گائے کے نام پرتشدد:وزیر اعظم کابیان محض دکھاوا مودی اگرواقعی گؤرکشاکے نام پر تشددسے فکرمندہیں توعملی قدم اٹھائیں:مولانااسرارالحق قاسمی

Source: S.O. News Service | By Sheikh Zabih | Published on 17th July 2017, 9:30 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی18جولائی(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)گؤرکشاکے نام پر جاری تشدداور دہشت گردی کے نہ تھمنے والے سلسلے پر سخت تشویش کا اظہارکرتے ہوئے معروف عالم دین اور ممبر پارلیمنٹ مولانا اسرارالحق قاسمی نے مرکزی حکومت اور بی جے پی لیڈران کی فرقہ پرستانہ پالیسی پر سخت تنقید کی اورکہاکہ حکومت ملک میں جانوروں کے نام پر انسانوں کے قتل کی خاموش حمایت کررہی ہے۔انھوں نے کل جماعتی میٹنگ میں وزیر اعظم نریندرمودی کے اس بیان کو محض دکھاواقراردیاجس میں انھوں نے گؤرکشاکے نام پر تشدد کی مذمت کی ہے اور کہاہے کہ ریاستی حکومتیں ان غیر سماجی عناصرکے خلاف سخت کارروائی کریں جوگائے کے نام پر تشددکررہے ہیں ، انھوں نے اپنے بیان میں یہ بھی کہاہے کہ اس طرح کے ماحول سے عالمی سطح پر ملک کی شبیہ خراب ہورہی ہے اوراس کی روک تھام کے لئے تمام سیاسی پارٹیوں کو آگے آناچاہئے۔

مولاناقاسمی نے وزیر اعظم کے بیان پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ اگروہ اس معاملے کے تئیں سنجیدہ ہوتے توخود عملی طورپرکوئی قدم اٹھاتے،اپنے وزیروں کوہدایات دیتے اور کم ازکم بی جے پی حکومت والی ریاستوں کوپابند کرتے لیکن پہلے توانھوں نے گؤرکشاکے نام پر پھیلنے والی دہشت گردی پر چپی سادھے رکھی اورجب گزشتہ جون میں بلبھ گڑھ کے جنید نامی بچے کا قتل ہوااور پورے ملک میں لوگوں نے اس کے خلاف احتجاج کیاتب ان کی زبان کھلی،انھوں نے اس وقت بھی صرف بیان دیاتھااور اس کے بعد حالات میں کوئی تبدیلی نہیں آئی تھی ، اسی طرح ان کے حالیہ بیان کابھی زمینی سطح پر کوئی اثرنہیں ہواہے،چنانچہ جس دن وزیر اعظم کایہ بیان آیاہے اسی دن بجرنگ دل والوں نے بلبھ گڑھ کے علاقے میں ہی ایک شخص کی پٹائی کی ہے،اسی طرح بہارکے ایک حافظ قاری گلزارکے ساتھ ٹرین میں تشددکاواقعہ بھی کل ہی رونماہواہے۔

مولاناقاسمی نے حکومت سے اپیل کی ہے کہ اگر وہ واقعی گائے کے نام پر پھیلنے والے تشدداور دہشت گردی کے رجحانات پر فکر مندہے توسخت قدم اٹھائے،تمام ریاستوں کوٹھوس ہدایات جاری کرے کہ وہ ایسے عناصر کے خلاف کڑی کارروائی کرے اور انسانی جانوں کے تحفظ کو یقینی بنائے۔

ایک نظر اس پر بھی

بہار کے بعد اب یوپی میں بی جے پی کا آپریشن؛ ایس پی اور بی ایس پی دونوں پارٹیوں کے ممکنہ اتحادکوروکنے کی ہرممکن ہوگی کوشش

 بہار میں قلعہ فتح کرنے کے بعد اب بی جے پی کا اگلا نشانہ یوپی ہوگا۔یوپی میں اپوزیشن کے ممکنہ مہاگٹھ بندھن کومنہدم کرنااب بی جے پی کی ترجیح ہے۔نتیش کمارکی حلف برداری کی تقریب کے فوراََبعدیوپی کے وزیراوربڑے لیڈرسددھارتھناتھ سنگھ نے ٹویٹ کرکے اس کا اشارہ کر دیاہے۔

یوپی اسمبلی سے ایس پی اوربی ایس پی ممبران کاواک آؤٹ

 اترپردیش قانون ساز کونسل میں آج ایس پی اوربی ایس پی ممبران نے مختلف مسائل کو لے کر ایوان سے واک آؤٹ کیاہے۔وقفہ صفرکے دوران ایس پی ارکان نے التواء کی تجویزکے ذریعے ریاست میں اساتذہ کے ایڈجسٹمنٹ کا معاملہ اٹھا۔ایس پی ارکان نے کہا کہ پچھلی ایس پی حکومت نے 12ہزار 460بی ٹی سی اساتذہ ...

لالویادوکے خاندان کے خلاف کارروائی کاسلسلہ جاری ای ڈی نے لالویادو، رابڑی،تیجسوی سمیت متعددلیڈروں پر منی لائونڈرنگ کاکیس درج

بہارمیں لالویادو خاندان پرایک اور بحران گہراگیاہے۔ رانچی اور پوری کے ہوٹلوں کو لیز پر دینے کے معاملے میں لالو، رابڑی اورتیجسوی یادو سمیت کئی لوگوں پر کیس درج کیاہے۔

ارون جیٹلی اورکے سی سی تیاگی شرد یادوکو منانے میں مصروف ،مرکزی وزارت پرڈیل ممکن؛ نتیش کمارکواسمبلی میں آج جمعہ کو ثابت کرنا ہوگا اکثریت

نتیش کمار کے مہاگٹھ بندھن چھوڑنے کے بعد بی جے پی کے ساتھ ملنے پر پارٹی کے سینئر لیڈر شرد یادو ناراض ہیں۔انہوں نے نتیش کمار سے اس فیصلے کے خلاف اپنا موقف بتا دیاہے۔جے ڈی یوکے دوسرے سینئر رہنما علی انور نے تو پارٹی کے فیصلے کے خلاف کھل کر بولا بھی ہے اور شرد یادو سے ملنے کے بعد کہا ...

28 جولائی کو بستر آئیں گے راہل گاندھی

کانگریس نائب صدر راہل گاندھی28جولائی کودوروزہ قیام پربسترپہنچیں گے۔راہل گاندھی اس دوران بہت سے پروگراموں میں شامل ہوں گے۔کانگریس جنرل سکریٹری اور چھتیس گڑھ انچارج پی ایل پنیا نے آج یہاں ایک پریس کانفرنس میں بتایاکہ گاندھی 28تاریخ کوبسترضلع کے ہیڈ کوارٹر جگدل پور پہنچیں گے۔