کرناٹکا میں معمول کی بارش کے مقابلے میں امسال تین فیصد کم ریکارڈ ہوئی بارش

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 7th August 2018, 10:53 PM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بنگلورو،7؍اگست(ایس او نیوز) ریاستی وزیر مالگزاری آر وی دیش پانڈے نے خبر دی ہے کہ  ریاست کرناٹک  میں رواں مانسون کے دوران یکم جون سے 6 ؍ اگست تک سابقہ سالوں کے مقابلے میں تین فیصد بارش کم ریکارڈ کی گئی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ 6/اگست تک عموماً 522 ملی میٹر بارش ریکارڈ ہوتی ہے، مگر امسال اس مدت میں صرف 505/ ملی میٹر ہی بارش ریکارڈ کی گئی ہے۔

اخبار نویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ امسال ہوئی بارش کو اگر ریاست کے حصوں میں تقسیم کیا جائے تو ریاست کے جنوبی اندرونی علاقوں میں یہ اوسط 27 فیصد رہا۔ شمالی اندرونی علاقوں میں بارش کی کمی گزشتہ سال کے مقابل ریکارڈ کی گئی۔ یکم اگست تک شمالی اندرونی علاقوں میں 31 فیصد بارش ریکارڈ کی گئی، انہوں نے کہاکہ ریاست کے 90تعلقہ جات میں بارش معمول کے مقابل کم رہی،جبکہ 29 تعلقہ جات میں بارش کی شدید کمی محسوس کی گئی ہے۔مزید  بتایا کہ  86 تعلقہ جات میں بارش کا اوسط معمول کے قریب رہا ہے۔

انہوں نے کہاکہ بارش میں اس کمی کے سبب گرمی کے موسم میں پینے کے پانی کی کمی کے اندیشوں کے پیش نظر ابھی سے احتیاطی تدابیر اپنانے کے لئے تمام محکموں کو ہدایات  جاری کی جاچکی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ بارش کی کمی کے سبب فصلوں کو جو نقصان ہوگا اس سے نمٹنے کے لئے محکمۂ زراعت کو واضح ہدایات جاری کی گئی ہیں۔ پینے کے پانی کی کمی کی شکایت جن تعلقہ جات میں ہوگی وہاں پر ابھی سے انتظامات کرنے تحصیلداروں کو ہدایت دے دی گئی ہے۔ تاکہ شدید گرمی کی صورت میں پانی کی پریشانی نہ رہے۔ اس کے علاوہ مہاتما گاندھی قومی روزگار ضمانت اسکیم کے تحت روزگار کے مواقع فراہم کرنے پر بھی زور دیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ریاست بھر میں خشک سالی کی صورتحال سے نپٹنے کے لئے مختلف اضلاع کے ڈپٹی کمشنروں کی قیادت میں الگ الگ ٹیمیں ترتیب دی گئی ہیں۔ خشک سالی سے گزشتہ سال جو علاقے متاثر رہے ان علاقوں میں ڈپٹی کمشنروں سے کہا گیا ہے کہ ہر ہفتہ ویڈیو کانفرنس کے ذریعے وہ ضلع کی صورتحال سے ریاستی انتظامیہ کو آگاہ کرائیں تاکہ احتیاطی تدابیر اپنائی جاسکے۔

ایک نظر اس پر بھی

کمار سوامی نے بارش کی تباہ کاریوں کا جائزہ لیا؛ متاثرہ علاقوں میں راحت کاری کے لئے فنڈز کی کوئی کمی نہیں : وزیراعلیٰ

ریاستی ساحلی اور ملناڈ علاقوں میں جاری موسلادھار بارش کی وجہ سے ہورہی تباہی اور اس سے نپٹنے کے لئے ضلع اور ریاستی انتظامیہ کی طرف سے اٹھائے گئے اقدامات کا آج وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی نے چیف سکریٹری ٹی ایم وجئے بھاسکر کے ہمراہ جائزہ لیا۔

کابینہ میں توسیع کے لئے اراکین اسمبلی بضد،17اراکین اسمبلی ستمبر کے پہلے ہفتے میں استعفیٰ دینے تیار

ریاست کے سیاسی حلقوں میں یہ خبریں ہلچل کا سبب بنی ہوئی ہیں کہ کابینہ میں توسیع میں تاخیر سے ناراض کانگریس اور جنتادل (ایس) کے 17 سے زائد اراکین اسمبلی نے اگست کے اختتام تک مہلت دی ہے

کورگ میں بارش کی بھاری تباہی ، تین اموات،زمین کھسکنے کے متعدد واقعات 

جنوبی ہند کا کشمیر کہلانے والے ریاست کے کورگ ضلع میں بارش نے زبردست تباہی مچادی ہے۔ ایک طرف بارش کا سلسلہ رکنے کا نام نہیں لے رہا ہے تو دوسری طرف پڑوسی ریاست کیرلا میں طوفانی بارش کے سبب وہاں کی ندیوں کا پانی بھی کرناٹک کی طرف بہادیا گیا ہے،

بنگلورو شہر کے میئر کے عہدے پر اپنے معتمد کو فائز کرنے پرمیشور کی کوشش،نائب وزیراعلیٰ کی بی بی ایم پی پر اجارہ داری پر کانگریس اراکین اسمبلی برہم

برہت بنگلور مہانگر پالیکے کے موجودہ میئر کی میعاد آئندہ ماہ مکمل ہوجائے گی۔ ستمبر کے اختتام پر شہر کے لئے نئے میئر کا انتخاب ہونا ہے۔

کورگ میں بارش کی بھاری تباہی ، تین اموات،زمین کھسکنے کے متعدد واقعات 

جنوبی ہند کا کشمیر کہلانے والے ریاست کے کورگ ضلع میں بارش نے زبردست تباہی مچادی ہے۔ ایک طرف بارش کا سلسلہ رکنے کا نام نہیں لے رہا ہے تو دوسری طرف پڑوسی ریاست کیرلا میں طوفانی بارش کے سبب وہاں کی ندیوں کا پانی بھی کرناٹک کی طرف بہادیا گیا ہے،

مہادائی ٹریبونل کے فیصلے کا چیلنج کرنے ریاستی حکومت تیار

ریاستی وزیر برائے آبی وسائل ڈی کے شیوکمار نے کہاکہ شمالی کرناٹک کے بعض اضلاع کو پینے کے پانی کی فراہمی کا واحد ذریعہ مہادائی کے پانی کی تقسیم کے سلسلے میں حال ہی میں ٹریبونل نے جو فیصلہ صادر کیا ہے ریاستی حکومت اس کا سپریم کورٹ میں چیلنج کرے گی۔

بھٹکل میونسپل پارک کی تجدیدکاری میں بدعنوانی کا الزام۔ ڈپٹی کمشنر کے نام میمورنڈم

بھٹکل بلدیہ کے حدود میں بندر روڈ پر واقع سردار ولبھ بھائی پٹیل پارک کی تجدید کاری میں بدعنوانی کا الزام لگاتے ہوئے  آسارکیری کے عوام  نے بلدیہ انجینئر کو پارک میں طلب کرکے ڈپٹی کمشنر کے نام میمورنڈم دیا جس میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ یہاں ہورہی بدعنوانی کی تحقیقات کروائی جائے۔