ایران: باسیج ملیشیا ساتھیوں کی رہائی کا مطالبہ کرنے والے طلباء پر حملہ آور

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 13th March 2018, 12:09 PM | عالمی خبریں |

تہران 12مارچ (ایس او نیوز؍ آئی این ایس انڈیا )ایران میں پاسداران انقلاب کے ماتحت باسیج ملیشیا نے تہران میں اپنے گرفتار ساتھیوں کی رہائی کا مطالبہ کرنے والے نہتے طلباء پر حملہ کردیا جس کے نتیجے میں متعدد طلباء زخمی ہوگئے۔ذرائع کے مطابق تہران میں قائم امیر کبیر انڈسٹریل یونیورسٹی کے باہر سیکڑوں طلباء و طالبات نے حراست میں لیے گئے اپنے ساتھی طلباء کی رہائی کے لیے مظاہرہ کیا۔ مظاہرین نے ہاتھوں میں بینرز اور کتبے اٹھا رکھے تھے جن پر گرفتار طلباء کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا گیا تھا۔اس موقع پر باسیج ملیشیا کے دسیوں مسلح اہلکاروں نے طلباء پر دھاوا بول دیا۔ باسیج اہلکاروں نے نہتے طلباء کو تشدد کا نشانہ بنایا اور انہیں طاقت کے ذریعے منتشر کردیا گیا۔خبر رساں اداروں کے مطابق طلباء ایران کی انقلاب عدالتوں کی طرف سے طلباء کو دی جانے والی قید کی سزاؤں کے خلاف سراپا احتجاج تھے۔ انہوں نے ایک انقلاب عدالت کی طرف سے ایک طالب علم کو نو سال قید کی سزا کے خلاف بھی شدید نعرے بازی کی اور ان کی سزا کو ظالمانہ قرار دیا۔خبر رساں ادارے ’فارس‘ کے مطابق باسیج ملیشیا سے تعلق رکھنے والے بعض طلباء نے بھی اصلاح پسند جماعتوں مقرب طلباء پر تشدد کیا۔ احتجاجی طلباء نے ایرانی رجیم اور جوڈیشل کونسل کے چیئرمین کے خلاف بھی شدید نعرے بازی کی۔خیال رہے کہ ایران میں چند ہفتے قبل اٹھنے والی احتجاجی تحریک کے دوران پولیس نے سیکڑوں طلباء کو حراست میں لے لیا تھا۔ جامعہ تہران سمیت مختلف جامعات کے 50 طلباء کا ایرانی عدالتوں میں ٹرائل جاری ہے جب کہ دسیوں طلباء کو عدالتوں میں پیش نہیں کیا گیا۔

ایک نظر اس پر بھی