یمن تنازع پر اقوام متحدہ کی ثالثی میں مذاکرات بغیر پیش رفت کے ختم

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th September 2018, 1:45 PM | عالمی خبریں |

واشنگٹن،10؍ ستمبر (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) جنیوا میں اقوام متحدہ کی ثالثی میں منعقد ہونے والے سہ روزہ مذاکرات جن کا مقصد یمن کی خانہ جنگی کے خاتمے کے لیے اہم بات چیت کا دوبارہ اجرا تھا، بے نتیجہ رہے، چونکہ مذاکرات کا ایک اہم فریق اجلاس میں شریک نہیں ہوا۔اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی برائے یمن، مارٹن گرفتھس نے ناکام بات چیت کے بارے میں مایوسی کا اظہار نہیں کیا، یہ کہتے ہوئے کہ سودمند مباحثے کا آغاز ہوگیا ہے۔ حالانکہ بات چیت میں اْن کے علاوہ یمنی حکومت کا وفد موجود تھا۔اْنھوں نے اس بات پر مایوسی کا اظہار کیا کہ باغی حوثیوں کا وفد، جسے سرکاری طور پر 'انصار اللہ' کے نام سے جانا جاتا ہے، شامل نہیں ہوا۔ لیکن، کہا کہ تنازعے میں ملوث فریق کے لیے یہ بات غیرمعمولی نہیں، جب کہ ایسے مذاکرات میں اس قسم کی مشکلات درپیش آتی ہیں۔بقول اْن کے، ''لیکن، ہاں کمرے میں موجود بڑا ہاتھی، 'انصارالل'ہ کے وفد کو لانے میں ناکام رہا، جو وفد صنعا سے یہاں آنا تھا۔ اور اِن دِنوں کے دوران ہم بات چیت، مذاکرات اور تیاریوں میں مصروف رہے آیا 'آپشنز' اور 'متبادل راہیں' کون سی ہوسکتی ہیں۔۔۔، اس لیے، میں اس عمل میں بنیادی طور پر کسی رکاوٹ کو حائل نہیں دیکھتا۔گرفتھس نے جینوا مذاکرات میں شرکت کے لیے حوثیوں کی جانب سے پیش کردہ مطالبوں کا ذکر نہیں کیا۔ تاہم، حوثیوں کے ایک چوٹی کے اہلکار نے کہا ہے کہ اْن کے گروپ نے شرکت کے لیے کچھ شرائط رکھی تھیں، جن میں یہ یقین دہانی کرانا بھی شامل تھا کہ انہیں یمن واپسی کی ضمانت دی جائے گی، اور علاج کے لیے لڑائی میں اپنے زخمیوں کے انخلا کی اجازت ہو گی۔یمن کے امور خارجہ کے وزیر، خالد الیمنی نے خصوصی ایلچی کے الفاظ پر نکتہ چینی کی ہے، یہ کہتے ہوئے کہ اْنھوں نے بہت زیادہ نرمی دکھائی۔ اْنھوں نے حوثیوں کی عدم موجودگی کے بارے میں عذر کو بلاجواز قرار دیا۔ یمنی نے کہا کہ ''یہ تباہ کْن گروہ جو خصوصی ایلچی سے بین الاقوامی قانون یا اپنے عہد کی پابندی کی پرواہ نہیں کرتا، وہ امن کی راہ پر اور بین الاقوامی قراردادوں پر عمل درآمد میں سنجیدہ نہیں لگتا۔سعودی حمایت والی یمن کی حکومت اور ایران کی پشت پناہی والے حوثی باغیوں کے درمیان تین سال سے جاری خانہ جنگی میں 16000 سے زائد شہری ہلاک و زخمی ہوئے ہیں۔ آنے والی تباہ کاری کے نتیجے میں اقوام متحدہ نے یمن کے تنازع کو دنیا کا بدترین انسانی بحران قرار دیا ہے۔ گرفتھس نے کہا ہے کہ وہ نہیں جانتے کہ بات چیت کا اگلا دور کب ہوگا۔

ایک نظر اس پر بھی

نوازشریف کو کچھ ہوا تو عمران ذمہ دار ہوں گے :شہباز

پنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف حمزہ شہباز نے کہا ہے کہ حکومت نواز شریف کی صحت سے متعلق بے حسی کا مظاہرہ کر رہی ہے اوراہل خانہ کو انکی صحت سے متعلق کچھ آگاہ نہیں کیا جا رہا، نواز شریف کو کچھ ہوا تو ذمہ دار وزیراعظم ہوں گے،نیازی صاحب نے وعدہ کیا تھا کہ ہم نئے صوبہ بنائیں گے، ...

وینزویلا:حکومت کے حامی اور مخالفین سڑکوں پر

وینزویلا کے دارالحکومت کارکاس میں حکومت کے حامی اور مخالفین سڑکوں پر نکل آئے۔ایک طرف صدر مادورو کی اپیل پر ہاتھوں میں وینزویلا کے پرچم لئے مظاہرین سڑکوں پر تھے تو دوسری طرف حزب اختلاف کے لیڈر ہوان گوآئیڈو کے حامی۔مادورو کے حامی شاویز کے انقلابِ بولیوار کی 20 ویں سالانہ یاد کے ...

2014 کے لوک سبھا انتخابات میں تمام ای وی ایم ہیک کئے گئے تھے: امریکن سائبر ایکسپرٹ کا دعویٰ؛ کیا ای وی ایم نے بی جے پی کو اقتدار دلایا ؟

 امریکہ میں مقیم ایک سائبر ماہر سید شجاع نے دعویٰ کیا ہے کہ   ہندستان میں    سال 2014میں ہوئےعام انتخابات میں استعمال کی گئی  الیکٹرونک ووٹنگ مشین (ای وی ایم) کو  ہیک کیا گیا تھا۔ 543 سیٹوں والے اس الیکشن میں بی جے پی کو282 سیٹوں پر شاندار کامیابی حاصل ہوئی تھی اور سن 1984 کے بعد پہلی ...

بنگلہ دیش انتخابات میں شیخ حسینہ کامیاب، اپوزیشن نے نتائج ماننے سے کیا انکار

خبر رساں اداروں کے مطابق بنگلہ دیشی وزیر اعظم شیخ حسینہ واجد کی حکمران جماعت عوامی لیگ نے اتوار 30 دسمبر کو ہونے والے عام انتخابات میں اپوزیشن کے مقابلے میں بڑی برتری حاصل کر لی ہے اور حتمی نتائج میں عوامی لیگ کو کل 350 نشستوں میں سے 281 نشستوں پر کامیابی حاصل ہوئی ہے۔

ایرانی حکومت ٹوئٹراستعمال کر رہی ہے مگر عوام کے لیے ممنوع ہے : امریکی سفیر

جرمنی میں امریکی سفیر رچرڈ گرینل کا کہنا ہے کہ ایرانی حکومت خود ٹویٹر کا استعمال کر رہی ہے مگر عوام کے لیے اس کا استعمال روکا ہوا ہے۔ انہوں نے یہ بات ایرانی پارلیمنٹ کے اسپیکر علی لاریجانی سے منسوب ٹویٹر اکاؤنٹ کھولے جانے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہی۔اگرچہ ایرانی میڈیا نے مذکورہ ...