اسرائیل۔ برطانیہ ایرانی خطرے سے مل کر نمٹنے پر متفق

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th October 2017, 11:24 PM | عالمی خبریں |

لندن،10؍اکتوبر(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)برطانوی وزیراعظم تھریسا مے نے اپنے اسرائیلی ہم منصب بنجمن نیتن یاھو کو ٹیلیفون کیا ہے۔ ٹیلیفون پر ہونے والی بات چیت میں دونوں رہ نماؤں نے ایران کے بڑھتے خطرات کی روک تھام کے لیے مل کر کوشیں کرنے پر اتفاق کیا ہے۔برطانوی وزیراعظم کی ترجمان نے سوموار کو ایک بیان میں بتایا کہ وزیراعظم تھریسا مے نے اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاھو سے ٹیلیفون پر بات چیت کی ہے۔ دونوں رہ نماؤں کیدرمیان ہونے والی گفتگو میں ایران کی طرف سے خلیجی ممالک اور مشرق وسطیٰ کو درپیش خطرات پر بات چیت کی گئی۔ترجمان کا کہنا ہے کہ برطانوی اور اسرائیلی وزراء نے اس بات سے اتفاق کیا کہ عالمی برادری کو ایران کی طرف سے بڑھتے خطرات کا اداراک کرنا چاہیے کیونکہ ایران خلیجی خطے اور مشرق وسطیٰ میں اپنے توسیع پسندانہ عزائم کو آگے بڑھا رہا ہے۔ دونوں رہ نما نے ایران کے بڑھتے خطرات اور اس کی خطے کو عدم استحکام سے دوچار کرنے کی سازشوں کا مل کر مقابلہ کرنے پر اتفاق کیا۔
 

ایک نظر اس پر بھی

واشنگٹن میں روسی خاتون ایجنٹ گرفتار

امریکی وزارت انصاف کے مطابق واشنگٹن میں رہنے والی ایک 29 سالہ روسی خاتون کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ خاتون پر روسی حکومت کے لیے بطور ایجنٹ کام کرنے کا الزام ہے۔ وہ امریکی شہریوں کے ساتھ تعلقات قائم کرنے اور سیاسی جماعتوں کے اندر رسائی حاصل کرنے کے لیے کوشاں تھی۔

امریکا ایران میں مظاہرین کی حمایت کرتا ہے : ٹرمپ

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ امریکا کے ایرانی جوہری معاہدے سے علاحدگی کے بعد سے ایران میں احتجاج اور ہنگامہ آرائی دیکھنے میں آ رہی ہے۔ انہوں نے زور دیا کہ امریکا مظاہرین کی حمایت کرتا ہے۔

شام کے حوالے سے پوتین اور ٹرمپ کی بات چیت مشکل ثابت ہو گی : روس

روسی میڈیا ایجنسی نے پیر کے روز کرملن ہاؤس کے ترجمان دِمتری بیسکوف کے حوالے سے بتایا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور روسی صدر ولادی میر پوتین کے درمیان شام کے حوالے سے بات چیت مشکل ہو گی، اس کی وجہ روس کے حلیف اور شام کے تنازع میں ایک با اثر فریق ایران کے بارے میں امریکا کا موقف ...

شام : حلب پر اسرائیلی بم باری میں بشار کی فورسز کے 9 ارکان ہلاک

شام میں انسانی حقوق کے نگراں گروپ المرصد نے پیر کے روز بتایا ہے کہ شمالی صوبے حلب میں ایک عسکری ٹھکانے پر بم باری کے نتیجے میں بشار حکومت کے ہمنوا 9 مسلح افراد ہلاک ہو گئے۔ شامی حکومت نے اتوار کی شب ہونے والی اس کارروائی کا الزام اسرائیل پر عائد کیا ہے۔