شام: کیمیائی حملہ، تفتیش کے لیے نگراں عالمی ادارے کا وفد شام جائے گا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th April 2018, 5:06 PM | عالمی خبریں |

واشنگٹن11اپریل (ایس او نیوز؍ آئی این ایس انڈیا)کیمیائی ہتھیاروں پر نگاہ رکھنے پر مامور ایک عالمی ادارے نے منگل کے روز کہا ہے کہ وہ شام کے قصبے، دوما کی جانب ایک وفد روانہ کر رہا ہے، جو گذشتہ اختتام ہفتہ دمشق کے قریب ہونے والے زہریلی گیس کے مبینہ حملے کی تفتیش کرے گا۔کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال پر ممانعت سے متعلق تنظیم نے بتایا ہے کہ اس طرح کی التجا موصول ہونے پر وفد دوما جا سکتا ہے۔تنظیم کے بقول، ’’یہ اقدام شامی جمہوریہ? عرب اور روسی فیڈریشن کی جانب سے کی جانے والی درخواست پر کیا گیا ہے جنھوں نے کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کے بارے میں تفتیش کے لیے کہا ہے۔ یہ ٹیم فوری طور پر شام میں تعینات ہوگی، جس کی تیاری کی جا رہی ہے‘‘۔وائٹ ہاؤس نے منگل کے روز اِس بات کا اعلان کیا ہے کہ صدر ڈونالڈ ٹرمپ لاطینی امریکہ کا مجوزہ دورہ منسوخ کر رہے ہیں، تاکہ وہ ’’شام کے خلاف جوابی کارروائی کی نگرانی کر سکیں‘‘۔ٹرمپ نے کہا ہے کہ اس بات کا امکان ہے کہ اْن کی انتظامیہ ’’حقائق کو پیش نظر رکھ کر‘‘ مبینہ کیمیائی حملے کا جواب دے۔پیر کی شام گئے اعلیٰ فوجی قیادت سے ملاقات سے قبل، ٹرمپ نے بتایا کہ ’’اس کا جواب دیا جائے گا، اور یہ جواب مؤثر ہوگا‘‘۔

ایک نظر اس پر بھی

نیویارک کے مرکزی علاقے میں زیر زمین بھاپ پائپ لائن پھٹنے سے دھماکے

نیویارک شہر کے فائر ڈپارٹمنٹ نے کہا ہے کہ مین ہیٹن کی گلیوں میں زیر زمین گزرنے والا ایک ہائی پریشر بھاپ کا پائپ پھٹ گیا جس کے نتیجے میں ففتھ ایونیو کے مرکز میں واقع ایک سوراخ سے بھاپ نکل کر ہوا میں پھیلنا شروع ہو گئی۔

ترک بچوں اور خواتین کا جنسی استحصال کرنے والا خود ساختہ مذہبی رہنما گرفتار

استنبول کی ایک عدالت نے بزعم خود ایک اسلامی فرقے کے رہنما اور ٹی وی پر تبلیغ کرنے والی شخصیت عدنان اوکتار کو 115 دیگر پیروکاروں سمیت مختلف الزامات کی مزید تفتیش کے لئے پولیس کے حوالے کر دیا ہے۔ عدنان اوکتار پر جرائم پیشہ گینگ قائم کرنے، دھوکادہی اور جنسی استحصال کے الزامات ہیں۔

مقتدیٰ الصدر نے مظاہرین کی حمایت کردی ،نئی حکومت کی تشکیل مُوَخَّر کرنے کا مطالبہ

عراق کے سرکردہ شیعہ لیڈر مقتدیٰ الصدر نے ملک کے جنوبی صوبوں میں احتجاج کرنے والے مظاہرین کی حمایت کردی ہے او ر تمام متعلقہ سیاست دانوں پر زور دیا ہے کہ وہ مظاہرین کے بہتری شہری خدما ت کی فراہمی کے مطالبات پورے ہونے تک نئی حکومت کی تشکیل کے لیے مذاکرات کا سلسلہ معطل کردیں ۔