ہندوستان سے چین کے لیے چینی کی برآمدات جلد شروع ہو گی

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 9th November 2018, 1:07 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی، :8/نومبر(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)ہندوستان سے چین کے لیے خام چینی کی بر آمد ات کا آغاز اگلے سال کے شروع میں ہو گا۔انڈین شوگر مِل ایسوسی ایشن(آئی ایس ایم اے ) اور حکومتِ چین کے سی او ایف سی او کی طرف سے 15000 ٹن خام چینی کی برآمدکے لیے ایک معاہدہ طے پایا ہے۔یہ برآمدات کامرس کی وزارت کی طرف سے کئے گئے اقدام کی وجہ سے ہے اور خام چینی کی برآمدپرعمل آوری دونوں ملکوں کے افسروں کے ذریعے کئی دور کی میٹنگوں کے بعد ہوئی ہے۔ہندوستان اگلے سال کے شروع سے چین کو دو میٹرک ٹن خام چینی بر آمد کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔ غیر باسمتی چاول کے بعد خام چینی ایسی دوسری اشیاء ہے، جوچین ہندوستان سے درآمد کرتا ہے۔ یہ ایک ایسا قدم ہے ، جس کا مقصد 60 ارب امریکی ڈالر کے تجارتی خسارے کو کم کرنا ہے، جو کہ چین ،ہندوستان کے ساتھ کرتاہے۔ ہندوستان نے 18۔2017 ء4 میں چین کے ساتھ 33 ارب امریکی ڈالر کے بقدر بر آمدات کی ہیں ، جب کہ چین سے در آمدات 76.2 ارب امریکی ڈالر کے بقدر رہی۔ہندوستان 2018 ء4 میں 32 ایم ایم ٹی پیداوار کے ساتھ دنیا میں چینی کی پیداوار کرنے والا سب سے بڑا ملک ہے۔ ہندوستان سبھی تین گریڈ خام ، ریفائن اور سفید قسم کی چینی پیدا کرتا ہے ، جب کہ ہندوستانی شوگر کا ایک اعلیٰ معیار بھی ہے اور ہندوستان کی چینی میں ڈیکسٹران نامی کیمیکل نہیں ہو تا۔ اسی وجہ سے کٹنے کے بعد اس کی پلائی کے درمیان بہت کم وقفہ ہوتا ہے۔ ہندوستان ، چین کو خاطر خواہ تعداد میں اعلیٰ معیار کی چینی برآمد کرنیو الا ایک مستقل اور قابلِ بھروسہ برآمد کار ملک بننے کی پوزیشن میں ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

پاکستان جب تک دہشت گردی کے خلاف مؤثرکاروائی نہیں کرتا، ایئر اسٹرائک جیسے قدم اٹھاتے رہیں گے: وزارت دفاع

وزارت دفاع نے دو ٹوک کہا ہے کہ جب تک پاکستان دہشت گرد گروپوں کے خلاف قابل اعتماد کارروائی نہیں کرتا، تب تک ہندوستان اپنی قومی سلامتی کو یقینی بنانے کے لئے سخت اقدامات اٹھاتا رہے گا۔