حکومت کی تشکیل کے لیے مزید وقت درکار ہے:سعد حریری

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 16th August 2018, 11:15 AM | عالمی خبریں |

بیروت ،16اگست (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)لبنان میں نامزد وزیراعظم سعد حریری کا کہنا ہے کہ لبنانی سیاسی جماعتوں کو اتحادی حکومت تشکیل دینے کے لیے کچھ مزید وقت درکار ہو سکتا ہے۔

واضح رہے کہ لبنان میں عام انتخابات کے انعقاد کو 3 ماہ سے زیادہ کا وقت گزر چکا ہے۔

منگل کے روز بیروت میں اپنی جماعت "المستقبل" گروپ کے پارلیمانی ارکان کے ساتھ اجلاس سے قبل صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے حریری کا کہنا تھا کہ "شاید حتمی فارمولے تک پہنچنے کے لیے ہمیں اب بھی تھوڑا وقت درکار ہو"۔

لبنانی سیاست دان بارہا یہ کہہ چکے ہیں کہ ان کے ملک کو جلد از جلد حکومت تشکیل دینے کی ضرورت ہے تاہم وہ ابھی تک وزارتی منصبوں پر مقابلے بازی میں مصروف ہیں۔

یاد رہے کہ 6 مئی کو ہونے والے انتخابات میں حزب اللہ اور اس کے حلیفوں کو پارلیمنٹ میں اکثریت حاصل ہو گئی۔

دوسری جانب سنی، شیعہ، مسیحی اور دُروز حلقے وزارتی قلم دانوں کی دوڑ میں لگے ہوئے ہیں۔

حکومت کی تشکیل میں تاخیر کے نتیجے میں مقابلے کے فریقوں کے درمیان الزامات کا تبادلہ شروع ہو گیا ہے۔

سعد حریری کے مطابق "ہم ایک ایسی ریاست ہیں جو اقتصادی مسائل اور علاقائی بحرانات میں گھری ہوئی ہے۔ ہمیں چاہیے کہ جتنی جلدی ممکن ہو حکومت تشکیل دے لیں۔ یہ ایک جامع قومی وفاقی حکومت ہونا چاہیے جس میں سب شریک ہوں"۔

آئی ایم ایف پہلے ہی یہ باور کرا چکا ہے کہ لبنان کو مالیاتی پالیسی میں ہنگامی اور مرکزی نوعیت کی ترامیم کی ضرورت ہے تا کہ وہ اپنے حکومتی قرضوں کی ادائیگی کر سکے۔

لبنان میں حکومتی قرضوں کا حجم مقامی مجموعی پیداوار کے 150% کے قریب ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

ہند۔چین ثالثی کیلئے ٹرمپ کی حیرت انگیز پیشکش

امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے ہندوستان اور چین کے مابین جاری سرحدی تنازعہ میں ثالثی کی پیش کش کرتے ہوئے گذشتہ سال پاکستان کے ساتھ تنازعہ کی یاد تازہ کردی- انہوں نے اس وقت بھی یہی پیش کش کی تھی اور کہا تھا کہ اگر ہندوستان اور پاکستان چاہیں تو وہ مسئلہ کشمیر پر ثالثی کر سکتے ہیں -

نیوزی لینڈ: زلزلہ نے وزیراعظم جیسنڈا آرڈرن کو بنایا عوامی توجہ کا مرکز

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق انتہائی پرسکون انداز میں ٹی وی میزبان Ryan Bridge کے پروگرام Newshub AM Show کرونا سے نمٹنے سے متعلق مباحثے کے دوران زلزلے کے جھٹکے شروع ہوئے اور کیمرے میں دکھائی دینے والی چیزیں حرکت کرنے لگیں۔