ہندوستان نے چین کو پھر دیا جھٹکا، 47 مزید چینی موبائل ایپ پر پابندی کا فیصلہ!

Source: S.O. News Service | Published on 27th July 2020, 8:34 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،27؍جولائی(ایس او نیوز؍ایجنسی) حکومت ہند کے ذریعہ 59 چینی ایپس پر پابندی عائد کرنے کے تقریباً ایک مہینے بعد مزید 47 چینی ایپس پر پابندی عائد کی گئی ہے۔ جن تازہ ایپس پر پابندی حکومت ہند نے عائد کی ہے، اس کے بارے میں بتایا جاتا ہے کہ پہلے جن ایپس پر پابندی عائد کی گئی تھی اس کے کلون یعنی عکس ہیں۔ تازہ پابندی سے متعلق جانکاری میڈیا ذرائع سے موصول ہوئی ہے اور اس طرح دیکھا جائے تو چین کو ہندوستان نے ایک بار پھر زبردست جھٹکا دیا ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ تازہ پابندی سے متعلق فہرست جلد جاری کی جائے گی۔

ایک سرکاری ذرائع کے حوالےسے خبر رساں ادارہ آئی اے این ایس نے بتایا کہ پابندی عائد کیے جانے والے ایپس پہلے سے پابندی عائد کیے گئے ایپس کے کلون کی شکل میں پائے گئے ہیں۔ ان نئے ایپس پر پابندی کی بات الیکٹرانکس اور انفارمیشن ٹیکنالوجی وزارت کے ذریعہ 59 ممنوعہ ایپ کے احکامات پر سختی سے عمل کرنے یا خلاف ورزی کے معاملے میں سنگین کارروائی کرنے کے لیے سامنے آئی۔ وزارت نے متعلقہ سبھی کمپنیوں کو خط لکھا ہے اور کہا ہے کہ بالواسطہ یا بلاواسطہ طور سے ایپ دستیاب کرانا آئی ٹی ایکٹ اور دیگر قوانین کی خلاف ورزی ہے۔

ایک رپورٹ کے مطابق حکومت ہند نے 275 چینی موبائل ایپ کی بھی فہرست تیار کیا ہے اور ان کی جانچ کی جا رہی ہے۔ ان میں پب جی گیم، جلی، کیپ کٹ، فیس یو، می ٹو، ایل بی ای ٹیک، پرفیکٹ کارپ، سینا کارپ، نیٹیز گیمس، علی ایکسپریس، ریسو اور یولائک جیسے ایپ شامل ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

بالاسبرامنیم اس ملک کے موسیقی اورلسانی ثقافت کی ایک عمدہ مثال تھے: سونیا گاندھی

کانگریس  کی  چیئرپرسن سونیا گاندھی نے موسیقی کی دنیا کی ایک عظیم ہستی بالاسبرامنیم کے انتقال پراپنے گہرے رنج  وغم  کا اظہار کرتےہوئے کہا ہے کہ وہ ملک کی  موسیقی اور لسانی  ثقافت کے عمدہ مثال تھے اور ان کے نہیں رہنے  سے آرٹ اور کلچرل کی دنیا پھیکی پڑگئی ہے۔

الطاف بخاری کا راجوری کے تین متاثرہ کنبوں کو معقول معاوضہ و نوکریاں فراہم کرنے کا مطالبہ

اپنی پارٹی کے صدر سید محمد الطاف بخاری نے کہا ہے کہ پولیس کی فارنسک رپورٹ میں امشی پورہ شوپیاں انکاؤنٹر میں ہلاک ہونے والے راجوری ضلع کے 3 مقتول مزدوروں کی شناخت کی تصدیق سے قانون کے تحت سزا یقینی ہے