گائے کے نام پرتشدد:وزیر اعظم کابیان محض دکھاوا مودی اگرواقعی گؤرکشاکے نام پر تشددسے فکرمندہیں توعملی قدم اٹھائیں:مولانااسرارالحق قاسمی

Source: S.O. News Service | By Sheikh Zabih | Published on 17th July 2017, 9:30 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی18جولائی(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)گؤرکشاکے نام پر جاری تشدداور دہشت گردی کے نہ تھمنے والے سلسلے پر سخت تشویش کا اظہارکرتے ہوئے معروف عالم دین اور ممبر پارلیمنٹ مولانا اسرارالحق قاسمی نے مرکزی حکومت اور بی جے پی لیڈران کی فرقہ پرستانہ پالیسی پر سخت تنقید کی اورکہاکہ حکومت ملک میں جانوروں کے نام پر انسانوں کے قتل کی خاموش حمایت کررہی ہے۔انھوں نے کل جماعتی میٹنگ میں وزیر اعظم نریندرمودی کے اس بیان کو محض دکھاواقراردیاجس میں انھوں نے گؤرکشاکے نام پر تشدد کی مذمت کی ہے اور کہاہے کہ ریاستی حکومتیں ان غیر سماجی عناصرکے خلاف سخت کارروائی کریں جوگائے کے نام پر تشددکررہے ہیں ، انھوں نے اپنے بیان میں یہ بھی کہاہے کہ اس طرح کے ماحول سے عالمی سطح پر ملک کی شبیہ خراب ہورہی ہے اوراس کی روک تھام کے لئے تمام سیاسی پارٹیوں کو آگے آناچاہئے۔

مولاناقاسمی نے وزیر اعظم کے بیان پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ اگروہ اس معاملے کے تئیں سنجیدہ ہوتے توخود عملی طورپرکوئی قدم اٹھاتے،اپنے وزیروں کوہدایات دیتے اور کم ازکم بی جے پی حکومت والی ریاستوں کوپابند کرتے لیکن پہلے توانھوں نے گؤرکشاکے نام پر پھیلنے والی دہشت گردی پر چپی سادھے رکھی اورجب گزشتہ جون میں بلبھ گڑھ کے جنید نامی بچے کا قتل ہوااور پورے ملک میں لوگوں نے اس کے خلاف احتجاج کیاتب ان کی زبان کھلی،انھوں نے اس وقت بھی صرف بیان دیاتھااور اس کے بعد حالات میں کوئی تبدیلی نہیں آئی تھی ، اسی طرح ان کے حالیہ بیان کابھی زمینی سطح پر کوئی اثرنہیں ہواہے،چنانچہ جس دن وزیر اعظم کایہ بیان آیاہے اسی دن بجرنگ دل والوں نے بلبھ گڑھ کے علاقے میں ہی ایک شخص کی پٹائی کی ہے،اسی طرح بہارکے ایک حافظ قاری گلزارکے ساتھ ٹرین میں تشددکاواقعہ بھی کل ہی رونماہواہے۔

مولاناقاسمی نے حکومت سے اپیل کی ہے کہ اگر وہ واقعی گائے کے نام پر پھیلنے والے تشدداور دہشت گردی کے رجحانات پر فکر مندہے توسخت قدم اٹھائے،تمام ریاستوں کوٹھوس ہدایات جاری کرے کہ وہ ایسے عناصر کے خلاف کڑی کارروائی کرے اور انسانی جانوں کے تحفظ کو یقینی بنائے۔

ایک نظر اس پر بھی

جموں کشمیر میں بی جے پی۔پی ڈی پی سرکار گرگئی؛ محبوبہ مفتی نے سونپا گورنر کو اپنا استعفیٰ

جموں کشمیر میں بی جے پی نے محبوبہ مفتی سرکار سے اپنی حمایت واپس لے لی ہے جس کے ساتھ ہی ریاست میں تین سالوں سے چلی آرہی گٹھ بندھن سرکار ختم ہوگئی ہے۔ بی جے پی کے سرکار سے  الگ ہونے کی اطلاع کے فوری  فوری بعد محبوبہ نے گورنر این این بوہرا  کو اپنا استعفیٰ سونپ دیا۔

ریاستی کانگریس لیڈروں کو نصیحت کرنے راہل گاندھی سے درخواست بہتر انتظامیہ کو یقینی بنانے دونوں پارٹیوں کے درمیان تال میل ضروری: ایچ ڈی کمار سوامی

ریاستی وزیراعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی نے آج دہلی میں کانگریس صدر راہل گاندھی سے ملاقات کر کے ریاست کی سیاسی صورتحال سے متعلق تبادلہ خیال کیا۔ ا س ملاقات کے دوران راہل گاندھی نے کمار سوامی کو مشورہ دیا کہ کرناٹک میں کانگریس جے ڈی ایس مخلوط حکومت کا یہ ابتدائی دور ہے۔

کسانوں کا قرضہ معاف کرنے مرکزی حکومت سے تعاون کی اپیل 85لاکھ سے زائد کسان مشکلات کا شکار ہیں ، مصیبت کی گھڑی میں ہاتھ تھامنا مرکزی و ریاستی حکومت کاکام ہے: کمار سوامی

قرض کی دلدل میں پھنسے ہوئے کسانوں کو اوپر لانے کی خاطر کئے جارہے قرضہ معاف اسکیم کو مرکزی حکومت 50فی صد امداد فراہم کرے ، اس خیال کااظہار ریاستی وزیر اعلیٰ کمار سوامی نے کیا۔

اتر پردیش میں گئو کشی کی افواہ پر مسلم نوجوان کا پیٹ پیٹ کر قتل

ملک میں گئو کشی روکنے کے نام پر غنڈہ گردی تھمنے کا نام نہیں لے رہی ہے۔ تازہ معاملہ اتر پردیش میں پلکھوا کے بچھیڑا خرد سے سامنے آیا ہے جہاں گوکشی کی افواہ پر کچھ شرپسندوں نے قاسم نامی نوجوان کو بری طرح مارا پیٹا اور قتل کر دیا۔

سکھ زائرین کی کار ٹرک سے جا ٹکرائی ایک بچہ، تین خواتین سمیت 7ہلاک 

پنجاب کے امرتسر کے پاس سموار اسپورٹس یوٹی لیٹی وہیکل کی ٹرک سے تصادم میں سات لوگ لقمہ اجل ہوگئے ۔واضح ہو کہ مہلوکین میں تین عورت سمیت ایک بچہ بھی ہے ۔ یہ تمام افرادامرتسر کے گولڈن ٹمپل کی زیارت اور پوجا ارچنا کرکے دہلی واپس آرہے تھے۔