بھیو مہاراج کا سوسائڈ نوٹ ، ذہنی تناؤ کو خودکشی کی وجہ بتایا 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th June 2018, 11:09 PM | ملکی خبریں |

اندور12جون ( ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا ) بھیو مہاراج نے آج کھنڈوا روڈ پر واقع رہائش گاہ پر خود کو گولی مار کر خود کشی کر لی۔ اندور کے بامبے ہسپتال میں ان کی موت کی تصدیق کی گی ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ بھیو مہاراج نے لائسنسی روالور سے اپنے سر میں گولی مار دی۔ گولی کی آواز سننے کے بعد ان کی رہائش گاہ میں موجود لوگ ان کے کمرے کی جانب دوڑے پھر زخمی حالت میں انہیں ہسپتال میں داخل کرایا گیا ۔ بھیو مہاراج کی موت کے بعد پولیس کو ان کا ایک سوسائڈ نوٹ ملا ہے۔ سوسائڈ نوٹ میں لکھی چند لائنوں ہی بھیو مہاراج نے انکشاف کیا ہے وہ کتنے کشیدگی میں تھے۔ پولیس کو ملے سوسائڈنوٹ میں لکھا گیا کہ خاندانی ذمہ دار یوں کو ہینڈل کرنے کے لئے کسی کو وہاں ہونا چاہئے۔ میں انتہائی دباؤ میں ہوں اور اسی عالم میں جا رہا ہوں۔ مدھیہ پردیش کے وزیر اعلی شیوراج سنگھ نے حال ہی میں ان ریاستی وزیر کا درجہ دیا تھا۔ بھیو مہاراج کے موت پر شیوراج سنگھ نے گہرا غم جتایا۔ سی ایم شیوراج سنگھ کے علاوہ بی جے پی اور کانگریسی لیڈروں نے بھی ان کے موت پر غم جتایا ہے ۔ بھیو مہاراج اس وقت چرچامیں آئے تھے جب انا تحریک کے وقت انہوں نے حکومت کے ساتھ بات چیت میں بڑا کردار ادا کیا تھا۔ اس تحریک کے وقت شرد یادو نے بھیو مہاراج کی تنقید بھی کی تھی۔ وہ پہلے فیشن ڈیزائنر تھے بعد میں روحانیت سے متاثرہوگئے ۔ انہوں نے قریب 49 سال کی عمر میں دوسری شادی کی تھی۔ انہوں نے پہلی بیوی کی موت کے بعد بیٹی اور ماں کا خیال رکھنے کے لئے ہی یہ شادی کی تھی۔ ان کی پہلی بیوی کادو سال پہلے انتقال ہو چکا ہے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

ملک کے مفادمیں متحد رہنے کانگریس جے ڈی ایس قائدین کا فیصلہ،14سال بعد دیوے گوڈا اور سدرامیا کی ایک ساتھ اخباری کانفرنس

آنے والے لوک سبھا انتخابات میں سیکولر سیاسی طاقتوں کو مضبوط کرنے کی غیر معمولی پہل کرتے ہوئے آج کانگریس اور جے ڈی ایس قیادت نے اتحاد کا غیر معمولی پیغام دیا۔

حکومت یونیورسیٹیوں میں اساتذہ کی اظہاررائے کی آزادی پربندش نہیں لگائے گی

فروغ انسانی وسائل کے مرکزی وزیرپرکاش جاویڈیکر نے دہلی یونیورسٹی میں لازمی خدمات فراہمی ایکٹ ( ا یسما) لگانے کے الزامات پر صفائی دیتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت کا ارادہ اساتذہ کے اظہار رائے کی آزادی کو روکنے کا نہیں ہے۔