راجستھان سے راجیہ سبھا امیدوار ہوں گے ڈاکٹر منموہن سنگھ، 13 اگست کو پرچہ ئنامزدگی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th August 2019, 12:08 AM | ملکی خبریں |

جے پور، 10 اگست(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)سابق وزیر اعظم ڈاکٹر منموہن سنگھ راجستھان سے راجیہ سبھا کی ایک نشست کے لئے ہونے والے ضمنی انتخابات میں کانگریس کی طرف سے امیدوار ہوں گے۔کانگریس کے سینئر لیڈر منموہن سنگھ 13 اگست کو اپناپرچہ نامزدگی داخل کریں گے۔اسی کے ساتھ ایک بار پھر منموہن سنگھ کا راجیہ سبھا پہنچنا تقریبا طے ہو گیا ہے۔منموہن سنگھ کچھ وقت پہلے راجستھان اسمبلی میں اراکین اسمبلی کے ایک پروگرام کے اختتامی تقریب میں مہمان خصوصی کے طور پر شامل ہوئے تھے۔اس کے بعد سے ہی یہ قیاس آرائیاں شروع ہو گئی تھیں کہ وہ اس بار راجستھان سے ہی راجیہ سبھا پہنچیں گے۔بتا دیں کہ راجستھان بی جے پی کے صدر رہے مدن لال سینی کے انتقال کی وجہ سے راجستھان سے راجیہ سبھا کی ایک نشست کے لئے ضمنی انتخابات ہو رہا ہے۔اس سیٹ پر الیکشن 26 اگست کو ہوگا اور اسی دن ووٹوں کی گنتی کے بعد نتائج کا اعلان کر دیا جائے گا۔راجستھان میں کانگریس کی اکثریت میں ہونے سے پارٹی کے یہ سیٹ جیتنے کا پورا امکان ہے۔منموہن وزیر اعظم رہتے ہوئے آسام سے راجیہ سبھا رکن تھے،وہ تقریبا تین دہائی سے اس ایوان بالا کے رکن ہیں،وہ 1991 سے 2019 تک راجیہ سبھا کے رکن رہے۔راجیہ سبھا میں ان کی مدت کار 14 جون کو ختم ہوئی۔اس کے بعد کانگریس کے لئے کوئی جگہ خالی نہیں تھی اور سنگھ کو دوبارہ اس لئے نامزد نہیں کیا جا سکا کیونکہ کانگریس آسام میں اقتدار میں نہیں ہے۔بتاتے چلیں کہ ڈاکٹر منموہن سنگھ 2004 سے 2014 تک مسلسل دو مدت (یو پی اے -1 اور یو پی اے -2) کے لئے وزیر اعظم رہے تھے۔1991 میں کانگریس کی نرسمہا راؤ حکومت میں انہوں نے وزیر خزانہ کی کرسی سنبھالی تھی۔معروف ماہر اقتصادیات منموہن سنگھ کو 90 کی دہائی میں ہندوستان میں اقتصادی اصلاحات کا سہراجاتا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

عصمت دری کی راجدھانی بن گیا ہندوستان پھر بھی خاموش ہیں پی ایم مودی: راہل

 کانگریس کے سنیئر لیڈر راہل گاندھی نے اتر پردیش میں ایک لڑکی کے ساتھ ہوئی عصمت دری معاملے پر وزیراعظم نریندر مودی پر خاموشی اختیار کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے آج کہاکہ ہندوستان دنیا کی عصمت دری کی راجدھانی میں تبدیل ہو رہا ہے ،