روسی مندوب نے امریکہ اور روس کے درمیان جنگ کو ممکنہ بتادیا 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 14th April 2018, 12:54 PM | عالمی خبریں |

نیویارک13اپریل (ایس او نیوز؍ آئی این ایس انڈیا) اقوام متحدہ میں روسی سفیر وسیلی نیبنزیا کا کہنا ہے کہ "اولین ترجیح جنگ کے خطرے کو ٹالنا ہے"۔ انہوں نے یہ بات جمعرات کے روز شام کے حوالے سے سلامتی کونسل کے بند کمرہ اجلاس کے بعد کہی۔امریکا اور روس کے درمیان جنگ چھڑنے کے امکان سے متعلق روسی مندوب کا کہنا تھا کہ "ہم کسی بھی چیز کو خارج از امکان قرار نہیں دے سکتے۔ادھر امریکی اور برطانوی میڈیا کے مطابق پینٹاگون نے شامی حکومت کے سربراہ بشار الاسد کو نشانہ بنانے کے لیے ایک بڑے حملے کے تیاری کے سلسلے میں سب سے بڑے بحری اور فضائی بیڑے کی تعیناتی کا فیصلہ کیا ہے۔برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق امریکی بحری جنگی جہاز "یو ایس ایس ڈونلڈ کْک" تقریبا 60 "ٹوم ہاک" میزائلوں کے ساتھ بحیرہ روم میں مستعد حالت میں ہے۔ اس کے علاوہ تین دیگر بحری جہاز بھی ہیں۔ مزید برآن ضخیم طیارہ بردار بحری جہاز "یو ایس ایس ہیری ایس ٹرومین" بدھ کے روز امریکی ریاست ورجینیا سے خطّے کی جانب روانہ ہو گیا۔ جہاز پر تقریبا 90 لڑاکا طیارے ، پانچ جنگی جہاز اور ٹوم ہاک میزائل موجود ہیں۔روسی مندوب کا مزید کہنا تھا کہ "مغرب کی عسکری مداخلت انتہائی خطرناک ہو گی کیوں کہ وہاں ہمارے فوجی موجود ہیں۔ یہ خطرات اقوام متحدہ کے منشور کی خلاف ورزی ہے۔اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل آنتونیو گوتیریس نے بدھ کے روز سلامتی کونسل کے پانچ مستقل ارکان سے اپیل کی تھی کہ شام کی صورت حال کو کنٹرول سے باہر جانے سے روکا جائے۔ انہوں نے حالیہ پیچیدہ تعطل کے حوالے سے اپنی گہری تشویش کا اظہار کیا۔ادھر ماسکو میں کرملن ہاؤس نے باور کرایا ہے کہ شام میں روس اور امریکی فوجوں کی کارروائیوں کے حوالے سے دونوں ملکوں کے عسکری اہل کاروں کے درمیان ایک خصوصی ٹیلیفون لائن کے ذریعے رابطے کا چینل اس وقت "سرگرم" ہے تا کہ حادثات سے بچا جا سکے۔
 

ایک نظر اس پر بھی

نیویارک کے مرکزی علاقے میں زیر زمین بھاپ پائپ لائن پھٹنے سے دھماکے

نیویارک شہر کے فائر ڈپارٹمنٹ نے کہا ہے کہ مین ہیٹن کی گلیوں میں زیر زمین گزرنے والا ایک ہائی پریشر بھاپ کا پائپ پھٹ گیا جس کے نتیجے میں ففتھ ایونیو کے مرکز میں واقع ایک سوراخ سے بھاپ نکل کر ہوا میں پھیلنا شروع ہو گئی۔

ترک بچوں اور خواتین کا جنسی استحصال کرنے والا خود ساختہ مذہبی رہنما گرفتار

استنبول کی ایک عدالت نے بزعم خود ایک اسلامی فرقے کے رہنما اور ٹی وی پر تبلیغ کرنے والی شخصیت عدنان اوکتار کو 115 دیگر پیروکاروں سمیت مختلف الزامات کی مزید تفتیش کے لئے پولیس کے حوالے کر دیا ہے۔ عدنان اوکتار پر جرائم پیشہ گینگ قائم کرنے، دھوکادہی اور جنسی استحصال کے الزامات ہیں۔

مقتدیٰ الصدر نے مظاہرین کی حمایت کردی ،نئی حکومت کی تشکیل مُوَخَّر کرنے کا مطالبہ

عراق کے سرکردہ شیعہ لیڈر مقتدیٰ الصدر نے ملک کے جنوبی صوبوں میں احتجاج کرنے والے مظاہرین کی حمایت کردی ہے او ر تمام متعلقہ سیاست دانوں پر زور دیا ہے کہ وہ مظاہرین کے بہتری شہری خدما ت کی فراہمی کے مطالبات پورے ہونے تک نئی حکومت کی تشکیل کے لیے مذاکرات کا سلسلہ معطل کردیں ۔