بی جے پی لیڈر بھگوان کو بھی نہیں بخشتے :پرمود تیواری

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 2nd December 2018, 2:22 PM | ملکی خبریں |

پریاگ راج، 2/دسمبر(ایس او نیوز/یواین آئی) کانگریس کے سینئر لیڈر اورسابق راجیہ سبھا رکن پرمود تیواری نے ہفتہ کو کہا کہ اقتدار کے لالچ میں ذات اور مذہب کے نام پر لوگوں کے درمیان دوری پیداکرنے والی بی جے پی کے لیڈروں نے خالص ذاتی مفاد کے لئے بھگوان کو بھی نہیں بخشا ہے ۔مسٹر تیواری نے یواین آئی سے کہا کہ بی جے پی پہلے انسانوں کو لڑاتی ہے ۔ لڑانے کے لئے وہ انہیں ذات اور مذہب کی بنیاد پر تقسیم کرتی ہے اب اس سے بھی اس کا کام نہیں چل رہا ہے تو اب بھگوان کو ذات اور مذہب کی بنیا دپر تقسیم کر رہی ہے ۔ انہوں نے ریاست کے وزیراعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ کے ہنومان جی کو دلت اور پسماندہ بتائے جانے پر اپنے دکھ کا اظہارکیا۔انہوں نے اپنی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی سیاست میں اس حد تک نیچے گر جائے گی یہ کسی نے سوچا نہیں تھا۔ یہ کافی تعجب خیز بات ہے ۔ کیا اب بھگوان بھی ذات اور مذہب میں بانٹ دئیے جائیں گے اس قسم کی بیان بازی بی جے پی کی اخلاقی گراوٹ کی جیتی جاگتی مثال ہے ۔ ان کی اس حرکت سے اس بات کا بھی اندازہ ہوتا ہے کہ اب ان کے پاس عوام سے ووٹ مانگنے کا کوئی بھی ایجنڈا نہیں بچاہے ۔سابق راجیہ سبھا ممبر نے کہا کہ گذشتہ انتخاب سے قبل عوام سے کئے گئے وعدے کیا انہیں یاد نہیں ہیں۔ انہوں نے سوالیہ انداز میں کہا کہ لوگوں کو15لاکھ روپئے ملے ؟ ہر سال ایک کروڑ بے روزگاروں کو روزگار ملا؟۔ اپنے جوانوں کے ایک سر کے بدلے پاکستان کے10جوانوں کے سر لائے ؟۔کیا کچھ ہوا؟۔مسٹر تیواری نے کہا کہ وہ چھتیس گڑھ میں تھے ۔ بھگوان کو ذات اور مذہب کے نام پر بانٹنے کو لیکر انہوں نے راجستھان میں محسوس کیا کہ بی جے پی کولے کر جہاں پہلے بدلاو کی لہر تھی۔ وہاں لوگوں میں اب اشتعال اور غصہ ہے ۔

ایک نظر اس پر بھی

شہیدوں کے گھر ’درد کے دریا کا سیلاب‘ تھا اور مودی دریا میں شوٹنگ کر رہے تھے: راہل گاندھی

کانگریس صدر راہل گاندھی نے پلوامہ دہشت گردانہ حملے والے دن وزیر اعظم نریندر مودی کے ایک چینل کے لئے فلم کی شوٹنگ کرنے سے متعلق خبروں کو لے کر جمعہ کو ان پر حملہ بولا اور الزام لگایا کہ جب شہیدوں کے گھر دردکے دریا کا سیلاب تھا تو پرائم ٹائم منسٹر 'ہنستے ہوئے دریا میں شوٹنگ کر رہے ...

عظیم اتحادملک کے لیے اچھانہیں،اپوزیشن کے پاس کوئی نظریہ اورکوئی لیڈرنہیں ہے، امت شاہ کوپھرمہاگٹھ بندھن سے شکایت،کانگریس اورلیفٹ کونشانہ بنایا

جھک کرلوجپا،شیوسینا،جدیواورڈی ایم کے کے ساتھ اتحادکرنے والی بی جے پی صدر امت شاہ نے جمعہ کو اپوزیشن پارٹیوں کے مجوزہ مہاگٹھ بندھن پر حملہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ ملک کے لیے اچھا نہیں ہے۔

بہار کے سابق وزیرالیاس حسین کو 22 سال پرانے کول تار گھوٹالے میں 5 سال کی سزا

مرکزی تفتیشی بیورو(سی بی آئی) کی خصوصی عدالت نے جمعہ کو کول تار گھوٹالے میں بہارکے سابق وزیرالیاس حسین اورچاردیگر کو پانچ سال قید کی سزا سنائی اور ایک ٹھیکیدار کو اس معاملے میں سات سال کی سزا سنائی۔