کانکنی کے معاملہ میں دفتر وزیر اعلیٰ سے ہی دھاندلی: کمار سوامی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 14th January 2018, 12:46 PM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بنگلورو،13؍ جنوری(ایس اونیوز؍عبدالحلیم منصور) سابق وزیراعلیٰ اور ریاستی جنتادل (ایس) صدر نے الزام لگایا ہے کہ دفتر وزیراعلیٰ سے ہی غیر قانونی کانکنی کے دھندہ کو بڑھاوا مل رہا ہے 2014-15کے دوران 2062کروڑ روپیوں کی ہیرا پھیری کرکے غیر قانونی کانکنی کی گئی ہے۔ آج ایک اخباری کانفرنس سے مخاطب ہوکر کمار سوامی نے کہاکہ وزیر برائے سائنس واراضیات کا قلمدان برائے نام ہے۔ وہ صرف لنگایت طبقے کی سیاست میں الجھے ہوئے ہیں جبکہ بلاری ضلع کے سنڈور تعلقہ کے قریب سبینا ہلی علاقہ میں میسور منرل کمپنی کو کانکنی کے اختیارات کا کنٹراکٹ دیا گیا ہے۔اس کمپنی نے مچنڈی انٹرپرائزز کے ساتھ غیر قانونی معاہدہ کرکے تین سرکاری کمپنیوں کو کانکنی کے ٹھکوں سے محروم کردیا ہے۔اس علاقہ میں 30لاکھ میٹرک ٹن لوہے کے پیداوار کی گنجائش ہے۔ جولائی 2015کے دوران یہاں 1.05لاکھ میٹرک ٹن لوہے کی نکاسی کی گئی ، لیکن اس میں سے 52920 ٹن لوٹے کا کوئی حساب کتاب نہیں ملا ۔ ٹنڈر معاہدہ ہونے سے پہلے ہی مچنڈی کمپنی نے کانکنی شروع کردی۔ ایک ماہ قبل سرکاری محکمۂ کانکنی نے اس دھاندلی کو بے نقاب کیا۔ اعلیٰ افسران کی طرف سے اس معاملہ کی جانچ کیلئے اگر کوئی پہل کی جاتی ہے تو ان کا تبادلہ کردیا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جس وقت یڈیورپا سے تب رشوت کی رقم چیک سے لی جاتی، اب سدرامیا نے اور بھی نئے نئے طریقے ڈھونڈ نکال لئے ہیں۔ یہ دعویٰ کرتے ہوئے کہاکہ انہوں نے کبھی کسی بھی پراجکٹ کی منظوری کیلئے رشوت کا تقاضہ نہیں کیا ہے،کمار سوامی نے کہاکہ ان پر اگر کوئی الزام ہے تو عدالت میں ثابت کرکے دکھایا جائے۔ 
 

ایک نظر اس پر بھی

گلبرگہ میں پچاس لاکھ روپئے لاگت کے شادی محل کی جگہ پرتعمیر ہوا صرف ایک ڈھانچہ ؛آر ٹی آئی کارکن نے اُٹھایا معاملہ

  کرناٹکا انفارمیشن کمیشن بنگلور کی ہدایت پر معروف آر ٹی آئی کارکن اور  اے پی سی آر کے ریاستی کوآرڈی نیٹر شیخ شفیع احمد نے تعلقہ آفسر اسماعیل صاب کے ساتھ  جب ایک شادی محل کا جائزہ لینے پہنچے تو اُنہیں حیرت کا ایک جھٹکا لگا کیونکہ وہاں کوئی محل موجود نہیں تھا بلکہ  ایک ...

بیلگام کے ایک اسکول میں مڈ ڈے میل کھانے سے 60 بچے بیمار؛ اسپتال میں والدین نے کیا ٹیچروں کا گھیرائو

ضلع بیلگام کے رام دُرگ تعلقہ کے  لکنائکن کوپّا کے ایک پرائمری اسکول میں دوپہر کا کھانا کھانے کے بعد اسکول کے 60 بچے بیمار پڑ گئے جنہیں فوری طور پر قریبی اسپتال لے جایا گیا ہے۔  واردات بدھ کی دوپہر کو پیش آئی ہے۔ 

اُڈپی میں مویشیوں کے بیوپاری حُسین ابّا کے قتل کے معاملے میں گرفتار تین ملزموں کو ملی ضمانت؛ آٹھ کی ضمانت نامنظور

مویشیوں کے بیوپاری حُسین ابا کے قتل کے معاملے میں گرفتار دو لوگوں  پولس ہیڈ کونسٹیبل  موہن کوتوال اور بجرنگ دل لیڈر پرساد کونڈاڈی کی ضمانت عرضی کو    اُڈپی سیشن کورٹ نے  منظور کرلیا ہے اسی طرح ایک اورفرار شدہ بجرنگ دل کارکن  توکارام  کی  پیشگی ضمانت بھی منطور کرلی ہے۔

گوری لنکیش کی طرح دیگر ادیبوں کے قتل کی سازش کا انکشاف 4روشن خیال مفکروں کو سکیورٹی فراہمی زیر غور

ریاستی حکومت روشن خیال مفکرین کو سیکورٹی فراہم کرنے پر سنجیدگی سے غور کر رہی ہے۔ ہندو مخالف نظریات کے حامل دانشوروں کی ہٹ لسٹ تیا ر کرتے ہوئے موت کی نیند سلائے جانے کی سازش کا انکشاف ہونے کے بعد روشن خیال مفکرین میں شامل گنان پیٹھ ایوارڈ یافتہ گریش کرناڈ، معروف قلمکاراور ...

پی یو سی سالِ دوم سائنس طلباء کے لیے مفت کوچنگ

ڈسٹرکٹ کوآرڈینیٹر اے سی سی پی ایل آرگنائزیشن بیدر کے پریس نوٹ کے بموجب بیدر ضلع کے مسلم طلباء جو پی یو سی سالِ دوم سائنس طلباء کو جولائی 2018ء تا جنوری2019تک اے سی سی پی ایل کی جانب سے مفت کوچنگ دی جائے گی۔

جموں  کشمیر میں محبوبہ سرکار گرنے کے بعد   ڈی جی پی نے  کہا، آتنگ کے خلاف اب تیز ہونگے آپریشن؛ گورنر رول میں کام کرنا ہوگا آسان

جموں کشمیر میں محبوبہ سرکار گرنے کے بعد بدھ کو گورنر این بوہرانے ریاست کی کمان سنبھال لی ہے کشمیر میں اس کے ساتھ ہی  انتظامی  ہلچل تیز  ہوگئی ہے ۔

اُڈپی میں بائک کو ٹکر دے کر فرار ہونے والے ٹمپو ڈرائیور پرچار سال بعد عدالت نے عائد کیا 2500 روپیہ جرمانہ

اُڈپی چیفسیویل جج اینڈ چیف میجسٹریٹ  فرسٹ کلاس عدالت نے  ایک ٹمپو ڈرائیور پر بائک کو  ٹکر دے کر فرار ہونے کے جرم میں 2500 روپیہ جرمانہ عائد کیا ہے اور رقم نہ بھرنے کی صورت میں اُسے چھ ماہ کی جیل کی سزا سنائی ہے۔

پی یو سی سالِ دوم سائنس طلباء کے لیے مفت کوچنگ

ڈسٹرکٹ کوآرڈینیٹر اے سی سی پی ایل آرگنائزیشن بیدر کے پریس نوٹ کے بموجب بیدر ضلع کے مسلم طلباء جو پی یو سی سالِ دوم سائنس طلباء کو جولائی 2018ء تا جنوری2019تک اے سی سی پی ایل کی جانب سے مفت کوچنگ دی جائے گی۔

جاپان میں.1 6 شدت کا زلزلہ، تین افراد ہلاک

اوساکا اور اس کے گرد و نواح کا شمار جاپان کے اہم ترین صنعتی مراکز میں ہوتا ہے اور زلزلے کے بعد علاقے میں واقع بیشتر کارخانوں میں کام بند کردیا گیا ہے۔جاپان کے دوسرے بڑے شہر اوساکا میں آنے والے 6.1شدت کے زلزلے سے اب تک تین افراد کے ہلاک ہونے کی تصدیق ہوگئی ہے۔