عام آدمی پارٹی ریزرویشن پر مودی حکومت کا ساتھ دے گی،ریزرویشن ناقابل عمل ،یشونت سنہا،راج بھراورتیجسوی یادونے جملہ قراردیا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 8th January 2019, 12:39 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی7جنوری(آئی این ایس انڈیا) مودی حکومت نے انتخابات سے پہلے بڑا داؤ چلتے ہوئے اقتصادی طور سے پسماندہ اعلیٰ ذات کو 10 فیصد ریزرویشن دینے کا فیصلہ کیاہے۔ حکومت کو اس فیصلے پر مخالف عام آدمی پارٹی کا ساتھ بھی مل گیاہے۔ دراصل حکومت کو یہ فیصلہ لاگو کروانے کے لیے آرٹیکل 15 اور 16 میں آئینی ترمیم کرنی ہوگی۔ عام آدمی پارٹی نے اس ترمیم کے لیے پارلیمنٹ میں حکومت کا ساتھ دینے کی بات کہی ہے۔ وہیں یشونت سنہا اور اوم پرکاش راج بھر نے اسے صرف ایک جملہ قرار دیاہے۔اروند کیجریوال نے ٹویٹ کر کے کہا ہے کہ انتخابات کے پہلے بی جے پی حکومت پارلیمنٹ میں آئینی ترمیم کرے تو ہم حکومت کا ساتھ دیں گے۔نہیں تو صاف ہو جائے گاکہ یہ صرف بی جے پی کا انتخابات کے پہلے جملہ ہے۔ یشونت سنہا نے کہا ہے کہ اقتصادی طور پر کمزور اعلیٰ ذات کو 10 فیصدریزرویشن دینے کی تجویزایک جملے سے زیادہ کچھ نہیں ہے۔یہ کئی طرح کی قانونی پیچیدگیوں کے ساتھ لیس ہے اور اسے پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں سے پاس کرانے کا وقت نہیں ہے۔ اس اقدام سے حکومت مکمل طور نقاب ہو گئی ہے۔اس کے علاوہ راجیہ سبھا میں عام آدمی پارٹی کے لیڈر سنجے سنگھ نے ٹویٹ کر کے اس فیصلے پر حکومت کا ساتھ دینے کا اعلان کیاہے۔ اگرچہ اپنے ٹویٹس میں سنجے سنگھ حکومت پر نشانہ لگانے سے بھی نہیں چوکے۔ انہوں نے کہاہے کہ ریزرویشن بڑھانے کے لیے آئینی ترمیم کرنے کے لیے حکومت خصوصی اجلاس بلائے ،ہم حکومت کا ساتھ دیں گے ورنہ یہ فیصلہ محض انتخابی جملہ ثابت ہوگا۔سنجے سنگھ نے ایک اورٹویٹ میں حکومت کے اس فیصلے پر سوال اٹھاتے ہوئے لکھاہے کہ اقتصادی طور پر پسماندہ اعلیٰ ذات قوموں کی مودی حکومت نے 10ریزرویشن کا خوش آئند انتخابی جملہ چھوڑ دیاہے، ایسے کئی فیصلے ریاستوں نے وقت وقت پر لیے لیکن 50 فیصد سے زائدریزرویشن پر عدالت نے روک لگا دی ۔کیایہ فیصلہ بھی کورٹ سے روک لگوانے کے لیے ایک چال ہے؟ ۔مرکزی کابینہ کی اقتصادی طور پر غریب اعلیٰ ذات کو 10 فیصد ریزرویشن دینے پر یوپی کے وزیر اوم پرکاش راج بھر نے کہا ہے کہ10 فیصد کوٹہ دیناایک انتخابی جملہ ہے۔آر جے ڈی لیڈرتیجسوی یادو نے کہا کہ اقتصادی بنیاد پر ریزرویشن دینے کا کوئی آئین میں قانون نہیں ہے۔ لوک سبھا میں طے کریں گے کہ غریب اعلیٰ ذات پر آئے آئینی ترمیمی بل پرکیاکرناہے۔تیجسوی یادو نے کہاہے کہ جب 15 فیصد آبادی والوں کو 10 فیصد ریزرویشن دینے کی بات ہو رہی ہے تو 85 فیصد آبادی والوں کو 90 فیصد ریزرویشن دیں۔کانگریس کے ہریش راوت نے حکومت کی اقتصادی طور پر غریب اعلیٰ ذات کو 10 فیصد ریزرویشن دینے کے معاملے پر طنز کستے ہوئے کہا کہ ’’بہت دیر کر دی مہربان آتے آتے‘‘ اس کے ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ جب الیکشن قریب آ رہے ہیں، ایسے میں کوئی فرق نہیں پڑتاکہ وہ کیا کرتے ہیں، کیا کرتے ہیں، کیا جملہ دھرمی ہیں۔ اس حکومت کو کوئی نہیں بچا سکتا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

راج ناتھ سنگھ نے اپوزیشن کے اتحادکونشانہ بنایا

مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے آج کہا کہ مودی حکومت کی مقبولیت سے خائف ہو کر اپوزیشن جماعتوں نے مہاگٹھ بندھن (عظیم اتحاد) بنایا ہے لیکن انہیں یقین ہے کہ عوامی حمایت بھارتیہ جنتا پارٹی کے حق میں ہی رہے گی۔

مایاوتی پر’غیر اخلاقی‘ تبصرہ کرنے والی بی جے پی ممبر اسمبلی سے خواتین کمیشن نے وضاحت طلب کی

بی ایس پی سربراہ مایاوتی کا موازنہ مبینہ طور پر ہجڑوں سے کرنے سے متعلق بیان کی مذمت کرتے ہوئے قومی خواتین کمیشن نے پیر کو بی جے پی ممبر اسمبلی سادھنا سنگھ کو نوٹس جاری کہا کہ وہ اپنی اس ’غیر اخلاقی، توہین اور غیر ذمہ دارانہ‘تبصرہ پر تسلی بخش وضاحت دیں۔

ملک نئے وزیراعظم کاانتظارکررہاہے،بی جے پی کے پاس کوئی اورہوتوبتائے،ہمارے پاس کئی چوائس ہیں:  اکھلیش یادو

سماج وادی پارٹی (ایس پی) کے صدر اکھلیش یادو نے اپوزیشن جماعتوں کے اتحاد کے رہنما کے بارے میں سوال پوچھ کربی جے پی پر طنز کرتے ہوئے پیر کو کہا کہ ملک کے عوام اگلے انتخابات کے بعد نیا وزیر اعظم چاہتی ہے.

مالیگاؤں2008 بم دھماکہ معاملہ؛ یو اے پی اے قانون کے اطلاق کے خلاف داخل اپیل پر 28؍ جنوری کو ہائی کورٹ میں سماعت متوقع

مالیگاؤں 2008ء بم دھماکہ معاملے کے کلیدی ملزم کرنل پروہیت و دیگر ملزمین کی جانب سے یو اے پی اے قانون کے اطلاق کے خلاف داخل اپیل پر 28؍ جنوری کو ہائی کورٹ میں سماعت ہوسکتی ہے ۔