سہاراگروپ کے ساتھ تبادلہ خیال جاری، حکومت کاروائی کرسکتی ہے:سشیل کمارمودی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 22nd July 2019, 10:50 PM | ملکی خبریں |

پٹنہ،22/جولائی (ایس او نیوز/ آئی این ایس انڈیا) بہار کے نائب وزیراعلیٰ سشیل کمار مودی نے آج کہاکہ سہارا انڈیا گروپ اگر جمع کنند وں کے پیسے واپس نہیں کرتا ہے توریاستی حکومت اس کے خلاف بہار جمع کنندوں کے مفاد کے تحفظ قانون کے تحت کاروائی کرے گی۔ مسٹر مودی آج اسمبلی میں راشٹریہ جنتادل (آرجے ڈی) کے کمار سروجیت کے سوال کے جواب میں کہاکہ سہارا گروپ کی تین سوسائٹی جمع کنندوں سے سرمایہ کاری کے لیے رقم حاصل کرتی ہے۔ ان تینوں سوسائٹی کا رجسٹریشن حکومت ہند سے ہے۔ سرمایہ کاروں سے جمع حاصل کرنا اور رقم کی ادائیگی ان سوسائٹیوں کا ہی فریضہ ہے۔ اس میں تیسرے فریق کا کردار نہیں ہوتاہے۔ اس کے باوجود بہار حکومت نے اپنی سطح سے بھی سرمایہ کاروں کی جمع پونجی واپس کرانے کیلئے کوشش کر رہی ہے۔ نائب وزیراعلیٰ نے کہاکہ سہار ا کے خلاف مچیور رقم کی ادائیگی سے متعلق میں قریب چھ ہزار شکایتیں پوری ریاست سے موصول ہوئی ہیں جس میں سے 2503 کی ہی تکمیل ہوئی ہے۔ پٹنہ ضلع میں سب سے زیادہ 3556شکایتیں موصول ہوئی ہیں جن میں سے 1982 معاملوں میں اٹھارہ کروڑ 36 لاکھ 51 ہزار 566 روپے کی ادائیگی کی جاچکی ہے۔ انہوں نے کہاکہ سہارا انڈیا کے نمائندوں کے ساتھ مسلسل جائزہ میٹنگ کی جارہی ہے۔ محکمہ جاتی سطح پر بھی جائزہ لیاجارہاہے۔ مسٹر مودی نے کہاکہ جمع کنندوں کو ادائیگی کرانے کی کوشش کی جارہی ہے۔ ادائیگی نہیں ہونے کی صورت میں سہارا انڈیا کمپنی کے خلاف بہار جمع کنندوں کے مفاد کا تحفظ ایکٹ 2002 (ترمیم شدہ) ضابطہ 2013 اور 2017 کے تحت کاروائی کرنے کیلئے سبھی ضلع مجسٹریٹوں کو ہدایت دی گئی ہے۔ 
 

ایک نظر اس پر بھی