جسٹس لویا کی موت کی’’ آزادانہ تحقیقات‘‘؟ چیف جسٹس کی ہی بینچ کرے گی سماعت

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 20th January 2018, 9:10 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی ،20؍جنوری (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)سہراب الدین ٹرائل کے جج بی ایچ لویا کی موت کی آزادانہ تحقیقات کی درخواست پر سی جے آئی دیپک مشرا، جسٹس کھانولکر کی بنچ 22 جنوری کو سماعت کرے گی۔واضح ہوکہ سپریم کورٹ کے چارمعززججوں نے چیف جسٹس کے کردارکوہی ملک کے سامنے مشکوک بتادیاہے ۔اس معاملے کی اب ان کی صدارت میں سماعت پربھی سوال اٹھ سکتے ہیں۔اس سے پہلے 16 جنوری کو جسٹس ارون مشرا، جسٹس ڈی وائی چندرچوڈ اور جسٹس موہن ایم شاتناگودر کی بنچ نے حکم میں کہا تھا کہ اس معاملے کو مناسب بنچ کے سامنے لگایا جائے۔واضح رہے کہ لویا معاملے کو جسٹس ارون مشرا کی بنچ میں لگانے کی مخالفت کی گئی تھی اور چار ججوں نے پریس کانفرنس کر کے کہا تھا کہ انہوں نے چیف جسٹس سے ملاقات کر کے بات رکھی تھی۔جمعہ کوسی جے آئی دیپک مشرا نے کہا تھا کہ معاملے کی سماعت 22 جنوری کو روسٹر کے مطابق مناسب بینچ کرے گی۔دراصل کانگریسی لیڈر تحسین پوناوالا اور مہاراشٹر کے ایک صحافی بدھراج سبھاجی لونے نے سپریم کورٹ میں عرضی داخل کر جج لویا کی موت کی آزادانہ تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔غور طلب ہے کہ جج لویا کی موت پر مسلسل سوال اٹھائے جا رہے ہیں۔اس صورت میں بامبے ہائی کورٹ میں بھی ایک درخواست داخل کی گئی ہے۔دراصل 2005 میں سہراب الدین شیخ اور اس کی بیوی کوثر بی کو گجرات پولیس نے حیدرآباد سے اغوا کیا۔الزام لگایا گیا کہ دونوں کو فرضی تصادم میں ہلاک کر دیا گیا۔شیخ کے ساتھی تلسی رام پرجاپتی کو بھی 2006 میں گجرات پولیس کی طرف سے قتل کر دیا گیا۔اسے سہراب الدین تصادم کا گواہ مانا جا رہا تھا۔2012میں سپریم کورٹ نے مقدمے کی سماعت کو مہاراشٹر میں ٹرانسفر کر دیا اور 2013 میں سپریم کورٹ نے پرجاپتی اور شیخ کے کیس کو ایک ساتھ جوڑ دیا۔ابتدا میں جج جے ٹی اتپت کیس کی سماعت کر رہے تھے لیکن ملزم امت شاہ کے پیش نہ ہونے پر ناراضگی ظاہر کرنے پر اچانک ان کا تبادلہ کر دیا گیا۔پھر کیس کی سماعت جج بی ایچ لویا نے کی اور دسمبر 2014 میں ناگپور میں ان کی موت ہو گئی۔

ایک نظر اس پر بھی

داعش مقدمہ،اورنگ آباد اور ممبرا سے گرفتار مسلم نوجوانوں کو 14؍ دن کی پولس تحویل، جمعیۃ علماء مہاراشٹر نے قانونی امداد فراہم کی

مہاراشٹر کے اورنگ آباد اور ممبئی سے قریب مسلم آبادی والے ممبرا سے گرفتار ۹؍ مسلم نوجوانوں کو آج اورنگ آباد کی خصوصی یو اے پی اے عدالت نے۱۴؍ دنوں کے لیئے پولس تحویل میں دیئے جانے کے احکامات جاری کیئے نیز اس معاملے میں گرفتار کم سن ملزم کو جوئنائل جسٹس ہوم میں بھیج دیا گیا۔

مالیگاؤں 2008بم دھماکہ معاملہ، بھگوا ملزمین کے وکلاء نے زخمی گواہوں پراین آئی اے کے دباؤ میں جھوٹی گواہی دینے کا الزام عائد کیا

مالیگاؤں2008ء بم دھماکہ معاملے میں آج بھگواء ملزمین کے وکلاء نے بم دھماکوں میں زخمی ہونے والے تین افراد سے جرح کی اور ا ن پر الزام عائد کیا کہ آج وہ خصوصی عدالت میں این آئی اے کے دباؤ میں ملزمین کے خلاف جھوٹی گواہی دے رہے ہیں۔

کاروار بوٹ حادثہ: زندہ بچنے والوں نے کیا حیرت انگیز انکشاف قریب سے گذرنے والی بوٹوں سے لوگ فوٹوز کھینچتے رہے، مدد نہیں کی؛ حادثے کی وجوہات پر ایک نظر

کاروار ساحل سمندر میں پانچ کیلو میٹر کی دوری پر واقع جزیرہ کورم گڑھ پر سالانہ ہندو مذہبی تہوار منانے کے لئے زائرین کو لے جانے والی ایک کشتی ڈوبنے کا جو حادثہ پیش آیا ہے اس کے تعلق سے کچھ حقائق اور کچھ متضاد باتیں سامنے آرہی ہیں۔ سب سے چونکا دینے والی بات یہ ہے کہ کشتی جب  اُلٹ ...

ای وی ایم تنازعہ: کپل سبل نے کہا 'ذاتی حیثیت سے گیا تھا لندن، کانگریس کا کوئی لینا دینا نہیں'۔

  کانگریس کے سینئر لیڈر کپل سبل نے بھارتیہ جنتاپارٹی (بی جے پی)کےلیڈر اوروزیرقانون روی شنکر پرساد کےان الزامات کو منگل کو پوری طرح سے بے بنیاد بتاکہ لندن میں الیکٹرانک ووٹنگ مشین (ای وی ایم )سے متعلق پریس کانفرنس کا اہتمام کانگریس نے کیاتھا اورواضح کیاکہ وہ اس میں ذاتی حیثیت ...

مدارس کو اگربند نہیں کیا گیا توآئی ایس آئی ایس حامی ہوجائیں گے مسلم بچے، وسیم رضوی نے وزیراعظم کو خط لکھ کرکیا مطالبہ

اپنے متنازعہ بیانات  کے سبب اکثرسرخیوں میں رہنے والے اترپردیش شیعہ وقف بورڈ کے چیئرمین وسیم رضوی نے وزیراعظم نریندرمودی کوخط لکھ کربنیادی سطح تک کے سبھی مدارس کوبند کرنے کا مشورہ دیا ہے۔