اتر پردیش: بچی کی خودکشی پر اہل خانہ نے کیا ہنگامہ، پولیس پرلگائے سنگین الزامات

Source: S.O. News Service | Published on 9th August 2020, 10:15 PM | ملکی خبریں |

جالون،9/اگست (آئی این ایس انڈیا) اترپردیش کے جالون میں پولیس کی کارروائی سے پریشان ایک نوجوان خاتون نے خود کو پھانسی لگا کر خودکشی کرلی۔ جب لڑکی کی خودکشی کا علم اہل خانہ کو ہوا تو اس نے کوتوالی میں ہنگامہ کیا۔

اہل خانہ نے پولیس افسر پر پٹائی کرنے کا الزام عائد کیا ہے اور پولیس اہلکار کے خلاف کارروائی کا مطالبہ بھی کیا ہے۔ اہل خانہ کا ہنگامہ دیکھ کر سی او موقع پر پہنچ گئے اور شکایت پر افسر کے خلاف تحقیقات کا بھی یقین دلایا۔

معاملہ جالون کے علاقے ارئی کوتوالی کے علاقے نیا رام نگر علاقے کا ہے۔ جمعہ کی رات ایک 22 سالہ لڑکی نے خود کو پھانسی لگاکر خودکشی کرلی۔ ہفتہ کی صبح جب اہل خانہ نے دیکھا تو وہ فورااسپتال لے گئے جہاں ڈاکٹروں نے اسے مردہ قرار دے دیا۔

موت کے بعد اہل خانہ مشتعل ہوگئے اور پولیس اسٹیشن کا محاصرہ کرتے ہوئے پولیس کے خلاف احتجاج کیا۔ پولیس کے خلاف احتجاج کرنے والے اہل خانہ کا کہنا تھا کہ جمعہ کی سہ پہر میں خاتون بازار گئی تھی، جہاں بلڈاؤ چوک کے کچھ دوکانداروں نے اس کو چوری کا الزام لگا کر اسے دو سہیلیوں کے ساتھ پکڑ لیا۔ دکانداروں نے پولیس یوگیش پاٹھک کو فون کیا اور لڑکیوں کو ان کے حوالے کردیا۔ پولیس خاتون اور اس کی دو سہیلیوں کو تھانے لے گئی تھی۔ تفتیش کے بعد ان تینوں لڑکیوں کوان کے اہلخانہ کے حوالے کردیا گیاتھا۔لواحقین نے خودکشی کی وجہ چوری کاالزام لگانا بتایا، اہل خانہ نے بتایا کہ کوتوالی میں تعینات پولیس نے لڑکی کی پٹائی بھی کی تھی جبکہ خاتون کو صرف خاتون پولیس کو لے جانے کا حق ہے لیکن پولیس پاٹھک نے لڑکی کی پٹائی بھی کی تھی۔

ایک نظر اس پر بھی

ایردوآن نے یو این میں اٹھایا مسئلہ کشمیر، ’اندرونی معاملات میں دخل نہ دے ترکی‘ انڈیا کی تاکید

 جموں و کشمیر کے حوالہ سے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں ترکی کے صدر رجب طیب اردوآن کے بیان پر اقوام متحدہ میں ہندوستان کے مستقل نمائندہ ٹی ایس ترومورتی نے سخت احتجاج کرتے ہوئے کہا ہے کہ ترکی کو دوسرے ممالک کی خودمختاری کا احترام کرنا سیکھنا چاہئے۔

ممبئی میں طوفانی بارش سے سیلابی صورتحال، عام زندگی مفلوج، متعدد رہائشی کالونیاں زیر آب

ملک کی تجارتی راجدھانی ممبئی میں گزشتہ شب سے جاری بھاری بارش کی وجہ سے سیلابی صورتحال پیدا ہوگئی ہے۔ ستمبر کے مہینے میں اس طرح کی بارش نے ایک بار پھر شہر کی عام زندگی کو مفلوج کرکے رکھ دیا ہے۔