شہریت ترمیمی قانون کے خلاف احتجاج، قومی پرچم کی طلب میں اضافہ

Source: S.O. News Service | Published on 13th January 2020, 9:06 PM | ملکی خبریں |

حیدرآباد،13/جنوری (ایس او نیوز/یو این آئی) شہریت ترمیمی قانون، این آر سی اور این پی آر کے خلاف حیدرآباد میں احتجاجی ریلیوں کے بعد اچانک ترنگے کی طلب میں اضافہ ہوگیا ہے کیونکہ جتنے بڑے احتجاجی پروگرام منعقد کیے جا رہے ہیں، ہر پروگرام میں شرکاء کی بڑی تعداد قومی پرچم کے ساتھ نظر آرہی ہے جس کے پیش نظر اس کی طلب میں کافی اضافہ ہوگیا ہے اور ترنگے تیار کرنے والوں کو اس کی طلب کی تکمیل میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

یوم جمہوریہ بھی قریب ہے، ایسے میں ترنگے کی طلب میں مزید اضافہ ہوگیا ہے۔ حال ہی میں شہر حیدرآباد میں ملین مارچ اور پھر ترنگا ریلی منعقد کی گئی جس میں ہزاروں کی تعداد میں شرکا کے ہاتھوں میں ترنگے تھے۔ جمعہ کو منعقدہ ترنگاریلی میں ایک 25 فٹ چوڑا ترنگا بھی استعمال کیا گیا جو اپنی مثال آپ ہے۔

قومی شہریت قانون، این سی آر اور این پی آر کے خلاف احتجاج کے حصہ کے طور پر حیدرآباد کے رکن پارلیمنٹ و صدر کل ہند مجلس اتحاد المسلمین بیرسٹر اسد الدین اویسی نے تاریخی چار مینار کے قریب قومی پرچم لہرانے کا اعلان کیا ہے جس کے لئے 10x30 فٹ کے ترنگے کی تیاری کا آرڈر دیا گیا ہے۔

شیخ عثمان پروپرائٹر ایس کے ٹریڈرس جو تمام جماعتوں کے پرچم تیار کرتے ہیں اور زیادہ ترنگے تیار کرنے والوں میں سے ایک کے طور پر ان کا شمار ہوتا ہے، نے کہا کہ جب سے شہریت ترمیمی قانون، این سی آر اور این پی آر کے خلاف احتجاجی صدائے بلند ہو رہی ہیں، تب سے ترنگے کی فروخت میں اضافہ ہوگیا ہے کیونکہ مخالف شہریت ترمیمی قانون ریلی اور احتجاج کے موقع پر تقریبا ہر شخص اپنے ہاتھ میں ترنگا رکھنا چاہتا ہے۔

ان ریلیوں کے موقع پر سڑکوں پر بھی کئی افراد نے ترنگے فروخت کیے۔ انہوں نے کہا کہ شہریت ترمیمی قانون، این سی آر اور این پی آر کے خلاف احتجاجی ریلیوں کے پیش نظر اندرون تین ہفتے دونوں تلگو ریاستوں تلنگانہ اور آندھراپردیش میں تقریباً دس لاکھ قومی پرچموں کی فروخت ہوئی ہے۔ صرف حیدرآباد میں ہی تین لاکھ سے زائد ترنگے فروخت ہوئے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

میسکو کے بانی ڈاکٹر فخرالدین محمد دردکے انتقال پر گورنرعارف محمد خاں کی زیر صدارت آن لائن تعزیتی اجلاس

میسکو کے بانی اور اعزازی سیکریٹری جناب ڈاکٹر فخرالدین محمد حیدرآباد کے انتقال پر ایک آن لائن تعزیتی اجلاس کا انعقاد کیا گیا۔اجلاس کی صدارت کیرالہ کے گورنر عالی جناب عارف محمد خاں صاحب نے فرمائی۔

تمل ناڈو : کورونا کے خلاف ایکشن میں نئی ڈی ایم کے سرکار ، 14 دنوں کے مکمل لاک ڈاون کا اعلان

تمل ناڈو میں ڈی ایم کے کی نئی سرکار کورونا وائرس کے خلاف ایکشن میں آگئی ہے ۔ ہفتہ کو سرکار نے ریاست میں 14 دنوں کے مکمل لاک ڈاون کا اعلان کیا ہے ۔ خاص بات یہ ہے کہ تمل ناڈو میں ایک دن پہلے ہی انفیکشن کے ریکارڈ معاملات درج کئے گئے تھے ۔ اس کے علاوہ پڑوسی ریاستوں کیرالہ اور کرناٹک ...

گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا سے سب سے زیادہ ہوئیں 4187 اموات

کورونا کے قہر سے پورا ملک پریشان ہے اور کل ایک دن میں پھر چار لاکھ سے زیادہ نئے لوگ کورونا سے متاثر ہوئے اور ورلڈو میٹر پر جاری اعداد وشمار کے مطابق کل 4187 افراد کی اس وبا کی وجہ سے موت ہوئی۔ ریاستی حکومتوں کی تمام تدابیر ناکام ہوتی نظر آ رہی ہیں۔