام کاج میں کوئی ترقی نہیں ہورہی ہے۔ اس لئے آئندہ دنوں میں اس کی نج کاری (پرائیویٹائزیشن) کیا جائے گا۔

ایم پی اننت کمار ہیگڈے کا بھٹکل دورہ؛ 23.72کروڑ روپے کے ترقیاتی منصوبوں کو دکھائی ہری جھنڈی

پیر کو رکن پارلیمان اننت کمار ہیگڈے نے بھٹکل کا دورہ کرتے ہوئے  بھٹکل تعلقہ میں ’پردھان منتری گرام سڑک یوجنا‘کے تحت 23.72کروڑ روپے لاگت کے مختلف ترقیاتی منصوبوں کو ہری جھنڈی دکھائی۔ وہ یہاں ماروتی نگر میں بی جے پی تعلقہ آفس کا افتتاح کرنے کے بعد خطاب کررہے تھے۔

مینگلور کے قریب سولیا میں ہائی ٹینشن الیکٹرک کیبل کی زد میں آکر بائک کے ساتھ بائک سوا ر بھی جل کرخاکستر

ضلع دکشن کنڑا کے  سولیا میں کلّیری نامی علاقے میں آج منگل صبح 5.30بجے پیش آئے  ایک انتہائی دردناک حادثہ میں دو لوگ موقع پر ہی جل کر ہلاک ہوگئے جن میں ایک  شناخت  اُمیش (45) کی حیثیت سے کی گئی ہے، جبکہ  بائک کی پچھلی سیٹ پر سوار اس کے  ساتھی کا  نام معلوم نہ ہوسکا۔

کاروار:ایس ایس ایل سی امتحان کے نتائج۔ سرسی کی سنّدھی ہیگڈے نے پایا ریاست میں پہلا رینک

امسال ریاست میں ایس ایس ایل سی کے جو امتحانات ہوئے تھے اس کا سامنا طلبہ نے کووڈ وباء کے پس منظر میں ذہنی تناؤ کے ساتھ کیا تھا۔اس کے بعد کافی دنوں سے طلبہ بڑی بے چینی کے ساتھ اپنے نتائج کا انتظار کررہے تھے۔

باپ کی املاک پر بیٹی کا بیٹے کی طرح یکساں حق: سپریم کورٹ

سپریم کورٹ نے منگل کو ایک دور رس نتائج والے اپنے فیصلہ میں کہا ہے کہ ہندو غیر منقسم خاندان کی آبائی املاک میں بیٹی کو بیٹے کی طرح ہی حقوق حاصل ہوں گے، یہاں تک کہ اگر ہندو جانشینی (ترمیمی) ایکٹ 2005 کے نفاذ سے قبل ہی اس کے والد کی موت کیوں نہ ہوگئی ہو۔

بنگلور: ٹرانسفرس کے احکامات ملتوی کرانے میں مبینہ طور پر با رسوخ اساتذہ کی لابی شامل، چار سال سے ڈگری کالجوں کے لکچررس کے تبادلے نہیں ہوسکے

ریاست کرناٹک کے سرکاری فرسٹ گریڈ کالجوں میں خدمات انجام دے رہے لکچررس کے تبادلے نہیں ہوسکے ہیں، جس کے سبب انہیں کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اس تعلق سے الزامات لگائے جارہے ہیں کہ  چند با رسوخ لکچررس کی طرف سے سیاسی اثر و رسوخ کا استعمال کرکے تبادلوں کی کاروائی ملتوی ...