ہم تو یونہی لمبے لمبے وعدے کر رہے تھے، لوگوں نے سچ سمجھ لیا؛ نتن گڈکری نے ٹی وی شو پر بی جے پی کی وعدہ فراموشی کا پردہ فاش کر دیا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th October 2018, 12:28 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی، 10؍اکتوبر (ایس او نیوز؍ایجنسی) مرکز کی مودی حکومت کا پہلا سال ختم ہوتے ہی لوگوں کی زبان پر آنے لگا تھا کہ اقتدار میں آنے کے لیے بی جے پی اور پی ایم مودی نے جتنے بھی وعدے کیے تھے وہ سب جھوٹے اور محض جملے تھے۔ دراصل ’جملہ‘ لفظ تو خود بی جے پی صدر امت شاہ نے ہی استعمال کیا تھا جب ان سے پوچھا گیا تھا کہ وعدہ کے مطابق لوگوں کے اکاؤنٹ میں 15-15 لاکھ روپے کب آئیں گے۔ اور اب مرکزی وزیر نتن گڈکری نے ان سے آگے بڑھتے ہوئے پوری قلعی ہی کھول کر رکھ دی ہے۔

دراصل نتن گڈکری نے ایک مراٹھی چینل سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ’’انھیں تو کبھی امید ہی نہیں تھی کہ وہ اقتدار میں آجائیں گے۔ پھر لوگوں نے کہا کہ لمبے لمبے وعدے کرنا شروع کر دو۔ کون سا ہم اقتدار میں آنے والے تھے جنھیں پورا کرنا تھا۔‘‘ انھوں نے مزید کہا کہ ’’لوگوں نے ہمارے وعدوں کو سچ سمجھ کر ووٹ دیا اور ہمیں برسراقتدار سونپ دیا۔‘‘ یہ بات کہہ کر نتن گڈکری زور سے ہنس پڑتے ہیں۔ پھر جب ان سے یہ پوچھا گیا کہ اب جب لوگ پرانے وعدوں کو یاد دلاتے ہیں تو وہ کیا کرتے ہیں؟ اس پر نتن گڈکری کا جواب تھا کہ ’’ہم ہنس دیتے ہیں اور آگے بڑھ جاتے ہیں۔‘‘

مراٹھی چینل سے ہوئی اس بات چیت کے ویڈیو کا ایک چھوٹا سا حصہ کانگریس نے ٹوئٹ کیا ہے۔ اس ویڈیو کے ساتھ کانگریس نے لکھا ہے کہ ’’نتن گڈکری جی ہمارے ان نظریات سے اتفاق رکھتے ہیں کہ مودی حکومت جملوں اور جھوٹے وعدوں کی بنیاد پر قائم ہوئی ہے۔‘‘

ایک نظر اس پر بھی

مودی ،خواتین کے حامی یا اکبرکے طرفدار؟ جنسی استحصال کے الزام کے خلاف مقدمہ درج کرانے پر کانگریس نے وزیراعظم کو گھیرا

کانگریس نے وزیر مملکت برائے امور خارجہ ایم جے اکبر پر لگنے والے جنسی استحصال کے الزامات کو انتہائی سنگین قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ ملک کی خواتین کے احترام کا معاملہ ہے اور وزیر اعظم نریندر مودی کو اس پر خاموشی توڑکر اپنا رخ واضح کرناچاہیے۔

دہلی این سی آر میں فضائی آلودگی سے نمٹنے کے لئے ہنگامی منصوبہ لاگو

دہلی این سی آر میں فضائی آلودگی سے نمٹنے کے لئے ایک ہنگامی منصوبہ پیر کو لاگو کیا گیا ہے جس میں مشینوں سے سڑکوں کی صفائی اور اس علاقے کے بھیڑ بھاڑ والے علاقوں میں گاڑیوں کے ہموار ٹریفک کے لئے ٹریفک پولیس کی تعیناتی جیسے اقدامات شامل ہوں گے۔