شہریت قانون کے خلاف نہ رُکنے والے مظاہروں سے حکومت پر بوکھلاہٹ طاری؛ اُترپردیش میں مظاہروں کو روکنے کی ادتیہ ناتھ حکومت کی تمام کوششیں ناکام؛ اُلٹے سیدھے بیانات

Source: S.O. News Service | By INS India | Published on 22nd January 2020, 8:13 PM | ملکی خبریں |

لکھنؤ،22جنوری(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) شہریت قانون کی مخالفت میں ملک میں جس طرح احتجاج اور مظاہروں میں اضافہ ہورہا ہے، اس کے نتیجے میں ایک طرف مرکزی حکومت بوکھلا چکی ہے وہیں  اُدھر اُترپردیش میں  وزیراعلیٰ  یوگی ادتیہ ناتھ کی  مظاہروں کو روکنے کی تمام  اُلٹی سیدھی کوششیں  ناکام ہوتی جارہی ہیں،  بی جے پی لیڈران کی سمجھ میں نہیں آرہا ہے کہ وہ  ان مظاہروں پر کس طرح قابو پائیں، یہی وجہ ہے کہ ان کی زبانوں سے غلط اور نازیبا تبصرے ادا ہورہے ہیں۔

اسی طرح کی بوکھلاہٹ یو پی کے وزیراعلیٰ ادتیہ ناتھ کی اُس وقت سامنے آئی جب  دہلی کے شاہین باغ اور لکھنؤ کے گھنٹہ گھرپر شہریت ترمیم قانون کے خلاف خواتین کے مظاہرے پر انہوں نے کہا کہ کچھ لوگوں میں اتنی ہمت نہیں کہ وہ خود تحریک کریں، لہذا گھر کی عورتوں اور بچوں کو چوراہوں پر بیٹھا دیا ہے۔  سی ایم  ادتیہ ناتھ  نے کہا کہ مرد گھر میں لحاف میں سو رہے ہیں اور خواتین چوراہے پر ہیں۔

حالانکہ ہر کوئی جانتا ہے کہ ملک بھر میں جو مظاہرے اور احتجاج ہورہے ہیں وہ بالکل پُرامن طور پر ہورہے ہیں ،اس کے باوجود ادتیہ ناتھ نے کانپور میں سی اے اے کی حمایت میں منعقدہ  ریلی سے خطاب کرتے ہوئے  کہا کہ مظاہرے کے نام پر تشدد کو برداشت نہیں کیا جائے گا۔

ایک طرف وہ خود کہہ رہے ہیں کہ خواتین احتجاج کررہی ہیں، دوسری طرف انہوں نے اپنی پرانی باتوں کو دہراتے ہوئے کہا کہ اپوزیشن ملک کے دشمنوں کی زبان بول رہا ہے،تشدد کرنے والوں سے وصولی کی جائے گی۔اپوزیشن کے رویہ سے ملک کے دشمنوں کے حوصلے بلند ہو گئے ہیں،ہندوستان کو بدنام کرنے کی مہم چل رہی ہے۔ پریشانی کے عالم میں مبتلا ادتیہ ناتھ  نے کہا کہ کانگریس، بائیں بازو کی پارٹیاں  اور این جی او لوگوں  کو  بھڑکا رہے ہیں،ہمیں خاموش نہیں رہنا ہے۔کانگریس لیڈر کہہ چکے ہیں کہ جب تک آئی ایس آئی کے ایجنٹوں کی ہندوستان میں انٹری نہیں کرا لیتے اس وقت تک نہیں مانیں گے۔

واضح رہے  کہ سی اے اے کے خلاف گزشتہ کئی دنوں سے دہلی کے شاہین باغ اور لکھنؤ کے گھنٹہ گھر پر مظاہرہ چل رہا ہے۔لکھنؤ کے گھنٹہ گھرعلاقے میں خواتین اور بچے ہاتھوں میں ترنگا تھامے شہریت ترمیمی ایکٹ کے خلاف مظاہرہ کر رہے ہیں۔ پرامن مظاہرہ کرنے کے باوجود احتجاج میں شریک  اردو کے مشہور شاعر منور رانا کی بیٹیوں سمیت 159 کے خلاف  ایف آئی آر درج کی گئی  ہے۔
 

ایک نظر اس پر بھی

ہمارے حکم کا انتظار نہ کریں، کارروائی کیجئے ؛ دہلی تشدد معاملے پر ہائی کورٹ کی پولیس کو سخت ہدایت

گزشتہ اتوار سے دہلی میں جاری تشدد کو بے حد تکلیف دہ بتاتے ہوئے دہلی ہائی کورٹ نے بدھ کو کہا کہ وہ راجدھانی میں ایک اور 1984 فساد نہیں ہونے دے سکتا ہے اور ریاست کے سینئر افسروں کو بہت الرٹ رہنے کی ضرورت ہے۔

دہلی: خفیہ بیورو کے افسر انکت شرما کا بہیمانہ قتل، لاش نالے سے برآمد

شمال مشرقی دہلی میں لوگ دہشت کے سائے میں زندگی گزار رہے ہیں۔ اس درمیان خفیہ بیورو (آئی بی) کے ساتھ کام کرنے والے ایک 26 سالہ نوجوان کی لاش شمال مشرقی دہلی واقع چاند باغ سے برآمد ہونے کے بعد لوگوں میں مزید خوف دیکھنے کو مل رہا ہے۔

لکھنؤ: سماج وادی پارٹی کا ذات پر مبنی مردم شماری کرانے کا مطالبہ، اسمبلی میں ہنگامہ

  اترپردیش اسمبلی میں بدھ کو سماج وادی پارٹی(ایس پی) نے ذات پر مبنی مردم شماری کرانے کے مطالبے کے ساتھ ہنگامہ کیا جس کی وجہ سے اسپیکر کو کارروائی کو ملتوی کرنی پڑی۔ جس کی وجہ سے وقفہ سوالات تقریباً 50 منٹوں تک متأثر رہا۔

دہلی کے موجودہ حالات پر ممتا بنرجی نے ’جہنم‘ کے عنوان سے لکھی نظم

وزیرا علیٰ ممتا بنرجی نے دہلی میں حالیہ تشدد کے واقعات پر ’جہنم‘ کے عنوان سے ایک نظم اپنے فیس بک پر پوسٹ کی ہے جس میں وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے تشدد کے واقعات میں اموات پر صدمے کا اظہار کرتے ہوئے لکھا ہے کہ ”ہولی سے قبل خون کی ہولی کھیلی جا رہی ہے“۔

دہلی تشدد: مسجد پر لہرایا گیا بھگوا جھنڈا، پولیس نے 24 گھنٹے بعد بھی نہیں اتارا!

راجدھانی کے شمال مشرقی ضلع میں منگل کے روز شدید تشدد کے دوران اشوک نگر علاقے میں زبردست ہنگامہ برپا ہوا تھا۔ اس دوران علاقے کی گلی نمبر 5 میں واقع ایک مسجد پر شرپسندوں نے حملہ کیا اور اسے پوری طرح تباہ کر دیا۔ اتنا ہی نہیں کچھ شرپسند عناصر نے مسجد کے مینار پر چڑھ کر وہاں بھگوا ...