کرناٹکا ضمنی انتخابات : امیدواروں کا انتخاب کانگریس ، جے ڈی ایس اور بی جے پی کے لئے درد سر

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 8th October 2018, 11:54 PM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بنگلورو۔8؍اکتوبر(ایس او  نیوز) ریاست کرناٹک میں  تین لوک سبھا اور دو اسمبلی حلقوں کے لئے اگلے ماہ ہونے والے ضمنی انتخابات کے لئے امیدواروں کے انتخاب کو لے کر تینوں پارٹیاں کانگریس، جے ڈی ایس اور بی جے پی  تشویش میں مبتلا ہیں۔ پارٹیوں کے امیدواروں میں ایک دوسرے کو نیچا دکھانے کے لئے جو رسہ کشی چل رہی ہے اس سے کامیاب ہونے والے امیدوار کو منتخب کرنامشکل مرحلہ بن گیا ہے۔

جیسے ہی منڈیا، بلاری اور شیموگہ کی تین لوک سبھا سیٹوں اور رام نگرم اور جمکھنڈی کی اسمبلی حلقوں کے ضمنی انتخابات کی تاریخوں کا اعلا ن ہوا۔ کانگریس ، بی جے پی اور جے ڈی ایس میں ٹکٹ حاصل کرنے والوں کا تانتا بندھ گیا ۔ اپنے سیاسی سرپرستوں کے ذریعے ٹکٹ حاصل کرنے کئی امیدوار لابی چلارہے ہیں۔ جس کے پیش نظر امید واروں کے ناموں  کا فیصلہ کرنا لیڈروں کے لئے ایک چیلنج بن گیا  ہے۔ تینوں پارٹیوں نے امیدواروں کے انتخاب کے لئے اجلاس منعقد کئے ہیں۔ تاہم کسی فیصلے پر نہیں پہنچ پائے ہیں۔ توقع کی جارہی ہے کہ اگلے تین یا چار دنوں میں ضمنی انتخابات کے امیدواروں کے ناموں کی حتمی فہرست کا اعلان کردیا جائے گا۔

امیدواروں کے انتخاب سے متعلق کل کانگریس لیڈروں کا اجلاس بھی منعقد کیا گیا ہے۔ اسی طرح اگلے دو دنوں میں بی جے پی کی کورکمیٹی کا اجلاس بھی  ہونے والا ہے۔ جس کے بعد یہ پارٹیاں اپنے امیدواروں کے ناموں کا اعلان کردیں گی۔

ضمنی انتخابات کے لئے امیدواروں کے انتخاب سے متعلق ریاستی کانگریس انچارج برائے کرناٹک کے سی وینو گوپال کل ریاستی کانگریس کے سینئر لیڈروں کے ساتھ تبادلۂ خیال کریں گے۔ ساتھ ہی شیموگہ ، بلاری اور باگلکوٹ ضلع کے کانگریس لیڈروں کے ساتھ بھی اجلاس منعقد کیا جائے گا۔ شہر پہنچنے والے وینو گوپال کل سابق وزیراعلیٰ سدرامیا، نائب وزیراعلیٰ ڈاکٹر جی پرمیشور، کے پی سی سی صدر دنیش گنڈو راؤ ، سکریٹری ایشور کھنڈرے ، وزیر آبی وسائل واعلیٰ تعلیمات ڈی کے شیوکمار سمیت سینئر لیڈروں کے ساتھ اجلاس منعقد کریں گے۔ اور اجلاس میں امیدواروں کے انتخاب پر تبادلۂ خیال کیا جائے گا۔

کانگریس کے حلیف پارٹی جے ڈی ایس کے ساتھ ہوئے معاہدے کے تحت شیموگہ اور بلاری لوک سبھا حلقوں اور جمکھنڈی اسمبلی حلقے کے لئے کانگریس کے امیدوار کو مقابلے میں اتارا جائے گا۔ منڈیا لوک سبھا اور رام نگرم اسمبلی حلقوں کے لئے جے ڈی ایس کے امیدوار میدان میں اتریں گے۔ ان ضمنی انتخابات کے لئے کانگریس کے امیدوار کا انتخاب پارٹی لیڈروں کے لئے درد سر بنا ہوا ہے۔ دوسری طرف پارٹی میں ناراض عناصر سے بھی نپٹنے کا مسئلہ درپیش ہے۔

کانگریس پارٹی کے ذرائع نے بتایاکہ کل منعقدہ اجلاس میں امیدواروں کی فہرست کو قطعیت دے کر اسے ہائی کمانڈکے پاس بھیجا جائے گا۔ ہائی کمانڈ کی منظوری ملنے کے بعد اگلے تین یا چار دنوں میں امیدواروں کی فہرست کا اعلان کردیا جائے گا۔ شیموگہ لوک سبھا حلقہ کانگریس کے لئے وقار کا باعث بنا ہوا ہے۔ اس حلقے سے کانگریس کے امیدوار کو کامیاب بنانا اس لئے بھی اہم ہے کہ اس حلقے سے بی جے پی کے ریاستی صدر بی ایس یڈیورپا اپنے بیٹے کو میدان میں اتاریں گے۔ اور کہا جاتاہے کہ یہ یڈیورپا گڑھ ہے اس گڑھ میں اگر کانگریس بی جے پی کے امیدوار کو شکست دینے میں کامیاب ہوجاتی ہے تو کانگریس کو ریاست میں آنے والے لوک سبھا انتخابات میں واضح سبقت مل جائے گی۔ شیموگہ لوک سبھا حلقے سے سابق وزیرکمنے رتنا کر، کاگوڈ تمپا اور پچھلے انتخابات میں ہارنے والے منجوناتھ بھنڈاری کانگریس سے ٹکٹ حاصل کرنے کے لئے کوشاں ہیں۔ بلاری لوک سبھا ضمنی انتخابات کا سامنا کرنے کانگریس میں ٹکٹ کے دعویداروں کی لمبی فہرست ہے۔ بلاری دیہی حلقے کے رکن اسمبلی ناگیندرا کے بھائی وینکٹیش پرساد ٹکٹ کے مضبوط دعویداروں میں شامل ہیں۔ ایک اور دعویدار بی رام پرساد ہیں ، اور کئی ایک لیڈر اپنے اپنے حامیوں کے نام امیدوارکے طور پر پیش کررہے ہیں۔ جمکھنڈی اسمبلی حلقے سے سابق رکن اسمبلی آنجہانی سدونیامے گوڈا کے فرزند آنند نیامے گوڈا کو میدان میں اتارا جاسکتا ہے۔ جے ڈی ایس میں ٹکٹ کے دعویداروں کا کوئی مسئلہ نہیں ہے۔ سابق وزیراعظم اور جے ڈی ایس کے قومی صدر دیوے گوڈا کا فیصلہ حتمی ہوگا۔ امیدواروں کے انتخاب سے متعلق جے ڈی ایس میں دوسری پارٹیوں کے مقابلے میں کوئی رسہ کشی نہیں ہے۔ منڈیا لوک سبھا حلقے سے سابق آئی آر ایس افسر لکشمی اشون گوڈا جے ڈی ایس ٹکٹ کے مضبوط دعویدار ہیں۔ رام نگرم اسمبلی حلقے سے وزیراعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی کی اہلیہ انیتا کمار سوامی میدان میں اتریں گی۔ اگلے تین چار دنوں میں ضمنی انتخابات کے لئے تینوں پارٹیوں کے امیدواروں کے ناموں کا اعلان کردیا جائے گا۔

ایک نظر اس پر بھی

چکبلاپور کے شڈلگٹہ میں کوہ نور ٹیپو تعلیم مائنارٹی ٹرسٹ کی جانب سے پلوامہ میں شہید فوجیوں کو خراج عقیدت؛ اہل خانہ کو پانچ کروڑ روپیہ معاوضہ دینے کا مطالبہ

22فروری بروزجمعہ کو کوہ نور ٹیپو تعلیم مائنارٹی ویلفئیر ٹرسٹ شڈلگٹہ کی زیر قیادت بعد نماز جمعہ ہزاروں مسلمانوں نے 14فروری کو کشمیر کے پلوامہ میں دہشت گردوں کا نشانہ بنے سی آر  پی ایف جوانوں کی شہادت کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے دہشت گردی کی سخت مذمت کی گئی ۔

24جولائی سے پہلے فاریسٹ اتی کرم داروں کو نکال باہر کرنے سپریم کورٹ کا آرڈر : ریاستی حکومت پر ضلع اتی کرم داروں کی امید بھری نگاہ

فاریسٹ حق قانون کے تحت فاریسٹ مکینوں کے طورپر اپنا حق جتانے کے بعد انکار کئے گئے فاریسٹ مکینوں کو  ایک ساتھ تمام کو نکال باہرکرنے سپریم کورٹ تین رکنی بنچ نے 13فروری کو فیصلہ صادر کیا ہے۔ سپریم کورٹ کا فیصلہ فاریسٹ مکینوں  (اتی کرم دار )پر بجلی بن کر گراہے ، فاریسٹ افسران کو اتی ...

ہوناور: ہیسکام کے افسران راستہ بھٹک گئے۔ پوری رات جنگل میں گزارنے پر ہوئے مجبور

گیر سوپّا ڈیم کے علاقے میں گھنے جنگل سے گزرنے والی 33کے وی بجلی لائن کا معائنہ کرنے کے لئے نکلی ہوئی ہیسکام افسران اور عملے پر مشتمل ایک ٹیم میں شامل دوافسران جنگل میں راستہ بھٹک گئے جس کی وجہ سے انہیں پوری رات جنگل ہی میں گزارنی پڑی ۔

بھٹکل مجلس احیاء المدارس کے زیراہتمام انوکھی نوعیت کا  ’اجتماعی قرأت مقابلے ‘کا خوبصورت انعقاد : قرآن فیصلہ کن ، ممتاز ،مسلسل پڑھی جانی والی واحد کتاب ہے

مجلس احیاء المدارس بھٹکل کے زیر اہتمام مخدوم کالونی میں واقع مدرسہ دارالتعلیم و التربیہ میں 19فروری 2018بروز منگل کی رات منعقدہ اپنی نوعیت کے پہلے ’’اجتماعی قرأت مقابلہ ‘‘میں جامعہ اسلامیہ چوک بازار بھٹکل اول، جامعہ اسلامیہ بھٹکل کے شعبہ ثانویہ دوم اور جامعہ اسلامیہ کارگدے ...