یمن تنازع پر اقوام متحدہ کی ثالثی میں مذاکرات بغیر پیش رفت کے ختم

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th September 2018, 1:45 PM | عالمی خبریں |

واشنگٹن،10؍ ستمبر (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) جنیوا میں اقوام متحدہ کی ثالثی میں منعقد ہونے والے سہ روزہ مذاکرات جن کا مقصد یمن کی خانہ جنگی کے خاتمے کے لیے اہم بات چیت کا دوبارہ اجرا تھا، بے نتیجہ رہے، چونکہ مذاکرات کا ایک اہم فریق اجلاس میں شریک نہیں ہوا۔اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی برائے یمن، مارٹن گرفتھس نے ناکام بات چیت کے بارے میں مایوسی کا اظہار نہیں کیا، یہ کہتے ہوئے کہ سودمند مباحثے کا آغاز ہوگیا ہے۔ حالانکہ بات چیت میں اْن کے علاوہ یمنی حکومت کا وفد موجود تھا۔اْنھوں نے اس بات پر مایوسی کا اظہار کیا کہ باغی حوثیوں کا وفد، جسے سرکاری طور پر 'انصار اللہ' کے نام سے جانا جاتا ہے، شامل نہیں ہوا۔ لیکن، کہا کہ تنازعے میں ملوث فریق کے لیے یہ بات غیرمعمولی نہیں، جب کہ ایسے مذاکرات میں اس قسم کی مشکلات درپیش آتی ہیں۔بقول اْن کے، ''لیکن، ہاں کمرے میں موجود بڑا ہاتھی، 'انصارالل'ہ کے وفد کو لانے میں ناکام رہا، جو وفد صنعا سے یہاں آنا تھا۔ اور اِن دِنوں کے دوران ہم بات چیت، مذاکرات اور تیاریوں میں مصروف رہے آیا 'آپشنز' اور 'متبادل راہیں' کون سی ہوسکتی ہیں۔۔۔، اس لیے، میں اس عمل میں بنیادی طور پر کسی رکاوٹ کو حائل نہیں دیکھتا۔گرفتھس نے جینوا مذاکرات میں شرکت کے لیے حوثیوں کی جانب سے پیش کردہ مطالبوں کا ذکر نہیں کیا۔ تاہم، حوثیوں کے ایک چوٹی کے اہلکار نے کہا ہے کہ اْن کے گروپ نے شرکت کے لیے کچھ شرائط رکھی تھیں، جن میں یہ یقین دہانی کرانا بھی شامل تھا کہ انہیں یمن واپسی کی ضمانت دی جائے گی، اور علاج کے لیے لڑائی میں اپنے زخمیوں کے انخلا کی اجازت ہو گی۔یمن کے امور خارجہ کے وزیر، خالد الیمنی نے خصوصی ایلچی کے الفاظ پر نکتہ چینی کی ہے، یہ کہتے ہوئے کہ اْنھوں نے بہت زیادہ نرمی دکھائی۔ اْنھوں نے حوثیوں کی عدم موجودگی کے بارے میں عذر کو بلاجواز قرار دیا۔ یمنی نے کہا کہ ''یہ تباہ کْن گروہ جو خصوصی ایلچی سے بین الاقوامی قانون یا اپنے عہد کی پابندی کی پرواہ نہیں کرتا، وہ امن کی راہ پر اور بین الاقوامی قراردادوں پر عمل درآمد میں سنجیدہ نہیں لگتا۔سعودی حمایت والی یمن کی حکومت اور ایران کی پشت پناہی والے حوثی باغیوں کے درمیان تین سال سے جاری خانہ جنگی میں 16000 سے زائد شہری ہلاک و زخمی ہوئے ہیں۔ آنے والی تباہ کاری کے نتیجے میں اقوام متحدہ نے یمن کے تنازع کو دنیا کا بدترین انسانی بحران قرار دیا ہے۔ گرفتھس نے کہا ہے کہ وہ نہیں جانتے کہ بات چیت کا اگلا دور کب ہوگا۔

ایک نظر اس پر بھی

سی آئی اے کا دعویٰ ، سعودی عرب کے شہزادے نے دیا تھا جمال خشوگی کے قتل کاحکم

امریکی اخبار وشنگتن پوسٹ کے صحافی جمال خشوگی کی موت کو لیکر امریکی کی خفیہ ایجنسی نے بڑا دعوی کیا ہے۔ امریکہ کی سینٹرل انٹیلیجنس ایجنسی ( سی آئی اے ) نے کہا ہے کہ نے صحافی جمال خشوگی کے قتل کے احکام دئے تھے۔

بھارت۔ تائیوان ایس ایم ای ترقیاتی فورم تائیپی میں شروع 

vایم ایس ایم ای کے سکریٹری ڈاکٹر ارون کمار پانڈا 13 سے 17 نومبر 2018 تک چلنے والے بھارت 150 تائیوان ایس ایم ای ترقیاتی فورم کے اجلاس میں بھارتی وفد کی قیادت کررہے ہیں۔ فورم میں کل اپنے افتتاحی کلمات میں ڈاکٹر پانڈا نے کہا کہ بھارت میں ایم ایس ایم ای کی پوزیشن کلیدی اہمیت کی حامل ہے

شمالی کوریا کا میزائل پروگرام جاری ہے، رپورٹ

ایک امریکی ریسرچ آرگنائزیشن نے کہا ہے کہ اس نے شمالی کوریا کے میزائلوں سے متعلق ایسے 13 مقامات کا پتا لگایا ہے جن کا اعلان نہیں کیا گیا ہے۔ یہ اس بات کی تازہ ترین علامت ہے کہ شمالی کوریا کو اس کے جوہری ہتھیاروں سے دستبردار کرانے کی امریکی کوشش تعطل کا شکار ہو گئی ہے۔

غیر ملکی طلبہ کی امریکہ میں دلچسپی کیوں گھٹ رہی ہے؟

غیر ملکی طالب علموں کی آمد سے امریکی معیشت کو ہر سال42 ارب ڈالر کا فائدہ ہوتا ہے اور روزگار کی منڈی میں ساڑھے چار لاکھ ملازمتیں پیدا ہوتی ہیں۔ غیر ملکی طالب علم امریکی معیشت کے لئے بے بڑی اہمیت رکھتے ہیں۔

ہندوستان ڈیجیٹل فروغ اورترقی کے دورسے گذررہاہے ، سنگاپورمیں جاری فنٹیک فیسٹول میں وزیراعظم کاخطاب

وزیراعظم نے سنگاپورمیں جاری فنٹیک فیسٹول میں خطاب کرتے ہوئے کہاہے کہ یہ ہندوستان پر چھاجانے والے مالیاتی انقلاب اور ہندوستان کے 1.3 ارب عوام کی زندگی میں بہتر تبدیلیوں کا اعتراف ہے۔ہندوستان اور سنگاپور ہندوستانی اور آسیان ملکوں کے چھوٹے اور اوسط درجے کے کاروباری اداروں کوایک ...