کرناٹک وزیر دنیش جارکی ہولی نے اخلاقی بنیادپر استعفیٰ دے دیا، سی ڈی کوفرضی قراردیا،معاملہ کی منصفانہ جانچ کا مطالبہ

Source: S.O. News Service | Published on 4th March 2021, 10:52 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،4؍ مارچ (ایس او نیوز) ریاستی وزیربرائے آبی وسائل رمیش جارکی ہولی نے سیکس سی ڈی میں ان کے نام کا انکشاف ہونے کے بعد اخلاقی ذمہ داری کی بنیاد پر وزارت سے استعفیٰ دے دیا ہے -

کرناٹک کے وزیر اعلیٰ بی ایس ایڈی یورپا کی قیادت والی حکومت میں وزیر جارکی ہولی کی ایک فحش سی ڈی میڈیا میں جاری کی گئی تھی جس میں وزیر رمیش جارکی ہولی کو ایک عورت کے ساتھ رنگ ریلیاں مناتے ہوئے دکھایا گیا ہے - یہ سی ڈی سماجی کارکن دنیش کلہلی نے جاری کیا ہے -

کلہلی کا الزام ہے کہ جارکی ہولی نے مبینہ طورپر اس خاتون کو کرناٹکا پاور ٹرانس میشن کارپوریشن لمیٹڈ(کے پی ٹی سی ایل) میں ملازمت دلانے کے بہانے اس خاتون سے جنسی تعلقات قائم کرلئے تھے جب جارکی ہولی نے اپنا وعدہ پورا نہ کیا تو متاثرہ خاتون نے اس سیکس سی ڈی کو کلہلی کے حوالہ کردیا -کلہلی نے یہ سی ڈی میڈیا کو جاری کردی -

سی بی آئی جانچ کا مطالبہ:رمیش جارکی ہولی کے بھائی اورکرناٹک ملک فیڈریشن کے چیرمین بالا چندرا جارکی ہولی نے وزیراعلیٰ ایڈی یورپا سے اس پورے معاملہ کی جانچ سی آئی ڈی یا سی بی آئی کے ذریعہ کروانے کا مطالبہ کیا ہے - دریں اثناء میڈیا کو یہ سی ڈی جاری کرنے والے شہری حقوق کمیٹی کے صدر دنیش کلہلی نے کہاکہ متاثرہ خاتون کے اہل خانہ کیلئے انصاف کا مطالبہ کررہے ہیں -

اس سلسلہ میں کلہلی نے کل منگل کے دن شہر کے پولیس کمشنر کمل پنت سے ملاقات کی تھی -انہوں نے اس معاملہ کو کبن پارک پولیس تھانہ میں درج کروانے کا مشورہ دیا اس پر کلہلی نے کہا تھاکہ ہم اس پورے معاملہ کی حقیقت کو سب کے سامنے لانا چاہتے ہیں -اس کے بعد انہوں نے سی ڈی میڈیا میں جاری کردی جیسے ہی اس سی ڈی کو میڈیا نے نشر کیاگیا نہ صرف ریاستی بلکہ مرکزی سیاسی حلقے بالخصوص بی جے پی حلقوں میں ہلچل مچ گئی-

دریں اثناء رمیش جارکی ہولی نے وزارتی عہدہ سے استعفیٰ دینے کی پیشکش کرتے ہوئے وزیراعلیٰ ایڈی یورپا کو ایک خط لکھا ہے جس میں انہوں نے کہا ہے کہ سی ڈی جعلی ہے اور مجھ پر لگائے گئے تمام الزامات جھوٹے ہیں - اس پورے معاملہ کی منصفانہ تحقیقات ہونی چاہئے - میں اخلاقی بنیاد پر استعفیٰ دے رہا ہوں -

اس سے قبل انہوں نے اس معاملہ میں ان کا نام لئے جانے کو سیاسی سازش قرار دیا تھا-اس معاملہ کی تحقیقات کے بعد ملزم کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے -وہیں مرکزی وزیر پرہلادجوشی نے کہاکہ ہم ابھی کسی نتیجہ پر نہیں پہنچ سکتے ہیں - حقیقت جاننے کی ضرورت ہے - یہ سی ڈی سچ ہے تو پھر یہ شرمناک ہے -

ایک نظر اس پر بھی

گوکرن کے مہابلیشور مندر کے متعلق سپریم کورٹ کا اہم فیصلہ : مندرکی نگرانی کے لئے کمیٹی تشکیل دینے کا حکم

اترکنڑاضلع کے ہندؤوں کے مشہورو تاریخی مذہبی مقام گوکرن کی مہابلیشور مندر کے تعلق سے سپریم کورٹ نے حکم دیا ہے کہ  ریاستی حکومت  مندر کے انتظامی امور کو رام چندر پور مٹھ سے واپس لے۔ یاد رہے کہ  پچھلی بی جے پی کی حکومت نے گوکرن کے مہابلیشور مندر کی انتظامیہ اور نگرانی رام چندر ...

لاک ڈاؤن کی بجائے دفعہ 144 نافذ کی جائے : سی ایم ابراہیم| کورونا سے شہید ہونے والے مسلمانوں کی تدفین کیلئے علاحدہ جگہ دی جائے : ضمیر احمد خان 

کورونا سے شہید ہونے والے مسلم طبقے کے افراد کی تدفین کے لئے علاحدہ جگہ دی جائے ۔رکن اسمبلی ضمیر احمد خان نے  ودھان سودھا میں ہوئی بنگلورو کے اراکین اسمبلی،اراکین پارلیمان کی میٹنگ میں یہ مطالبہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ ہر ایک رکن اسمبلی کے لئے 25 کووڈ بیڈ اسپتالوں میں ریزرو کئے ...

کرناٹک میں لاک ڈاؤن ضروری نہیں، نائٹ کرفیو کے اوقات میں تبدیلی نہیں، دفعہ 144 نافذ کریں؛ ریاستی حکومت کو اپوزیشن کے مشورے 

بنگلورو میں کووڈ۔ 19 معاملات تیزی سے بڑھنے کے سبب  وزیر اعلیٰ  یڈیورپا، بنگلورو کے وزراء، اراکین پارلیمان اور اراکین اسمبلی کے ساتھ ویڈیو کانفرنس منعقد کی گئی۔  جس میں حکومت کو مشورہ دیا گیا کہ لاک ڈاؤن نافذ نہ  کر یں ،اسپتالوں میں کووڈ بستروں کی قلت دور  کریں۔مہلوکین کی ...

کرناٹک میں کورونا کی دہشت کا ایک اور ریکارڈ ، تقریباً 20 ؍ ہزار متاثر ، بنگلورو میں لاک ڈاؤن یا سخت امتناعی احکامات ؟

اتوارکے روز کرناٹک میں کورونا نے اپنا خوفناک ترین رخ پیش کیا اور اب تک متاثرین کی تعداد کا ایک نیا ریکارڈ سامنے آیا ریاست بھر میں 7 6 0 9 1 تازه معاملات سامنے آئے ۔ 81 لوگوں کی موت واقع ہوئی ہے۔

بھٹکل: ریاست میں کورونا کے بڑھتے معاملات سےپریشان طلبہ نے پیر سے شروع ہونے والے امتحانات منسوخ کرنے ٹوئیٹر پر چلائی مہم

کورونا کی دوسری لہر میں  بڑھتے کیسس کے دوران ایک طرف  میٹرک اور سکینڈ پی یوسی کے امتحانات ملتوی اور منسوخ کئے جارہےہیں تو وہیں دوسری طرف ویشویشوریا ٹیکنالوجیکل یونیورسٹی (وی ٹی یو) کے تحت آنے والی کالجس میں کل  پیر سے فرسٹ سیمسٹر کے امتحانات شروع ہورہےہیں۔