رافیل ڈیل میں نیا انکشاف، پی ایم او کا دخل تھا قوانین کے خلاف

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th February 2019, 12:29 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،10 ؍فروری (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) وزارت دفاع کے ایک سابق افسر نے رافیل پر حکومت کے رخ کو چیلنج کیا ہے۔دراصل’ دی ہندو اخبار ‘میں چھپے ایک مضمون میں رافیل کے سودے کے لئے ہو رہی بات چیت میں وزیر اعظم کے دفتر کی دخل اندازی پر وزارت دفاع کیاعتراضات نمایاں کیاگیا تھا۔

اس کے جواب میں سودے کے لئے سربراہ نے کہا تھا کہ پی ایم اوقیمت طے کرنے میں ملوث نہیں تھا، بس خود مختاری کی ضمانت کرنے کے معاملے میں شامل تھا، لیکن رافیل سودے کے وقت وزارت دفاع کے مالی مشیر سدھانشو موہنتی کا کہنا ہے کہ دفاعی سودوں کی بات چیت میں کسی طرح کی دخل اندازی قوانین کے خلاف ہے۔آپ کو بتا دیں کہ رافیل ڈیل پر ’دی ہندو‘ کی رپورٹ سامنے آنے کے بعد یہ معاملہ پھر گرم ہو گیا ہے اور کانگریس کو اس معاملے میں حکمران بی جے پی کو گھیرنے کا ایک اور موقع مل گیا ہے۔

کانگریس صدر راہل گاندھی نے ’دی ہندو ‘کی رپورٹ سے صاف ہے کہ ہماری بات سچ ثابت ہوئی۔پی ایم مودی خود اس معاملے میں بات کر رہے تھے اور وہ گھوٹالے میں شامل ہیں۔راہل گاندھی نے کہا کہ اس خبر نے وزیر اعظم کی پول کھول دی ہے۔انہوں نے یہاں تک کہا کہ گرچہ آپ رابرٹ واڈرا اور چدمبرم کی تحقیقات کیجیے، مگر رافیل پر بھی حکومت کو جواب دینا چاہئے۔وہیں دوسری طرف، رافیل کے معاملے پر وزیر دفاع نرملا سیتا رمن نے لوک سبھا میں جواب دیا اور کانگریس پر جوابی حملہ کیا۔’دی ہندو ‘کی خبر کو سرے سے مستردکردیا۔

ایک نظر اس پر بھی

بی جے پی ایم ایل اے کو پرگیہ ٹھاکر کے بیان پر اعتراض ،اسے ’غداری‘ قرار دیا 

گورکھپور سے بی جے پی ممبر اسمبلی رادھا موہن داس اگروال نے مالیگاؤں بم دھماکوں کی ملزم اور بھوپال لوک سبھا سیٹ سے بی جے پی امیدوار پرگیہ ٹھاکر کے شہید ہیمنت کرکرے کے متعلق دیئے گئے بیان کو غداری قرار دیا ہے۔ اگروال نے جمعہ کو ایک ٹویٹ کر کہا کہ ہیمنت کرکرے دہشت گردوں سے مقابلہ ...

اکھلیش یادو ’ٹائیگر بام‘ کی طرح ہیں : مایاوتی 

اتر پردیش کی سیاست کے دو بڑے قد آور ملائم سنگھ یادو اور مایاوتی جب دہائیوں پرانی دشمنی بھلا کر مین پوری کی ریلی میں ایک ہی مشترکہ اسٹیج پر آئے تو ان کی تصاویر خوب وائرل ہوئیں دیکھی گئیں۔ دشمنی بھلا کر دونوں رہنماؤں نے اب اتر پردیش میں بی جے پی کو روکنے کی کوشش کرنے کی ایک طرح سے ...

نریندر مودی کی سیکورٹی کے پیش نظر وارانسی سیٹ پر بدلی گئی امیدواروں کی نامزدگی کی جگہ

وزیر اعظم نریندر مودی کی سیکوریٹی کے پیش نظر وارانسی پارلیمانی سیٹ کے انتخابات کیلئے نامزدگی مقام میں تبدیلی کی گئی ہے۔پہلے ضلع انتظامیہ نے ایڈمرل کورٹ میں نامزدگی کا اہتمام کیا تھا، لیکن اتوار کو نامزدگی مقام بدل کر کلکٹریٹ واقع رائفل کر دیا گیا۔انتظامیہ کے فیصلے کے بعد اب ...

ایس پی ۔ بی ایس پی کے پاس کانگریس کے ساتھ اتحاد کے علاوہ کوئی چارہ نہیں:سلمان خورشید

کانگریس کے سینئر لیڈر سلمان خورشید نے لوک سبھا انتخابات کے بعد اپنی پارٹی کے ایس پی۔بی ایس پی۔آر ایل ڈی کے ساتھ اتحاد ہونے کو ناگزیر قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ انتخابی نتائج آنے کے بعد اتر پردیش کے اس اتحاد کے پاس کوئی اور چارہ نہیں ہوگا۔اتر پردیش کی کانگریس یونٹ کے دو بار چیف رہ ...

آئی این ایل ڈی کے سابق ممبر اسمبلی راؤ بہادر نے تھاما کانگریس کا دامن، دپیندر ہڈا کی نامزدگی میں ہوں گے شامل

جنوبی ہریانہ کے قدآور لیڈر اور انیلو کے سابق ممبر اسمبلی راؤ بہادر سنگھ نے اتوار کو کانگریس پارٹی کا دامن تھام لیا۔راؤ بہادر سنگھ نے آج بتایا کہ 22 اپریل کو روہتک میں ایم پی دپیندر ہڈا کی نامزدگی کے موقع پر وہ اپنے 5000 حامیوں کے ساتھ موجود رہیں گے۔کانگریس صدر راہل گاندھی اور ...