مالیگاؤں 2008بم دھماکہ معاملہ، بھگوا ملزمین کے وکلاء نے زخمی گواہوں پراین آئی اے کے دباؤ میں جھوٹی گواہی دینے کا الزام عائد کیا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 24th January 2019, 11:17 AM | ملکی خبریں |

ممبئی24؍جنوری (ایس او نیوز؍پریس ریلیز) مالیگاؤں2008ء بم دھماکہ معاملے میں آج بھگواء ملزمین کے وکلاء نے بم دھماکوں میں زخمی ہونے والے تین افراد سے جرح کی اور ا ن پر الزام عائد کیا کہ آج وہ خصوصی عدالت میں این آئی اے کے دباؤ میں ملزمین کے خلاف جھوٹی گواہی دے رہے ہیں۔

موصولہ اطلاعات کے مطابق خصوصی این آئی اے عدالت کے جج ونود پڈالکر کے روبرو بھگوا ملزمین کے وکیل سامبرے نے زخمیوں سے جرح کی اور ان سے کہاکہ وہ 29؍ ستمبر 2008کو بھکو چوک نامی مقام پر موجود ہی نہیں تھے بلکہ آج وہ عدالت میں جھوٹی گواہی دے رہے ہیں جس پر گواہوں نے عدالت کو ان کے جسم پر موجود زخم بتاتے ہوئے کہاکہ وہ کیوں جھوٹی گواہی دیں گے بلکہ انہیں ان بم دھماکوں میں شدید چوٹیں آئیں تھی جس کی میڈیکل رپورٹ عدالت کے ریکارڈ میں موجود ہے۔

آج زخمیوں کی گواہی کے اختتام کے بعد عدالت نے اپنی کارروائی کل تک کے لیئے ملتوی کردی ، دوران سماعت عدالت میں بم دھماکوں کے متاثرین کو قانونی امداد فراہم کرنے والی تنظیم جمعیۃ علماء مہاراشٹر (ارشد مدنی)کے وکلاء ہیتالی سیٹھ، شروتی ویدیہ ودیگر موجود تھے۔

امید ہیکہ کل عدالت میں استغاثہ ان گواہوں کو پیش کریگا جن کا گذشتہ دنوں بیان درج کیا گیا تھا اور دفاعی وکلاء کی عدم موجودگی کی وجہ سے ان سے جرح نہیں ہوسکی تھی۔

ایک نظر اس پر بھی

سیلاب اور بارش سے کیرالہ، کرناٹک، مہاراشٹر وغیرہ بے حال، اَب دہلی پر منڈلایا خطرہ

ہریانہ کے ہتھنی كنڈ بیراج سے گزشتہ 40 برسوں میں سب سے زیادہ آٹھ لاکھ سے زیادہ کیوسک پانی جمنا میں چھوڑے جانے کے بعد دہلی اور ہریانہ میں دریاکے کنارے کے آس پاس کے علاقوں میں سیلاب کا خطرہ پیدا ہو گیا ہے اور اگلے 24 گھنٹے انتہائی سنگین بتائے جا رہے ہیں۔