بی جے پی چھوڑ ترنمول کا دامن تھامنے والے بابل سپریو نے لوک سبھا رکنیت سے دیا استعفیٰ

Source: S.O. News Service | Published on 20th October 2021, 11:10 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی ،20؍اکتوبر (ایس او نیوز؍ایجنسی)   بی جے پی کے سابق لیڈر بابل سپریو نے منگل کے روز لوک سبھا کی رکنیت سے باضابطہ استعفیٰ دے دیا۔ بابل سپریو نے ایک مہینے پہلے ہی بی جے پی چھوڑ کر ترنمول کانگریس کی رکنیت اختیار کی تھی۔ آج انھوں نے لوک سبھا اسپیکر اوم برلا سے ملاقات کر استعفیٰ نامہ سونپ دیا۔ لوک سبھا اسپیکر سے ملاقات کے بعد انھوں نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ’’میرا دل بھاری ہے کیونکہ میں نے اپنی سیاسی زندگی بی جے پی سے شروع کی تھی۔ میں وزیر اعظم، پارٹی صدر اور امت شاہ کا شکریہ ادا کرتا ہوں۔ انھوں نے مجھ میں بھروسہ دکھایا۔‘‘ انھوں نے مزید کہا کہ ’’میں نے پوری طرح سے سیاست چھوڑ دی تھی۔ میں نے سوچا کہ اگر میں پارٹی کا حصہ نہیں ہوں تو مجھے سیٹ نہیں رکھنی چاہیے۔‘‘

واضح رہے کہ بی جے پی کے ساتھ سال 2014 میں سیاسی سفر کا آغاز کرنے والے بابل سپریو نے 18 ستمبر کو مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی کی قیادت والی ترنمول کانگریس جوائن کر لی تھی۔ ٹی ایم سی جوائن کرتے ہوئے انھوں نے کہا تھا ’’مجھے ایک بڑا موقع دیا گیا ہے۔ جب میں نے ٹی ایم سی جوائن کر لی ہے تو ایسے میں آسنسول سیٹ سے رکن پارلیمنٹ بنے رہنے کا کوئی مطلب نہیں ہے۔ میں آسنسول کی وجہ سے سیاست میں آیا۔ میں جہاں تک ہو پائے گا اپنے پارلیمانی حلقہ کے لیے کام کروں گا۔‘‘

ایک نظر اس پر بھی

’بی جے پی کے لیے ریڈ الرٹ ہے مہنگائی‘، پی ایم مودی کے ’لال ٹوپی‘ والے بیان پر اکھلیش کا جوابی حملہ

 سماجو ادی پارٹی (ایس پی) سربراہ اکھلیش یادو نے ایس پی کی ’لال ٹوپی‘ کو اترپردیش کے لئے خطرے کی گھنٹی (ریڈ الرٹ) بتانے والے وزیر اعظم نریندر مودی کے بیان پر جوابی حملہ کرتے ہوئے منگل کو کہا کہ بی جے پی کے لئے مہنگائی اور بے روزگاری ’ریڈ الرٹ‘ ہے۔

اومیکرون گائیڈلائن: ’ایئر سووِدھا پورٹل‘ نے 2.5 لاکھ سے زیادہ بین الاقوامی مسافروں کی مدد کی

 کورونا وائرس کی نئی شکل اومیکرون کے ابھرتے بحران کے پیش نظر حکومت نے بین الاقوامی مسافروں کے لئے ہوائی جہاز میں سوار ہونے سے پہلے ان کی صحت کی حالت کی رپورٹ اور ساتھ میں کچھ دیگر کاغذات 'ایئر سوودھا' پورٹل پلیٹنگ کو لازمی کر دیا ہے۔

بھیما کوریگاؤں کیس: سپریم کورٹ سے سدھا بھاردواج کو بڑی راحت ؛ ضمانت کو چیلنج کرنے والی این آئی اے کی عرضی خارج

 بھیما کوریگاؤں کیس میں کارکن سدھا بھاردواج کو بڑی راحت ملی ہے۔ سپریم کورٹ نے ان کی ضمانت کو برقرار رکھتے ہوئے سدھا بھاردواج کی ضمانت کے خلاف این آئی اے کی عرضی کو خارج کر دیا ہے اور پہلے سے طے شدہ ضمانت دینے کے بامبے ہائی کورٹ کے فیصلے کو برقرار رکھا ہے۔اس کے ساتھ ہی سودھا کی 8 ...