گورکھپور حادثہ: آکسیجن کی کمی سے بچوں کی موت، ذمہ دار حکومت سچ نہیں بتا رہی ہے: اکھلیش یادو، آکسیجن سلینڈر پہنچانے والی کمپنی میں چھاپہ ماری پراٹھے سوال

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 13th August 2017, 1:18 AM | ملکی خبریں |

گورکھپور:12/اگست(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)گورکھپور میڈیکل کالج میں گزشتہ48 گھنٹوں میں 30 بچوں کی موت کی صورت میں ایس پی لیڈر اکھلیش یادو نے ریاست کی بی جے پی حکومت پر نشانہ لگایا ہے۔ انہوں نے اس معاملے میں حکومت پر لاپرواہی کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ آکسیجن کی کمی سے بچوں کی موت ہوئی ہے۔ اگرچہ حکومت نے اس کی تردیدکی ہے۔ اس پراکھلیش یادو نے کہا کہ حکومت سچ نہیں بتارہی ہے۔ ادھر گورکھپور میڈیکل کالج میں حادثے کے بعد سینئر لیڈر غلام نبی آزاد کی قیادت میں کانگریس کے وفد نے موقع پر پہنچ کر حالات کا جائزہ لیا۔ اس موقع پر غلام نبی آزاد نے کہا کہ یوپی حکومت کی لاپرواہی سے یہ حادثہ ہوا۔ ہسپتال میں آکسیجن کی کمی تھی۔ آزاد نے یوپی کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ کے استعفی کامطالبہ کیا۔ اس وفد میں آزاد کے علاوہ، آر پی این سنگھ، راج ببر اور پرمود تیواری موجودتھے۔ادھر گورکھپور میڈیکل کالج میں مائع آکسیجن سلینڈرپہنچانے والی کمپنی پشپاسیلزپرائیویٹ لمیٹڈ کے دفتر پر گزشتہ رات سے چھاپہ ماری ہو رہی ہے۔ اس کمپنی کے مالک منیش بھنڈاری کے گھر اور اس کے رشتہ داروں کے یہاں بھی چھاپہ ماری ہو رہی ہے۔ منیش بھنڈاری لیکن فرار بتایا جا رہا ہے۔ظاہرہے کہ اس پرسوال اٹھ سکتاہے کہ جب پیسے بقایاتھے توذمہ داری یوگی سرکارکی ہوئی یاگیس فراہم کرنے والی ایجنسی کی،اپوزیشن اس پرسوال اٹھاسکتاہے کہ یوگی سرکارکوبچانے کے لیے الٹی کارروائی ہورہی ہے۔ قابل ذکر ہے کہ گورکھپور میں گزشتہ پانچ دنوں میں60 بچوں کی دردناک موت نے کئی سوال کھڑے کر دیے ہیں۔ جان گنوانے والے بچوں میں5نوزائیدہ بھی تھے۔اگرچہ یوپی حکومت کا کہنا ہے کہ آکسیجن کی کمی سے موت نہیں ہوئی۔ 9 تاریخ کی آدھی رات سے لے کر 10 تاریخ کی آدھی رات کو 23 اموات ہوئیں جن میں سے 14 اموات نو نیٹل وارڈیعنی نومولود بچے کو رکھنے کے وارڈمیں ہوئی ۔یہ بھی حیرت انگیز ہے کہ10 اگست کی رات کو آکسیجن کی سپلائی خطرناک طور پر کم ہو گئی۔

ایک نظر اس پر بھی

کشمیر 2002 کا گجرات بن سکتا ہے

آخر کشمیر میں گونر راج نافذ ہو ہی گیا۔ کشمیر کے لئے یہ کوئی نئی بات نہیں ہے۔ وہاں اب ساتویں بار گونر راج نافذ ہوا ہے ، ویسے بھی کشمیر کے حالات نا گفتہ بہہ ہیں۔ وادی کشمیر پر جب سے بی جے پی کا سایہ پڑا ہے تب ہی سے وہاں قتل و غارت کا سلسلہ جاری ہے ۔ پہلے تو مفتی سعید اور محبوبہ مفتی نے ...

راجستھان میں ’لو جہاد‘ کے نام پر ماحول خراب کرنے کی کوشش 

راجستھان کے ہنڈون میں لو جہاد کے نام پر بجرنگ دل پر ماحول بگاڑنے کا الزام لگا یا ہے، ہنڈون کے جس کانگریس کونسلر نفیس احمد پر بجرنگ دل نے لو جہاد کا الزام لگایا ہے، ان کا دعویٰ ہے کہ یہ مکمل طور پر ایک من گھڑت کہانی ہے۔

چھتیس گڑھ میں مضبوط طاقت ہے کانگریس، اتحاد کی ضرورت نہیں :پی ایل پنیا

آل انڈیا کانگریس کمیٹی جنرل سیکریٹری اور چھتیس گڑھ کے پارٹی معاملات کے انچارج پی ایل پنیا کا کہنا ہے کہ کانگریس ریاست میں مضبوط قوت ہے اور اس کے اندر کسی اتحاد کے بغیر اسمبلی انتخابات جیتنے کی طاقت ہے۔

ایمرجنسی نے جمہوریت کوقانونی تاناشاہی میں بدل دیا: ارون جیٹلی

مرکزی وزیر اور سینئر بی جے پی لیڈر ارون جیٹلی نے آج یاد کیا کہ کس طرح تقریبا چار دہائی قبل وزیر اعظم اندرا گاندھی کی زیر قیادت حکومت کی طرف سے ایمرجنسی لگائی گئی تھی اور جمہوریت کو آئینی آمریت میں تبدیل کر دیا گیا۔

گنگامیں جمع گندگی کولے کرنتیش کمارکا مرکزی حکومت پرسخت حملہ

بہار کے وزیر اعلی نتیش کماران دنوں ہر روز اپنی بات کوبے باکی سے رکھ رہے ہیں۔ گزشتہ اتوار کو ہوئی نیتی آیوگ کی میٹنگ میں انہوں نے پی ایم نریندر مودی کے سامنے ریاست کے مسائل رکھنے کے بعد انہوں نے مرکزی وزیر ماحولیات ہرش وردھن کو مشورہ دیا کہ دہلی واپس جاکر مرکزی سطح وزیر ...