منگلورو ایئر پورٹ میں بم رکھنا اور پھر ملزم کا بنگلورو چلے جاناانٹلی جنس ایجنسی کی ناکامی کانتیجہ۔ رکن اسمبلی یوٹی قادر کا بیان

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 23rd January 2020, 9:17 PM | ساحلی خبریں |

منگلورو23/جنوری (ایس او نیوز)سابق وزیر اور موجودہ رکن اسمبلی یوٹی قادر نے منگلورو ایئر پورٹ پر بم رکھنے کے معاملے میں کہا ہے کہ یہ پوری طرح انٹلی جنس ایجنسی کی ناکامی کا نتیجہ ہے۔

 یوٹی قادر نے منگلورو میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایئر پورٹ پر کسی کا اس طرح بم لاکر رکھنا ہی سیکیوریٹی اور انٹلی جنس ایجنسی کی ناکامی ہے پھر اس کے بعد ملز م کا شہر سے نکل کر بنگلورو پہنچ جانا۔ دودن تک اسے تلاش کرنے میں پولیس کا ناکام رہنا اور پھر ملزم کا بنگلورو میں ہی پولیس کے اعلیٰ افسران کے سامنے خودسپردگی کرنا انٹلی جنس کی بری طرح ناکامی کا نتیجہ ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ ایک سماج دشمن اور نہایت ہی سنگین معاملہ ہے۔اس کے پیچھے اصل کس کا ہاتھ اوردماغ کام کررہا ہے اس کی جانچ گہرائی سے ہونی چاہیے۔

 یوٹی قادر نے حیرت ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ پہلے بم برآمد ہونے کی خبر عام کی گئی تھی۔ اب اسے پٹاخہ بتانے کی کوشش کی جارہی ہے۔انہوں نے کہا کہ ہوسکتا ہے اس تخریبی کارروائی کے پیچھے کسی او رکا ہاتھ ہو۔ اس لئے حکومت کو چاہیے کہ اس کے متعلق تمام حقائق اور جانچ رپورٹ کو عوام کے سامنے لائے۔ سابق وزیر اعلیٰ کمارا سوامی نے بم برآمد ہونے کے بعد جن شکوک کااظہار کیاتھا اسے درست قرار دیتے ہوئے یوٹی قادر نے کہا کہ بم برآمد ہوتے ہی کس طرح کی خبریں نشر کی جارہی تھیں اور اب اسے ایک دیسی بم اور ملزم کو ذہنی مریض بتایا جارہا ہے۔

 یوٹی قادر نے کہا کہ مجھے لگتاہے کہ یہ پورا معاملہ ایک منصوبہ بند سازش کے تحت انجام دیا گیا ہے۔کیونکہ ایئر پورٹ پربم رکھنے تک ملزم کا دماغ درست تھا اور گرفتار ہونے کے بعداس کادماغی توازن کیسے خراب ہوگیا؟
 

ایک نظر اس پر بھی

منگلوروکے ایک دیہات میں لگا نیا پوسٹرہندو بیوپاریو! ہمارے گاؤں میں آکر تجارت کرو:منفی پروپگنڈا کرنے والوں کومنھ توڑ جواب

کورونا وائرس کی وباء کو مسلمانوں کی سازش قرار دینے اور ان کے سماجی بائیکاٹ کرنے کی جو لہر چل پڑی ہے اور مختلف مقامات پر مسلمانوں کے داخلے اور آمد ورفت پر پابندی کے جو پوسٹرس، بیانرس اور آڈیو مسیج عام ہورہے ہیں اس سے سماج میں ایک عجیب تشویش پیدا ہوگئی ہے۔

ایمرجنسی معاملات میں کیرالہ کے مریضوں کا علاج مینگلور کے ڈیرلکٹہ اسپتال میں کرنےجنوبی کینرا ڈپٹی کمشنرکی رضامندی

کورونا وائرس کی وبا ء پھیلنے کے بعد کرناٹکا نے کیرا لہ کے ساتھ لگنے والی تمام سرحدیں بند کردی تھیں، جس کی وجہ سے مینگلور سے لگے کیرالہ کے سرحدی علاقہ  کاسرگوڈ اور اطراف سے علاج کے لئے منگلورو آنے والے مریض بری طرح متاثر ہوگئے تھے۔پھر یہ تنازعہ سپریم کورٹ تک جا پہنچا تھا۔ اور ...

بھٹکل سے ایک پرائیویٹ ڈاکٹر سمیت مزید 15 مشکوک لوگوں کے سیمپل جانچ کے لئے روانہ؛ کورونا سے متاثرہ خاتون کو مینگلور منتقل کرنے کی ہورہی ہے تیاری

آج بدھ کو بھٹکل کی ایک حاملہ خاتون کورونا سے متاثر ہونے کی تصدیق ہونے کے بعد اُس کی جانچ کرنے والی ایک ڈاکٹر سمیت قریب 15 لوگوں کے تھوک کے نمونے جانچ کے لئے روانہ کرنے کی اطلاع موصول ہوئی ہے۔ ذرائع نے اس بات کی بھی خبردی ہے کہ خاتون کے رابطے میں رہنے والے پانچ قریبی رشتہ داروں کو ...

ناکہ بندی معاملہ: کرناٹک اور کیرالہ کے درمیان تنازعہ کا تصفیہ، کیس بند

سپریم کورٹ نے کورونا وائرس ’كووڈ -19‘ کے بڑھتے پھیلاؤ کے سلسلے میں جاری ملک بھر میں لاک ڈاؤن کے پیش نظر کرناٹک حکومت کی جانب سے کیرالہ سے متصل سرحد سیل کر دیئے جانے کے معاملے کی سماعت منگل کے روز اس وقت بند کر دی جب اسے بتایا گیا کہ دونوں ریاستوں کے درمیان تنازعہ کا تصفیہ ہو گیا ...