ملک میں آسام کے بعد چھتیس گڑھ میں سب سے کم بے روزگاری کی شرح

Source: S.O. News Service | Published on 18th October 2020, 10:36 PM | ملکی خبریں |

 

نئی دہلی،18؍اکتوبر(ایس او نیوز؍ایجنسی) چھتیس گڑھ میں بے روزگار کی شرح ستمبر 2020 میں کم ہوکر دو فیصد رہ گئی ہے، جو قومی سطح پر ملک میں بے روزگاری کی شرح 608 فیصد سے کافی کم ہے۔ ملک میں شہری علاقوں میں یہ شرح 7.9 فیصد اور  دیہی علاقوں میں 6.3 فیصد رہی۔

سینٹر فار مانیٹرنگ انڈین اکانومک (سی ایم آئی ای)کی جانب سے جاری بے روزگاری کی شرح کے تازہ اعداد و شمار کے مطابق بے روزگار کی شرح آسام میں 1.2 فیصد کے بعد چھتیس گڑھ میں سب سئ زیادہ دو فیصد ہے جو ملک کے بڑے اور ترقی یافتہ ریاستوں سے کافی کم ہے۔

اعداد و شمار کے مطابق راجستھان میں بے روزگاری کی شرح 15.3،دلی میں 12.2،بہار میں 11.9،ہریانہ میں 19.1، پنجاب میں 9.6،مہاراشٹر میں 4.5، مگربی بنگال میں 9.3،اترپردیش میں 4.2،جھارکھنڈ میں 8.2 اور اوڈیشہ میں 2.1 فیصد ہے۔

واضح رہے کہ چھتیس گڑھ حکومت کی جانب سے اٹھائے گئے مختلف اقدامات کے سبب ریاست میں صنعتوں سمیت زراعت کے شعبے میں سرگرمیاں تیزی سے چل رہی ہیں،جس کی وجہ سے روزگار کے مواقعوں میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے اور بے روزگاری کی شرح کم ہو رہی ہے۔
اس سے قبل چھتیس گڑھ میں بے روزگاری کی شرح جون میں 14.4 سے کم ہوکر جولائی میں نو فیصد ہوگئی تھی۔ بھوپش بگھیل حکومت کے فیصلوں کی وجہ سے ریاست کے لوگوں کو کورونا دور میں بھی معاشی سرگرمیوں سے مربوط رکھا گیا تھا۔ صنعتی سرگرمیاں اپریل کے آخری ہفتے سے یہاں شروع ہوگئیں۔

ایک نظر اس پر بھی

جموں وکشمیر پولس کی اپیل؛ بندوق اٹھانے والے بچے بندوق چھوڑ دیں، ان کی ہر ممکن مدد کی جائے گی

جموں و کشمیر پولیس کے سربراہ دلباغ سنگھ نے ملی ٹینسی کا راستہ اختیار کرنے والے مقامی نوجوانوں سے قومی دھارے میں واپس لوٹنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہمارے جن بچوں نے غلط راستہ اختیار کیا ہے اگر وہ واپس آئیں گے تو انہیں کسی طرح کا کوئی نقصان نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ ان بچوں کی ...

کیا بہار این ڈی اے میں سب کچھ ٹھیک نہیں؟ نتیش کی آبادی کے حساب سے ریزرویشن کی مانگ پر بی جے پی غیر متفق

بہار انتخابات میں این ڈی اے میں سب کچھ ٹھیک ٹھاک نہیں چل رہا ہے۔ اس کی مثال اس وقت نظر آئی جب وزیر اعلیٰ نتیش کمار نے ایک انتخابی ریلی سے مطالبہ کیا کہ ریزرویشن طبقہ کی آبادی کے حساب سے ہونا چاہیے،

ہندوستان میں کورونا کے نئے کیسز کی تعداد پھر 50 ہزار سے کم، فعال کیسز میں لگاتار کمی

ملک میں لگاتار چھٹے دن کورونا وائرس کے نئے کیسز 50000 سے بھی کم رپورٹ ہوئے ہیں اور اس جان لیوا وبا سے شفایاب ہونے والے مریضوں کی تعداد زیادہ رہنے سے اموات اور ایکٹیو کیسز کی شرح میں کمی آرہی ہے۔