پہاڑوں پر برفباری کے بعد دہلی این سی آر میں بارش، آلودگی سے ملی راحت

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 6th January 2019, 7:04 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،06 جنوری (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) یوں تو پورا شمالی ہندوستان موسم سرما سے کانپ رہا ہے، مگر تین ریاست ایسے ہیں، جہاں بے حساب برفباری نے زندگی کی رفتار پر بریک لگا دی ہے۔جموں کشمیر، اتراکھنڈ اور ہماچل پردیش میں برف کا جماوڑہ ہے۔درجہ حرارت میں کمی کے درمیان مسلسل ہو رہی برفباری سے زندگی متاثر ہے۔ پہاڑوں پر برفباری کا میدانوں میں اثر دکھائی دے رہا ہے۔

دہلی قومی دارالحکومت علاقہ میں اتوار کی صبح ہلکی بارش ہوئی ہے۔کئی علاقوں میں بارش بھی ہوئی ہے۔اس سے لوگوں کو آلودگی سے کافی راحت ملی ہے۔جموں کشمیر، اتراکھنڈ اور ہماچل پردیش میں اتنی خوفناک برفباری ہوئی ہے کہ ہر کوئی ٹھٹھر گیا ہے۔کشمیر کا چپہ چپہ برفباری کی سفید چادر میں لپٹا ہوا ہے۔بے حساب برفباری نے کشمیر وادی میں لوگوں کی زندگی منجمد کردی ہے۔ لوگوں کا کہیں آنا جان مشکل ہو گیا ہے۔درختوں کے اوپر بھی برف کی موٹی شیٹ منجمد ہے۔برفباری کی وجہ سے ہفتے کے روز سے سرینگر ایئرپورٹ سے کوئی ہوائی جہاز پرواز نہیں بھر سکا ہے۔جمعہ کی شام سرینگر میں اترے جہاز رن وے اور موسم صاف ہونے کا انتظار کر رہے ہیں۔راستوں سے برف ہٹانے کا کام مسلسل جاری ہے۔لیکن قدرت کے آگے تمام سرکاری کوششیں ناکام ثابت ہو رہی ہیں۔کشمیر کی ہی طرح اتراکھنڈ اور ہماچل پردیش میں بھی بے حساب برفباری نے لوگوں کا جینا دشوار کر رکھا ہے۔دونوں ریاستوں میں زبردست برفباری نے زندگی کی رفتار پر بریک لگا دی ہے۔کم از کم درجہ حرارت مائنس 10 ڈگری تک پہنچ گیا ہے۔کیدارناتھ میں ایک فٹ سے زیادہ برفباری جم چکی ہیں۔سردی اتنی بڑھ گئی ہے کہ ہاتھ پاؤں جمنے لگے ہیں۔برفباری سے منداکنی ندی کا پانی بھی جم رہا ہے۔اتراکھنڈ کے کئی علاقے شدید برفباری کی زد ہیں۔پڑوسی ریاست ہماچل پردیش کا بھی حال برفباری نے بے حال کر دیا ہے۔محکمہ موسمیات نے آج یعنی اتوار تک ہماچل کے اونچائی والے علاقوں میں شدیدبرفباری کی وارننگ جاری کی گئی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

چوکیدارکا ٹھپہ نہیں چاہتی پرائیویٹ سیکورٹی انڈسٹریز

قریب 80 لاکھ پرائیویٹ سیکورٹی گارڈز والی انڈسٹری وزیر اعظم نریندر مودی کے ’چوکیدار‘ مہم سے بہت حوصلہ افزاء نہیں ہے، البتہ وہ اپنی بہت مشکلات کو لے کر خود مرکزی حکومت سے لڑ رہی ہے۔سیکورٹی سروسز پر 18فیصد جی ایس ٹی کے خلاف برسرپیکار رہی کمپنیاں اب حکومت پر وعدہ خلافی کا الزام لگا ...

بورڈنگ پاس پر مودی کی تصویر پر تنقید کے بعد ایئر انڈیا نے انہیں واپس لیا

ایئر انڈیا نے تنقید کے بعد وزیر اعظم نریندر مودی اور گجرات کے وزیر اعلی وجے روپانی کی تصاویر والے بورڈنگ پاس واپس لینے کا فیصلہ کیا ہے۔ایئر لائنز نے پہلے کہا تھا کہ تصاویر والے بورڈنگ پاس تیسری پارٹی کے اشتہارات کے طور پر جاری کئے گئے اور اگر یہ مثالی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی ...

دہلی میں خدمات پر کنٹرول کے معاملے پر فیصلے کیلئے وسیع بنچ بنائے عدالت عظمی: آپ حکومت

قومی راجدھانی دہلی میں انتظامی خدمات پر کنٹرول کے معاملے پر جلد فیصلہ لینے کے لیے آپ حکومت نے پیر کو سپریم کورٹ سے ایک وسیع بنچ قائم کرنے کی درخواست کی۔چیف جسٹس رنجن گوگوئی اور جسٹس دیپک گپتا کی بنچ کے سامنے اس معاملے کا ذکر کیا گیا تو بنچ نے آپ حکومت کے وکیل سے کہا کہ اس پر غور ...

عدالت نے منی لانڈرنگ کیس میں گوتم کھیتان اور تین دیگر کو طلب کیا

دہلی کی ایک عدالت نے منی لانڈرنگ کے ایک معاملے میں ای ڈی کی طرف سے چارج شیٹ داخل کئے جانے کے بعد پیر کو وکیل گوتم کھیتان، ان کی بیوی ریتو اور دو کمپنیوں اسمیکس اور ونڈفور کو طلب کیا۔خصوصی جج اروند کمار نے چاروں ملزمان کو چار مئی کو پیش ہونے کے لئے کہا ہے

سبرامنیم سوامی بولے: میں برہمن ہوں، چوکیدار نہیں ہو سکتا

کانگریس کی جانب سے 'چوکیدار چور ہے" کا نعرہ اچھالے جانے کے جواب میں بھارتیہ جنتا پارٹی نے " میں بھی چوکیدار ہوں' کیمپین شروع کیا۔ اس کے بعد وزیر اعظم نریندر مودی سمیت بی جے پی کے تقریبا سبھی لیڈران نے مائیکرو بلاگنگ سائٹ ٹویٹر پر اپنے نام کے آگے 'چوکیدار' لفظ لگایا لیا۔