تائیوان میں زلزلہ 4 ہلاک، 225 افراد زخمی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 8th February 2018, 12:13 PM | عالمی خبریں |

تائی پی،7فروری (رائیٹرز) تائیوان کے ساحلی شہر ہوالین میں آئے زبردست زلزلے میں کم از کم4 لوگوں کی موت ہو گئی اور225 دیگر زخمی ہو گئے ہیں۔ تائیوان کے صدرسائی انگ وین نے آج صبح متاثر ہ مقامات کا دورہ کیا اور امدادی سر گرمیوں کا جائزہ لیا۔ حکومت کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ کل رات تقریباً 9:30بجے آئے اس زلزلے کے بعد سے تقریباً145افراد لاپتا ہیں۔ زلزلے کی وجہ سے کم از کم 4لوگوں کی موت ہوئی اور225دیگر زخمی ہو گئے ۔ زخمیوں میں جاپان، چیک جمہوریہ اور چین کے شہری شامل ہیں۔ راحت رسانی عملہ ملبے میں پھنسے ہوئے لوگوں کو نکالنے کی کوشش کر رہا ہے۔خیال کیا جا رہا ہے کہ ملبے کے نیچے بڑی تعداد میں لوگ دبے ہو سکتے ہیں۔ زلزلے میں ایک فوجی اسپتال سمیت کئی عمارتیں جھک گئی ہیں۔زلزلے کی شدت ریخترپیمانہ پر6.4 ناپی گئی اور اس کا مرکزہوالین سے22کلومیٹر شمال مشرق میں تھا۔ حکومت کا کہنا ہے کہ اگلے دو ہفتوں میں مزید5.0شدت والے جھٹکے آ سکتے ہیں۔ہوالن کی آبادی تقریباً ایک لاکھ ہے ۔ زلزلے کی وجہ سے تقریباً40ہزار گھروں میں پانی اور 600گھروں میں بجلی کی فراہمی متاثر ہو ئی ہے ۔صدر دفتر کی جانب سے جاری ایک بیان کے مطابق صدر نے کابینہ اور متعلقہ وزارتوں کو ڈیزاسٹر ریلیف کا کام تیز کرنے کے لئے کہا ہے ۔ امریکی ارضیاتی سروے نے بتایا کہ زلزلے کا مرکز سطح زمین سے ایک کلو میٹر نیچے تھا۔ زلزلے کے بعد کئی اور جھٹکے محسوس کئے گئے ، لیکن سونامی کی وارننگ جاری نہیں کی گئی ہے ۔واضح ر ہے کہ تائیوان میں2016میں آئے زلزلے میں کئی افراد ہلاک ہوئے تھے ۔

ایک نظر اس پر بھی

ایران میں رواں سال تین کم سن بچوں کو پھانسی پر لٹکا دیا گیا:یو این

ایران میں کم عمر افراد کو سزائے موت دیے جانے اور ان سزاؤں پر عمل درآمد میں ماضی کی نسبت اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔ اقوام متحدہ کی طرف سے جاری کردہ ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ رواں سال 2018 کے پہلے ڈیرھ ماہ میں ایران میں تین کم عمر افراد کو پھانسی دے کر موت سے ہم کنار کردیا گیا۔