حکومت کی تشکیل کے لیے مزید وقت درکار ہے:سعد حریری

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 16th August 2018, 11:15 AM | عالمی خبریں |

بیروت ،16اگست (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)لبنان میں نامزد وزیراعظم سعد حریری کا کہنا ہے کہ لبنانی سیاسی جماعتوں کو اتحادی حکومت تشکیل دینے کے لیے کچھ مزید وقت درکار ہو سکتا ہے۔

واضح رہے کہ لبنان میں عام انتخابات کے انعقاد کو 3 ماہ سے زیادہ کا وقت گزر چکا ہے۔

منگل کے روز بیروت میں اپنی جماعت "المستقبل" گروپ کے پارلیمانی ارکان کے ساتھ اجلاس سے قبل صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے حریری کا کہنا تھا کہ "شاید حتمی فارمولے تک پہنچنے کے لیے ہمیں اب بھی تھوڑا وقت درکار ہو"۔

لبنانی سیاست دان بارہا یہ کہہ چکے ہیں کہ ان کے ملک کو جلد از جلد حکومت تشکیل دینے کی ضرورت ہے تاہم وہ ابھی تک وزارتی منصبوں پر مقابلے بازی میں مصروف ہیں۔

یاد رہے کہ 6 مئی کو ہونے والے انتخابات میں حزب اللہ اور اس کے حلیفوں کو پارلیمنٹ میں اکثریت حاصل ہو گئی۔

دوسری جانب سنی، شیعہ، مسیحی اور دُروز حلقے وزارتی قلم دانوں کی دوڑ میں لگے ہوئے ہیں۔

حکومت کی تشکیل میں تاخیر کے نتیجے میں مقابلے کے فریقوں کے درمیان الزامات کا تبادلہ شروع ہو گیا ہے۔

سعد حریری کے مطابق "ہم ایک ایسی ریاست ہیں جو اقتصادی مسائل اور علاقائی بحرانات میں گھری ہوئی ہے۔ ہمیں چاہیے کہ جتنی جلدی ممکن ہو حکومت تشکیل دے لیں۔ یہ ایک جامع قومی وفاقی حکومت ہونا چاہیے جس میں سب شریک ہوں"۔

آئی ایم ایف پہلے ہی یہ باور کرا چکا ہے کہ لبنان کو مالیاتی پالیسی میں ہنگامی اور مرکزی نوعیت کی ترامیم کی ضرورت ہے تا کہ وہ اپنے حکومتی قرضوں کی ادائیگی کر سکے۔

لبنان میں حکومتی قرضوں کا حجم مقامی مجموعی پیداوار کے 150% کے قریب ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

فتح تحریک کا حماس پر اسرائیل کے ساتھ سازباز کا الزام

فلسطینی تحریک ’فتح‘ نے ’حماس‘کی قیادت پر الزام لگایا ہے کہ اس نے اسرائیل کے ساتھ سازباز کی ہے اور وہ پناہ گزینوں کی واپسی کے حق سے دست بردار ہو گئی ہے۔ جمعے کی شام جاری ایک بیان میں فتح تحرتیک کا کہنا ہے کہ حماس تنظیم ٹرمپ انتظامیہ اور نیتین یاہو کی حکومت کو پیغامات بھیج رہی ...

اسلام مخالف اے ایف ڈی دوسری سب سے بڑی جماعت، جائزہ رپورٹ

ایک تازہ عوامی جائزے کے مطابق اسلام اور مہاجرین مخالف دائیں بازوں کی سیاسی جماعت آلٹرنیٹیو فار ڈوئچ لینڈ یا اے ایف ڈی، جرمنی کی دوسری سب سے بڑی جماعت بن گئی ہے۔ اس جائزے کے مطابق حکومتی اتحاد اپنی حمایت کھو رہا ہے۔ جرمن براڈ کاسٹر ARD کی طرف سے کرائے جانے والے عوامی جائزے کے ...

رافیل معاملے میں فرانس کے سابق صدر نے کیا مودی کے جھوٹ کا پردہ فاش ’’حکومت ہند نے دیا تھا ریلائنس کا نام‘‘

رافیل جنگی طیارہ سودے کے تعلق سے حکومت اور اہم اپوزیشن پارٹی کانگریس میں جاری جنگ کے بیچ فرانس کے سابق صدر فرانسوااولاند نے نیاانکشاف کرتے ہوئے کہاہے کہ ہندوستان کی طرف سے ہی سودے کے لئے انل امبانی کی کمپنی ریلائنس ڈیفنس انڈسٹریز کے نام کی تجویز پیش کی گئی تھی ۔