پرینکا گاندھی کے لباس کو لے کر بی جے پی ایم پی کا متنازعہ بیان

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th February 2019, 12:00 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،10 ؍فروری (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) لوک سبھا انتخابات سے پہلے پرینکا گاندھی کے سیاست میں آنے کے بعد سے کانگریس کے اندر زبردست جوش ہے۔

وہیں اپوزیشن پارٹی کی جانب سے بیان بازی کا سلسلہ بھی مسلسل جاری ہے۔اب بی جے پی ممبر پارلیمنٹ نے پرینکا گاندھی کے لباس کو لے کر متنازعہ بیان دیا ہے۔اتر پردیش کے بستی سے بھارتیہ جنتا پارٹی کے ایم پی ہریش درویدی نے پرینکا گاندھی کے لباس کو لے کر کہا کہ جب وہ دہلی میں رہتی ہیں تب جینس اور ٹاپ میں رہتی ہیں۔اور جب اپنے علاقے میں آتی ہیں تو ساڑی اور سندور لگا کر آتی ہیں۔اس کے علاوہ انہوں نے راہل گاندھی پر بھی حملہ بولا۔انہوں نے کہا کہ راہل فیل ہیں تو پرینکا بھی فیل ہیں۔بی جے پی رہنما کا یہ بیان سوشل میڈیا پر بھی وائرل ہو رہا ہے۔اس سے پہلے

بہار کے تیش حکومت کے وزیر ونود نارائن جھا نے پرینکا گاندھی کو کانگریس جنرل سکریٹری بنائے جانے پر کہا تھاکہ خوبصورت چہروں کی بدولت ووٹ نہیں جیتے جا سکتے۔اس سے بھی بڑھ کر حقیقت یہ ہے کہ وہ رابرٹ واڈرا کی بیوی ہیں، جن پرزمین گھوٹالے اور بدعنوانی کے کئی معاملات میں ملوث ہونے کا الزام ہے۔وہ انتہائی خوبصورت ہیں، لیکن اس کے علاوہ ان کی کوئی سیاسی کامیابی نہیں ہے۔وہیں اس سے پہلے بہار کے نائب وزیر اعلی سشیل کمار مودی نے کہا کہ پرینکا گاندھی واڈرا کے سیاست میں آنے سے اتر پردیش میں بی جے پی کو فائدہ ہوگا۔ انہوں نے دعوی کیا کہ اس قدم کا مقصد ووٹوں کی تقسیم سے ایس پی۔بی ایس پی اتحاد کو چیلنج دینا ہے۔ بتا دیں کہ 2019 لوک سبھا انتخابات سے پہلے کانگریس نے بڑا داؤ چلتے ہوئے پرینکا گاندھی کو پارٹی کا جنرل سکریٹری مقرر کیا ہے۔کانگریس کو امید ہے کہ پرینکا یوپی کی سیاست میں کانگریس کے لئے نئی جان پھونکے گی۔پارٹی نے انہیں مشرقی اتر پردیش کی انچارج کی ذمہ داری سونپی ہے۔
 

ایک نظر اس پر بھی

جھارکھنڈمیں پھرہجومی دہشت گردی 

وزیراعظم کہتے ہیں کہ ایک واقعے کے لیے ریاست کی تنقیدنہیں کی جاسکتی لیکن جھارکھنڈمیں متعددہجومی دہشت گردی ہوچکی ہے اوریہ سلسلہ جاری ہے۔