پی ایم مودی پر بنی بایوپک فلم پر پابندی جاری، سپریم کورٹ نے کہا، ہم اس معاملے میں دخل نہیں دیں گے

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 26th April 2019, 10:30 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی: 26 /اپریل(ایس اونیوز /آئی این ایس انڈیا) وزیر اعظم مودی پر بنی بایوپک فلم پر روک جاری رہے گی۔انتخابات کے دوران فلم کے ٹریلر دکھانے پر بھی پابندی رہے گی۔سپریم کورٹ نے فلم پروڈیوسرکی عرضی مسترد کر دی ہے۔الیکشن کمیشن کی پابندی کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کیا تھا۔ سپریم کورٹ نے الیکشن کمیشن کی پابندی کے فیصلے پر مہر لگائی ہے۔کورٹ نے کہا ہم اس معاملے میں دخل نہیں دیں گے۔ درخواست گزار کا کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن کی طرف سے لگائی گئی پابندی اظہار رائے کی آزادی کے بنیادی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔الیکشن کمیشن کے پابندی لگانے کے فیصلے کو چیلنج دینے والی درخواست پر سپریم کورٹ نے سماعت کی۔ حالانکہ الیکشن کمیشن نے اس بات کو ایک بار پھر دہرایا ہے کہ لوک سبھا انتخابات کے دوران وزیر اعظم نریندر مودی پر مبنی فلم کی ریلیز پر پابندی لگانے کا اس کا فیصلہ صحیح اور درست ہے۔ان کا خیال ہے کہ اگر انتخابات کے دوران اس فلم کو ریلیز کیا گیا تو ایک خاص سیاسی جماعت کو اس کا بھرپور فائدہ ملے گا۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اس کے پیش نظر کمیشن کا یہ فیصلہ صحیح ہے کہ 19 مئی کولوک سبھا انتخابات کے آخری مرحلے کی ووٹنگ کے بعد فلم کو ریلیز کیا جائے۔

ایک نظر اس پر بھی

وزیراعظم مودی نے کابینہ سمیت سونپا صدرجمہوریہ کو استعفیٰ، 30 مئی کو دوبارہ حلف لینےکا امکان

لوک سبھا الیکشن کے نتائج کے بعد جمعہ کی شام نریندرمودی نے وزیراعظم عہدہ سے استعفیٰ دے دیا۔ ان کے ساتھ  ہی سبھی وزرا نے بھی صدرجمہوریہ کواپنا استعفیٰ سونپا۔ صدر جمہوریہ نےاستعفیٰ منظورکرتےہوئےسبھی سے نئی حکومت کی تشکیل تک کام کاج سنبھالنےکی اپیل کی، جسے وزیراعظم نےقبول ...

نوجوت سنگھ سدھوکی مشکلوں میں اضافہ، امریندر سنگھ نے کابینہ سے باہرکرنے کے لئے راہل گاندھی سے کیا مطالبہ

لوک سبھا الیکشن میں زبردست شکست کا سامنا کرنے والی کانگریس میں اب اندرونی انتشار کھل کرباہرآنے لگی ہے۔ پہلےسے الزام جھیل رہے نوجوت سنگھ سدھو کی مشکلوں میں اضافہ ہونےلگا ہے۔ اب نوجوت سنگھ کوکابینہ سےہٹانےکی قواعد نے زورپکڑلیا ہے۔

اعظم گڑھ میں ہارنے کے بعد نروہوا نے اکھلیش یادو پر کسا طنز، لکھا، آئے تو مودی ہی

بھوجپوری سپر اسٹار نروہوا (دنیش لال یادو) نے لوک سبھا انتخابات کے دوران سیاست میں ڈبیو کیا تھا،وہ بی جے پی کے ٹکٹ پر یوپی کی ہائی پروفائل سیٹ اعظم گڑھ سے انتخابی میدان میں اترے تھے لیکن اترپردیش کے سابق وزیر اعلی اکھلیش یادو کے سامنے نروہا ٹک نہیں پائے۔