بہار انتخاب: پپو یادو کا انتخابی منشور جاری

Source: S.O. News Service | Published on 24th September 2020, 9:17 PM | ملکی خبریں |

پٹنہ،24؍ستمبر (ایس او نیوز؍ایجنسی) بہار اسمبلی انتخاب کو لے کر ریاست کی چھوٹی بڑی سبھی پارٹیوں میں سرگرمیاں تیز ہو گئی ہیں۔ اس درمیان جن ادھیکار پارٹی (جاپ) کے سربراہ پپو یادو نے اپنی پارٹی کا انتخابی منشور بھی جاری کر دیا ہے۔ انھوں نے اس کو 'پرتیگیا پتر' نام دیا ہے۔ اس موقع پر پپو یادو نے کہا کہ "آج پہلی مرتبہ راج نیتی شاستر نہیں سماج شاستر کی شکل میں پرتیگیا پتر لایا گیا ہے۔ بہار کو 30 سالوں تک دو بھائیوں نے لوٹا ہے، اب ایک موقع مجھے دیجیے۔"

پپو یادو نے اپنی بات آگے بڑھاتے ہوئے کہا کہ "آج ایک خادم اور بہار کے بیٹے کی حیثیت سے میں ایک مدت کار مانگ رہا ہوں۔ پہلی بار فاروڈ، بیک ورڈ، ہندو، مسلمان، دلت، مہادلت جیسے الفاظ کو بہار سے اکھاڑنے کا کام اس 'پرتیگیا پتر' کے ذریعہ سے کیا ہے۔" انھوں نے اپنے انتخابی منشور میں کئی وعدے کیے ہیں جو انتہائی پرکشش بھی ہیں۔ اس میں وعدہ کیا گیا ہے کہ سوشانت سنگھ راجپوت کے نام پر فلم سٹی کی تعمیر کی جائے گی۔ ساتھ ہی پپو یادو نے کہا کہ "آج اگر بہار کے باصلاحیت نوجوان دوسری ریاستوں میں نظر انداز کیے جا رہے ہیں تو اس کی وجہ بہار میں کھیل اور تفریح کے لیے بنیادی ڈھانچہ کی کمی ہے۔ ہماری حکومت ہر ضلع میں کھیل اسٹیڈیم بھی بنائے گی۔"

جن ادھیکار پارٹی کے ذریعہ بہار کی موجودہ صورت حال کو بدلنے کا عزم ظاہر کرتے ہوئے پپو یادو نے اعلان کیا کہ ان کی حکومت بننے پر سبھی طبقہ کو یکساں حق دیا جائے گا اور سبھی طبقات سے ایک ایک نائب وزیر اعلیٰ بنایا جائے گا۔ طلبا کے تعلق سے بات کرتے ہوئے پپو یادو نے کہا کہ انٹر کا امتحان اول درجہ سے پاس کرنے والے طلبا کو موٹر سائیکل اور طالبات کو اسکوٹی دینے کا انتظام کیا جائے گا۔

ایک نظر اس پر بھی

دہلی تشدد: عمر خالد نے عدالت میں بیان کیا اپنا درد، کہا 'کسی سے ملنے تک نہیں دیا جا رہا'

 دہلی تشدد معاملہ میں گرفتار عمر خالد اس وقت عدالتی حراست میں ہیں۔ جمعرات کے روز انھیں دہلی ہائی کورٹ میں پیش کیا گیا تھا جہاں انھوں نے پولس پر الزام عائد کیا ہے کہ انھیں کسی سے ملنے کی اجازت نہیں دی جا رہی۔