تلنگانہ میں تین سیٹ دیے جانے پر سی پی آئی ناراض

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th November 2018, 11:38 PM | ملکی خبریں |

حیدرآباد،10؍ نومبر (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) تلنگانہ میں آئندہ اسمبلی انتخابات میں سی پی آئی کو تین سیٹ دئیے جانے کے کانگریس کے یکطرفہ اعلان پر بایاں محاذنے عدم اطمینان کا اظہار کیا ہے۔پارٹی کی ایک ریلیز میں بتایا گیا کہ سی پی آئی کی ریاستی مجلس عاملہ کے اجلاس میں جمعرات کو کانگریس کی طرف سے کئے گئے یکطرفہ اعلان پر عدم اطمینان ظاہر کیا گیا۔اسمبلی انتخابات کے لئے اپوزیشن پارٹیوں کے مہا گٹھ بندھن میں شریک سی پی آئی نے تین سیٹ دیے جانے پر ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے اسے پارٹی کے تئیں ناانصافی کہا۔سی پی آئی کے ریاستی سیکرٹری سی وینکٹ ریڈی نے بتایا کہ ان کی پارٹی نے کم از کم پانچ سیٹوں کے لئے کہا تھا۔صرف تین سیٹ دینا ناانصافی ہے۔وینکٹ ریڈی نے کہا کہ ان کی پارٹی نے کانگریس کے سینئر لیڈر کے جنا ریڈی کو اپنی شکایت کے بارے میں بتایا ہے جس پر انہوں نے پارٹی اعلی کمان کے سامنے معاملے کو رکھنے کا وعدہ کیا ہے۔
 

ایک نظر اس پر بھی

جے پی سی سے جانچ کرانے کا راستہ ا بھی کھلا ہے، عام آدمی پارٹی نے کہا،عوام کی عدالت اورپارلیمنٹ میں جواب دیناہوگا،بدعنوانی کے الزام پرقائم

آپ کے راجیہ سبھا رکن سنجے سنگھ نے کہا ہے کہ رافیل معاملے میں جمعہ کو آئے سپریم کورٹ کے فیصلے کے باوجود متحدہ پارلیمانی کمیٹی (جے پی سی) سے اس معاملے کی جانچ پڑتال کرنے کا اراستہ اب بھی کھلا ہے۔

رافیل پر سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد ، راہل گاندھی معافی مانگیں: بی جے پی

فرانس سے 36 لڑاکا طیارے کی خریداری کے معاملے میں بدعنوانی کے الزامات پر سپریم کورٹ کی کلین چٹ ملنے کے بعد کانگریس پر نشانہ لگاتے ہوئے بی جے پی نے جمعہ کو کہا کہ کانگریس پارٹی اور اس کے چیئرمین راہل گاندھی ملک کو گمراہ کرنے کیلئے معافی مانگیں۔