اوپیندر کشواہا کا حملہ، اتنی بے عزتی کے بعد جیت بھی گئے تو کیا وزیر اعظم بن جائیں گے؟

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 5th December 2018, 1:53 AM | ملکی خبریں |

پٹنہ،04؍ دسمبر (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) قومی جمہوری اتحاد (این ڈی اے) کے اتحادیوں کے درمیان تنازعہ رکنے کا نام نہیں لے رہا ہے۔مرکزی وزیر اور قومی لوک سمتا پارٹی (رالوسپا) کے سربراہ اوپیندر کشواہا نے پٹنہ یونیورسٹی طلبہ یونین انتخابات کو لے کر بالواسطہ جے ڈی یو نائب صدر پرشانت کشور پر نشانہ لگایا ہے۔

کشواہا نے منگل کو ٹویٹ کرکے وزیر اعلی نتیش کمار کو بھی طلبہ یونین انتخابات میں سیاسی جماعتوں کے درمیان ہوئے گھمسان کے لئے آڑے ہاتھوں لیا اور کہا کہ آنے والی نسل کس طرح یقین کرے گی کہ آپ بھی اسی یونیورسٹی کے طالب علم ہیں۔کشواہا نے آگے لکھاکہ جناب! طلبہ یونین انتخابات کو عزت کا سوال بنا کر پولیس، انتظامیہ، یونیورسٹی سب کو بدنام کرا دیا۔اتنی فضیحت کراکر جیت بھی گئے تو کیا وزیر اعظم بن جائیں گے۔

ایک اور ٹویٹ میں رالوسپا صدر نے کہا کہ طلبہ یونین کا انتخاب طالب علموں کا ہے۔پٹنہ یونیورسٹی کے طالب علم۔طالبات معصوم اور حساس ہیں، انہیں بخش دیں۔طالب علموں کو سیاسی مفاد میں گمراہ کرکے ان کے مستقبل سے کھلواڑ نہ کریں۔طالب علموں کے درمیان نظریاتی ثنویت کو مجرمانہ رنگ دینا ٹھیک نہیں۔

انہوں نے کہاکہ معزز وزیر اعلی صاحب، آنے والی نسل کس طرح یقین کرے گی کہ آپ بھی اسی یونیورسٹی کے طالب علم ہیں۔ بتا دیں کہ دو دن پہلے یونیورسٹی طلبہ یونین انتخابات کے مہم کے دوران اکھل بھارتیہ ودیارتھی پریشد (اے بی وی پی) اور جے ڈی یو کے کارکنوں کے درمیان مارپیٹ ہوئی تھی۔اس میں جے ڈی یو کا ایک طالب علم رہنما زخمی ہو گیا۔الزام ہے کہ اس معاملے میں پٹنہ پولیس نے اے بی وی پی کے ریاستی دفتر میں کئی بار چھاپہ ماری کی تھی۔اس کے بعد بی جے پی اور جے ڈی یو کے لیڈر آمنے سامنے آگئے۔

ایک نظر اس پر بھی

شہیدوں کے گھر ’درد کے دریا کا سیلاب‘ تھا اور مودی دریا میں شوٹنگ کر رہے تھے: راہل گاندھی

کانگریس صدر راہل گاندھی نے پلوامہ دہشت گردانہ حملے والے دن وزیر اعظم نریندر مودی کے ایک چینل کے لئے فلم کی شوٹنگ کرنے سے متعلق خبروں کو لے کر جمعہ کو ان پر حملہ بولا اور الزام لگایا کہ جب شہیدوں کے گھر دردکے دریا کا سیلاب تھا تو پرائم ٹائم منسٹر 'ہنستے ہوئے دریا میں شوٹنگ کر رہے ...

عظیم اتحادملک کے لیے اچھانہیں،اپوزیشن کے پاس کوئی نظریہ اورکوئی لیڈرنہیں ہے، امت شاہ کوپھرمہاگٹھ بندھن سے شکایت،کانگریس اورلیفٹ کونشانہ بنایا

جھک کرلوجپا،شیوسینا،جدیواورڈی ایم کے کے ساتھ اتحادکرنے والی بی جے پی صدر امت شاہ نے جمعہ کو اپوزیشن پارٹیوں کے مجوزہ مہاگٹھ بندھن پر حملہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ ملک کے لیے اچھا نہیں ہے۔

بہار کے سابق وزیرالیاس حسین کو 22 سال پرانے کول تار گھوٹالے میں 5 سال کی سزا

مرکزی تفتیشی بیورو(سی بی آئی) کی خصوصی عدالت نے جمعہ کو کول تار گھوٹالے میں بہارکے سابق وزیرالیاس حسین اورچاردیگر کو پانچ سال قید کی سزا سنائی اور ایک ٹھیکیدار کو اس معاملے میں سات سال کی سزا سنائی۔